ایارج

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

ایارج یونانی زبان کے لفظ ایارہ کا معرب ہے جس کا معنی دوائے الٰہی ، دوائے شریف اور مصلح بیان کیا گیا ہے، مگر اکثر محققین کے نزدیک ایارج ، دواء مسہل کو کہتے ہیں کیونکہ ایارج ہی مسہلات میں پہلا مرکب ہے جسے اہلِ یونان نے اسہال بلغم اور تنقیہ دماغ کے لیے مرتب کیا تھا۔ اسہال و اخراج بلغم میں ایارج تریاقی افادیت رکھتا ہے۔ ایارجات میں ایارج فیقرا کے علاوہ ایارج بقراط، ایارج جالینوس ، ایارج لوغاذیہ، ایارج روفس اور ایارج ارکاغانیس مشہور ہیں۔

ایارج کی اقسام[ترمیم]

وجہ تسمیہ: ایارج کا مخترع بقراط ہے۔ یونانی زبان میں فیقرا کا معنی ’’تلخ نافع‘‘ ہے، چونکہ اصل و عمود اِس نسخے میں صبر یعنی ایلوا ہے اور وہ تلخ ہوتا ہے اِس لیے یہ ایارج ’’فیقرا‘‘ کے نام سے موسوم ہوا۔ بعض ماہرین کے مطابق فیقراء یونانی زبان میں صبر کے معنی میں آتا ہے، چنانچہ اِس نسخے میں جزءِ اعظم کی حیثیت سے صبر کی موجودگی کی وجہ سے اِسے ایارج فیقراء کہا گیا ہے۔ایارجات کی قوت 2 سال تک باقی رہتی ہے۔ اُس کو تیاری کے 6 ماہ بعد استعمال کرانے کی سفارِش کی گئی ہے۔ شیخ الرئیس نے اِس کے نسخے میں عود بلسان کا اضافہ کیا ہے۔ ایارج کے نسخہ میں : شحم اندرائن کو شامل کرنے پر یہ نسخہ مشحم کہلاتا ہے۔

وجہ تسمیہ: اِس کی وجہ تسمیہ نامعلوم ہے لیکن بعض لوگ کہتے ہیں کہ یہ لوغاذیا نام کے ایک یونانی طبیب کے نام سے منسوب و موسوم ہے۔

(3). ایارج ھو فقر اطیس/ایارج بقراط

وجہ تسمیہ: بقراط کے نام سے موسوم ہے۔ [1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

[2][3][4][5][6]

بیرونی روابط[ترمیم]