اوابین

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

نمازِ مغرب کے فرض پڑھ کر چھ رکعتیں پڑھنا مستحب ہیں، ان کو صلوٰۃ الاوابین اور نماز اوابین بھی کہتے ہیں خواہ ایک سلام سے پڑھے یا دو سے یا تین سے اور تین سلام سے پڑھنا یعنی ہر دو رکعت پر سلام پھیر نا افضل ہے اور اگر ایک ہی نیت سے چھ رکعتیں پڑھیں تو ان میں پہلی دو سنت موکدہ ہوں گی۔ باقی چار نفل۔

حدیث میں ہے کہ

جو شخص مغرب کے بعد چھ رکعتیں پڑھے اور ان کے درمیان کوئی بری بات نہ کہے تو بارہ برس کی عبادت کے برابر لکھی جائیں گی۔ [1]

اواب۔ بہت رجوع کرنے والا۔ بہت تسبیح خوان۔ [2] ابن ابی حاتم نے عمر و بن شرجیل رحمہ اللہ علیہ سے روایت کیا کہ (آیت ) ’’ الاواب‘‘ حبشہ کی لغت میں تسبیح بیان کرنے والے کو کہتے ہیں۔ [3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. صحیح ترمذی
  2. تفسیر انورالبیآن،محمد علی سورہ ص،17
  3. تفسیر در منثور جلال الدین سیوطی،ی سورہ ص،17