اکالۃ القری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

اکالۃ القریٰ : مدینہ منورہ کے بہت سے ناموں میں سے ایک نام اکالۃ القریٰ بھی ہے جس کے معنی ہیں بستیوں کو کھا جانے والا شہر(سب پر غالب آنے والا)
اس بستی کو اللہ تعالیٰ نے تمام بستیوں کے مقابلہ میں جلال و جمال کے اعتبار سے ممیز اور بلند فرمایا اسی طرح اس بستی کے محاسن دوسری بستیوں کے مقابلے میں غالب ہوں گے اور اس شہر کو سب شہروں پر تسلط حاصل ہوگا [1]
ابوہریرہ فرماتے ہیں کہ رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) نے فرمایا کہ(أمرت بقرية تأكل القرى) مجھے اس بستی کی طرف ہجرت کا حکم دیا گیا ہے کہ جو ساری بستیوں کو کھا جائے گی(سب پر غالب آجائے گی) لوگ اسے یثرب کہتے ہیں اور وہ مدینہ ہے وہ برے لوگوں کو اس طرح دور کرے گا جس طرح بھٹی لوہے کے میل کی چل کو دور کرتی ہے۔[2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. مدینہ منورہ ،صفحہ 25 محمد مسعود عبدہ،مشربہ علم و حکمت (دارالشکر) لاہور
  2. صحیح مسلم:جلد دوم:حدیث نمبر 860