انور ظہیر جمالی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
منصف اعظم
انور ظہیر جمالی
منصف اعظم پاکستان
عہدہ سنبھالا
10 ستمبر 2015 – 30 دسمبر 2016[1]
نامزد بطرف وزارت قانون
مقرر بطرف ممنون حسین
پیشرو جواد ایس خواجہ
جانشین میاں ثاقب نثار
سینئر جسٹس عدالت عظمی پاکستان
عہدہ سنبھالا
17 اگست 2015 – 9 ستمبر 2015
پیشرو جواد ایس خواجہ
منصف عدالت عظمی پاکستان
دفتر سنبھالا
3 اگست 2009
قائم مقام چیف الیکنش کمشنر پاکستان
عہدہ سنبھالا
3 جولائی 2014 – 4 دسمبر 2014
نامزد بطرف ممنون حسین
پیشرو ناصر الملک
جانشین سردار محمد رضا خان[2]
منصف اعطم سندھ عدالت عالیہ
عہدہ سنبھالا
27 اگست 2008 – 2 اگست 2009
نامزد بطرف پرویز مشرف
منصف سندھ عدالت عالیہ
عہدہ سنبھالا
31 مئی 1998 – 11 نومبر 2007
عہدہ سنبھالا
27 اگست 2008 – 2 اگست 2009
ذاتی تفصیلات
پیدائش 30 دسمبر 1951
حیدرآباد
قومیت Flag of پاکستان پاکستانی

انور ظہیر جمالی پاکستان کے سابق24 ویں منصف اعظم ہیں جنہوں نے 10 ستمبر 2015ء کو منصف اعظم کا حلف اٹھایا۔ انور ظہیر31 دسمبر 1951ء کو حیدر آباد، پاکستان میں پیدا ہوئے۔ آپ کے آباء و اجداد کا تعلق بھارت کے شہر جے پور سے تھا۔ آپ کا گھرانہ ایک مذہبی گھرانا ہے، جس کا سلسلہ نسب قطب الدین احمد ہنسوی سے جا ملتا ہے۔ آپ کا شمار ان منصفین میں ہوتا ہے جنہوں نے پرویز مشرف کے دور میں پی سی او کے تحت حلف اٹھانے سے انکار کر دیا تھا۔ وہ ایک سال 4 ماہ تک چیف جسٹس کے عہدے پر فائز رہے۔ انہوں نے تجارت اور قانون میں بالتریب 1971 اور 1973 میں سندھ یونیورسٹی سے گریجویشن کی ڈگریاں حاصل کیں۔ جسٹس انور ظہیر جمالی چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ بھی رہ چکے ہیں۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

بیرونی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "CJP Jamali hangs up his robe today"۔ nation.com.pk۔ اخذ کردہ بتاریخ 30 دسمبر 2016۔ 
  2. علی، اخبار۔ "جسٹس سردار رضا کو سی ای او نامزد کر دیا گیا۔"۔ www.dawn.com۔ اخذ کردہ بتاریخ 29 دسمبر 2014۔