مندرجات کا رخ کریں

ایران میں صدارتی انتخابات 2024ء

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
ایرانی صدارتی انتخابات 2024ء

→ 2021 28 جون 2024 (پہلا دور)
5 جولائی 2024 (دوسرا دور)
مندرج61,452,321
ٹرن آؤٹ39.93% (پہلا دور) کم 8.55pp
49.68 % (دوسرا دور) Increase 1.2pp
 
جماعت آزاد امیدوار آزاد امیدوار
اتحاد ریفورم پرنسپلیسٹس
عوامی ووٹ 16,384,403 13,538,179
فیصد 54.76% 45.24%


صدر ایران قبل انتخابات

محمد ماخبر (قائم مقام)
آزاد

منتخب صدر ایران

مسعود پزشکیان
آزاد

ایران میں ابتدائی صدارتی انتخابات 28 جون 2024ء کو ہوئے، یہ الیکشن 19 مئی کو ہیلی کاپٹر حادثے میں سابق صدر ابراہیم رئیسی کی وفات کے بعد ہوئے۔ [1][2] چونکہ پہلے مرحلے میں کسی امیدوار کو اکثریت حاصل نہیں ہوئی، اس لیے 5 جولائی کو سعید جلیلی اور مسعود پیزکیان کے درمیان دوبارہ مقابلہ ہوا۔[3] 39.93 فیصد ٹرن آؤٹ کے ساتھ، انتخابات کے پہلے مرحلے میں اسلامی جمہوریہ کی تاریخ میں صدارتی انتخابات میں سب سے کم شرکت دیکھی گئی، جو 2021ء کے ایرانی صدارتی انتخابات میں 48.48 فیصد کے پچھلے ریکارڈ سے 8 پوائنٹس کم ہے۔ [4] 6 جولائی 2024ء کو، وزارت داخلہ نے پیزشکیان کو انتخابات کا فاتح قرار دیا، اس کے فوراً بعد جلیلی نے شکست تسلیم کرلی۔[5][6]

پس منظر[ترمیم]

19 مئی 2024 کو، رئیسی ایران-آذربائیجان سرحد کے دورے سے واپس آرہے تھے تاکہ آذربائیجان کے صدر الہام علیوفکے ساتھ گز گلاسی ذخائر میں ایک پن بجلی کمپلیکس کا افتتاح کریں۔[7] ان کے سفر کے دوران، ہیلی کاپٹر جس میں وہ اور سات دیگر مسافر اور عملہ سوار تھے، مشرقی آذربائیجان صوبہ کے ورزاقان کاؤنٹی کے گاؤں ازی کے قریب تقریباً 13:30 IRST (متناسق عالمی وقت + 03:30) پر گر کر تباہ ہو گیا۔[8][9] اس دن کے آخر میں، ہیلی کاپٹر کا ملبہ مل گیا، جس میں سوار تمام افراد مردہ پائے گئے۔[10] اس کے نتیجے میں پہلے نائب صدر محمد موکھبر آئین کے آرٹیکل 131 کے مطابق قائم مقام صدر بنے۔ [11]

رئیسی کی آخری رسومات

انتخابی نظام[ترمیم]

ایران کے صدر عام طور پر ہر چار سال بعد "عوام کے براہ راست ووٹ" کے ذریعے منتخب کیا جاتا ہے، جیسا کہ ایرانی آئین کے آرٹیکل 114 کے تحت متعین کیا گیا ہے۔ [11] اس کا مطلب یہ ہے کہ صدارتی انتخابات 18 جون 2025 کو یا اس سے پہلے ہونے چاہئیں تھے، لیکن صدر کی موت کی وجہ سے یہ پہلے ہوں گے۔ ایران کے سیاسی نظام کے تحت، صدر ملک کا سب سے بڑا براہ راست منتخب عہدیدار، ایگزیکٹو برانچ کا سربراہ، اور سپریم لیڈر کے بعد دوسرا سب سے اہم عہدہ ہے۔ [12] ووٹنگ کی کم از کم عمر 18 سال ہے۔

امیدواران[ترمیم]

صدارت کے لیے انتخاب لڑنے کے لیے رجسٹریشن 30 مئی کو شروع ہوئی اور 3 جون کو ختم ہوئی۔ چار خواتین سمیت کل 80 افراد نے صدر کے لیے اپنے امیدوار دائر کیے۔[13] زیادہ تر امیدواروں کو قدامت پسند اور انتہائی قدامت پسند سمجھا جاتا تھا۔[14] گارڈین کونسل نے 9 جون کو امیدواروں کی حتمی فہرست جاری کی۔ [15] کونسل کے ذریعہ مسترد کیے جانے والوں کو مسترد ہونے پر احتجاج کرنے کی اجازت نہیں تھی۔[16]

رائے شماری اور پیشن گوئی[ترمیم]

تاریخ رائے شماری تعداد مارجن جلیلی غالبف پیزیشکیان ہاشمی (جلیلی غالبف اور زکانی کے حق میں چلا گیا زکانی (جلیلی اور غالبف کے حق میں چلا گیا پورموہمادی فیصلہ نہیں کیا قیادت کریں
4 جولائی اسلامی مشاورتی مجلس[17] 44.2% 53.7% 9.5%
3 جولائی ایرانی طلبہ نیوز ایجنسی[18] ±2% 43.9% 49.5% 5.6%
26 جون تہران یونیورسٹی 3.5% 26.8% 23.3% 32.9% 3.6% 1.7% 1.6% 7.7% 6.1%
26 جون ایرانی طلبہ کی رائے شماری ایجنسی[19] 3589 28.8% 19.1% 33.1% 2.8% 2.1% 1.4% 10.5% 4.3%
22-24 جون میلیٹ اوپینین پول انسٹی ٹیوٹ (اسلامی مشاورتی اسمبلی)[20] 1100 16.3% 16.9% 23.5% 3.2% 1.2% 0.5% 38.4% 6.6%
22-23 جون شیخ[21] 1000 20% 19% 28% 3% 1% 1% 28% 8%
22-23 جون امام صادق یونیورسٹی[22] 1500 21.5% 23.4% 24.4% 4.5% 2.4% 2% 21.8% 1%
22-23 جون ایرانی طلبہ کی رائے شماری ایجنسی[23] 4057 24% 14.7% 24.4% 2% 1.7% 0.7% 30.6% 0.4%
18-20 جون آئی آر آئی بی[حوالہ درکار] 22.5% 19.5% 19.4% 2.7% 2.2% 0.9% 28.4% 3%
18-20 جون میلیٹ اوپینین پول انسٹی ٹیوٹ (اسلامی مشاورتی اسمبلی)[24] 850 18.2% 20.7% 18.9% 4.6% 2% 1.8% 33.8% 1.8%
18-19 جون ایرانی طلبہ کی رائے شماری ایجنسی[25] 4545 26.2% 19% 19.8% 2.6% 2% 0.9% 27.4% 6.4%
18-19 جون امام صادق یونیورسٹی[26] 23.5% 29.3% 30% 2.7% 1.2% 1.1% 12.4% 0.7%
11-13 جون ریسرچ سینٹر فار کلچر، آرٹ اینڈ کمیونیکیشن[27] 36.7% 30.4% 28.3% 1.4% 1.7% 1.4% 62%[ا] 6.3%
30 مئی رجسٹریشن کا آغاز

ایرانی طلبہ رائے شماری ایجنسی نے 44.4% کے ٹرن آؤٹ کی پیش گوئی کی ہے۔[28][29] مجلس ریسرچ سینٹر کے ذریعہ 26 اور 29 مئی 2024 کے درمیان کیے گئے ایک سروے کے مطابق، ووٹر ٹرن آؤٹ کی شرح 53% سے زیادہ ہونے کی پیش گوئی کی گئی ہے۔[30] سپیکٹرم کے دوسرے سرے پر، وزارت ثقافت اور اسلامی رہنمائی کے ذریعہ کئے گئے سروے میں تہران میں صرف 30% شرکت کی پیش گوئی کی گئی ہے۔[31] اسلامی جمہوریہ ایران کی قانون نافذ کرنے والی کمان نے لوگوں کو جعلی انتخابات کے ساتھ پوسٹس شیئر کرنے کے خلاف خبردار کرتے ہوئے اسے جرم قرار دیا۔[32]

انتخابات میں پیزیشکیان ووٹنگ

نتائج[ترمیم]

سرکاری نتائج سے پتہ چلتا ہے کہ پیزشکیان اور جلیلی 5 جولائی کو طے شدہ رن آف کی طرف بڑھ رہے ہیں۔ پہلے مرحلے میں ٹرن آؤٹ 40 فیصد تھا، جو 1979 کے بعد ایران میں صدارتی انتخابات میں سب سے کم تھا۔ اس انتخاب میں 2005 کے بعد ایران میں پہلی بار صدارتی انتخابات کے لیے ووٹ ڈالے گئے۔[33][34]

CandidateParty or allianceFirst roundSecond round
Votes%Votes%
مسعود پزشکیانآزاد امیدوارریفورم10,415,99144.3616,384,40354.76
سعید جلیلیآزاد امیدوارپرنسپلسٹ9,473,29840.3513,538,17945.24
محمد باغیر غالیبافپراگریس اور جسٹس آف ایرانپرنسپلسٹ3,383,34014.41
مصطفی پورمحمدیکلیگری ایسوسی ایشنپرنسپلسٹ206,3970.88
Total23,479,026100.0029,922,582100.00
Valid votes23,479,02695.7029,922,58298.01
Invalid/blank votes1,056,1594.30607,5751.99
Total votes24,535,185100.0030,530,157100.00
Registered voters/turnout61,452,32139.9361,452,32149.68
Source: ISNA, IranIntl, Tejarat News

صوبائی اعداد و شمار[ترمیم]

شرکت کی شرحوں کے ساتھ ایرانی صوبوں کی ووٹوں کی تشکیل[35]
صوبہ مسعود پزشکیان (ووٹوں کی تعداد) سعید جلیلی (ووٹ) محمد باگھر غالب (ووٹ) مصطفی پورموہمادی (ووٹ) کل ووٹ شرکت کی شرح (%)
آزربائیجان، مشرق 1,067,088 244,076 57,432 7,276 1,402,108 44.11
آزربائیجان، مغرب 806,620 145,619 58,011 4,960 1,010,210 40
اردبیل 382,647 72,878 36,377 2,676 504,602 48.5
اسفہان 428,098 868,431 139,979 16,524 1,454,032 41
البورز 298,664 271,695 97,182 741 674,148 40.13
عالم 119,843 44,706 30,852 1,704 208,187 47
بشہر 144,138 167,217 40,850 2,618 374,345 46.5
تہران 1,492,164 1,165,518 673,000 35,582 3,366,264 33
چہرمحل اور بختیاری 123,046 118,523 28,231 2,464 282,264 40
خراسان، جنوب 102,354 225,825 48,776 2,319 391,329 64
خراسان، رزوئی 661,493 1,212,033 429,458 19,330 2,415,696 49.39
خراسان، شمال 115,697 115,672 57,638 1,026 320,407 45
خوزستان 433,699 524,084 175,732 12,529 1,146,044 29.6
زانجن 195,165 132,409 48,479 1,026 392,000 46.2
سمنان 73,287 137,081 34,759 2,302 262,284 49.2
سستان اور بلوچستان 443,226 199,976 87,788 4,368 735,358 40
فارس 532,947 634,294 132,848 10,292 1,310,381 36
قزوین 156,853 166,852 51,811 3,358 395,753 42.8
کم ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی 57
کورڈستان ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی
کرمن 329,470 477,589 215,892 8,513 1,070,286 46
کوہگلیح اور بویر احمد 123,240 102,112 55,348 1,518 288,937 49.3
گولستان 275,366 205,974 81,095 5,023 591,201 41.16
گیلان 317,248 216,339 90,019 6,759 656,936 32.6
لورینستان 234,721 191,510 100,967 4,395 540,000 36
مزندران 406,485 448,308 132,151 9,629 1,043,570 42.3
مرکازی 136,282 233,645 61,359 4,355 457,074 39.9
ہرموزگان ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی ٹی بی ڈی
ہمیدان 199,466 266,875 76,583 5,283 572,842 39
یزد 165,696 213513 35,680 3,829 436,722 58.18

رد عمل[ترمیم]

ایران میں[ترمیم]

خامنہ ای نے کم ٹرن آؤٹ کو کم کرتے ہوئے کہا کہ اس سے سیاسی نظام کی مخالفت کی نشان دہی نہیں ہوتی، لیکن اس کی وجوہات کی تحقیقات کا حکم دیا۔[36][37] سابق وزیر عطا اللہ مہاجیرانی نے صدر موختبر کی انتظامیہ کو اپنے مینڈیٹ کو پورا کرنے میں ناکام ہونے اور جلیلی کے لیے مہم چلانے پر تنقید کا نشانہ بنایا۔[38] موکھبر نے اس کی تردید کی ہے۔[39] اخبار کاہن نے ایک ادارتی مضمون شائع کیا جس میں کہا گیا ہے کہ حکومت انتخابی بائیکاٹ کرنے والوں کے بلیک میل کے سامنے نہیں جھکے گی۔[40] سابق رکن پارلیمنٹ محمود صادغی نے کہا کہ اسلامی ترقیاتی تنظیم نے جلیلی کے لیے مہم چلانے کے لیے علما کو پیسے دیے۔[41] آئی آر جی سی کے کمانڈنگ جنرل حسین سلامی نے انتخابات کو "آج کا جہادی" قرار دیا۔[42][43] ایران کے حمید اسماعیلیوں میں الائنس فار ڈیموکریسی اینڈ فریڈم، رضا پہلوی اور مسیح الینجد نے کم ٹرن آؤٹ کو حکومت کے خلاف فتح قرار دیا۔[44]

بین الاقوامی[ترمیم]

  • : صدر شی جن پنگ نے پیزیشکیان کو انتخابات پر مبارکباد دی۔[45] چین
  • : صدر ولادیمیر پوتن نے پیزیشکیان کو مبارکباد دی اور امید ظاہر کی کہ ان کے دور میں دوطرفہ تعلقات کو تقویت ملے گی۔[46] روس
  • : شاہ سلمان اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان دونوں نے پیزیشکیان کو مبارکباد دی، بادشاہ کو امید ہے کہ ان کے انتخاب سے تعلقات "گہرے" ہوں گے۔[47] سعودی عرب

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Iran to hold presidential elections on June 28 after Raisi's death"۔ Al Arabiya۔ 20 مئی 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 مئی 2024 
  2. "Iran helicopter crash: President Ebrahim Raisi killed in helicopter crash"۔ BBC News (بزبان انگریزی)۔ 20 May 2024۔ 20 مئی 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 مئی 2024 
  3. Jon Gambrell، Nasser Karimi (29 June 2024)۔ "Iran to hold runoff election with reformist Pezeshkian and hard-liner Jalili after low-turnout vote"۔ Associated Press۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 جون 2024 
  4. "Iran heads to presidential run-off amid record low turnout"۔ Al Jazeera۔ 29 June 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 جون 2024 
  5. Farnaz Cassini، Cassandra Vinograd (5 July 2024)۔ "Reformist Candidate Wins Iran's Presidential Election"۔ The New York Times۔ اخذ شدہ بتاریخ 05 جولا‎ئی 2024 
  6. "Centrist Masoud Pezeshkian will be Iran's next president"۔ Al Jazeera (بزبان انگریزی)۔ الجزیرہ میڈیا نیٹورک۔ 6 July 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 جولا‎ئی 2024 
  7. Parisa Hafezi (20 May 2024)۔ "Helicopter carrying Iranian President Raisi crashes, search under way"۔ Reuters۔ 20 مئی 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 مئی 2024 
  8. Yong Xoing، Teele Rabbane (20 May 2024)۔ "Live updates: Iran's President Raisi killed in helicopter crash"۔ CNN (بزبان انگریزی)۔ 26 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 جون 2024 
  9. Akhtar Makoii، Jessica Abrahams، Benedict Smith، Chanel Zagon (19 May 2024)۔ "Search for Iranian president Ebrahim Raisi's helicopter complicated by rain"۔ The Telegraph (بزبان انگریزی)۔ ISSN 0307-1235۔ 19 مئی 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 مئی 2024 
  10. "Iran president helicopter crash live updates: President Ebrahim Raisi dies - state TV"۔ BBC News (بزبان انگریزی)۔ 19 May 2024۔ 11 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 مئی 2024 
  11. ^ ا ب "Constitution"۔ en.mfa.ir۔ 12 جنوری 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 20 مئی 2024 
  12. "Ebrahim Raisi, ultra-conservative judiciary chief, wins Iran's presidential vote amid historically low turnout"۔ CNN۔ 19 June 2021۔ 21 جون 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 جون 2021 
  13. "Iran parliament speaker Mohammad Bagher Ghalibaf announces presidential bid"۔ Al Jazeera (بزبان انگریزی)۔ 03 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 03 جون 2024 
  14. "En Iran, 80 candidats pour une élection présidentielle jouée d'avance"۔ Courrier international (بزبان فرانسیسی)۔ 4 June 2024۔ 05 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 جون 2024 
  15. "Ghalibaf among six approved to run in Iran's presidential election"۔ Al Jazeera (بزبان انگریزی)۔ 9 June 2024۔ 09 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 09 جون 2024 
  16. "ببینید کاندیداها بعد از اعلام اسامی توسط شورای نگهبان حق اعتراض ندارند!"۔ etemadonline.com۔ 11 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 09 جون 2024 
  17. "جدیدترین نظرسنجی انتخابات منتشر شد،پزشکیان در صدر"۔ اعتمادآنلاین (بزبان فارسی)۔ 2024-07-05۔ اخذ شدہ بتاریخ 05 جولا‎ئی 2024 
  18. "جدیدترین نظرسنجی ایسنا از نتیجه انتخابات 15 تیر؛ مسعود پزشکیان پیشتاز است"۔ اعتمادآنلاین (بزبان فارسی)۔ 2024-07-05۔ اخذ شدہ بتاریخ 05 جولا‎ئی 2024 
  19. "آخرین نظرسنجی ایسپا منتشر شد"۔ مرکز افکارسنجی دانشجویان ایران۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 جون 2024 
  20. "نتایج موج چهارم نظرسنجی انجام شده درخصوص مشارکت در انتخابات"۔ قدس آنلاین (بزبان فارسی)۔ 26 June 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 جون 2024 
  21. "Shenakht"۔ shenaakht.com۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 جون 2024 
  22. "نظرسنجی سبد رأی نامزدهای ریاست جمهوری چهاردهم - تسنیم"۔ خبرگزاری تسنیم | Tasnim (بزبان فارسی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 جون 2024 
  23. "آخرین نظرسنجی ایسپا منتشر شد"۔ مرکز افکارسنجی دانشجویان ایران۔ اخذ شدہ بتاریخ 26 جون 2024 
  24. "Poll: 45.5% of eligible voters will vote in Iran's Friday presidential election"۔ ifpnews.com۔ 22 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جون 2024 
  25. "انتشار آخرین یافته‌های نظرسنجی انتخاباتی مرکز افکارسنجی جهاددانشگاهی"۔ ایسنا (بزبان فارسی)۔ 20 June 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جون 2024 
  26. اطلاعات آنلاین (20 June 2024)۔ "ریزش آرای یک کاندیدا؛ رقابت نهایی بین چه کسانی است؟"۔ fa (بزبان فارسی)۔ 21 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 جون 2024 
  27. اطلاعات آنلاین۔ "نتایج شوکه کننده یک نظرسنجی| پدیده انتخابات در سایه پیش می‌رود +عکس"۔ fa (بزبان فارسی)۔ 16 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 جون 2024 
  28. "نتایج یک مرکز افکارسنجی از میزان مشارکت در انتخابات و نظر مردم درباره وضعیت کشور با رئیس جمهوری جدید - خبرآنلاین"۔ 11 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 11 جون 2024 
  29. "تازه‌ترین نظرسنجی ایسپا؛ میزان مشارکت در انتخابات افزایشی است"۔ asriran.com۔ 11 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 11 جون 2024 
  30. "تسنیم: مشارکت انتخاباتی قطعاً بالای 53 درصد است"۔ اعتمادآنلاین (بزبان فارسی)۔ 3 June 2024۔ 02 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 03 جون 2024 
  31. "تنور سرد انتخابات+جدول شرکت در انتخابات به تفکیک استان‌ها"۔ 12 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 12 جون 2024 
  32. اخبار روز ایران و جهان | آفتاب نیوز۔ "هشدار انتخاباتی پلیس فتا؛ انتشار نظرسنجی‌های کاذب جرم است"۔ fa (بزبان فارسی)۔ 21 جون 2024 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 16 جون 2024 
  33. "Iran heads to presidential run-off amid record low turnout"۔ Al Jazeera (بزبان انگریزی)۔ 29 June 2024 
  34. "Iran to hold runoff election between reformist Masoud Pezeshkian and hard-liner Saeed Jalili"۔ France 24 (بزبان انگریزی)۔ 29 June 2024 
  35. "آمار مشارکت استان‌ ها در انتخابات ریاست جمهوری 1403"۔ تجارت نیوز (بزبان فارسی)۔ 30 June 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 جون 2024 
  36. "Iran's supreme leader denies non-voters are 'against' ruling system"۔ Africanews۔ 4 July 2024۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 جولا‎ئی 2024 
  37. "جدال مخالفان و موافقان؛ خامنه‌ای: کسانی که در دور اول رای ندادند «مخالف نظام» نیستند" 
  38. "عطاءالله مهاجرانی: نهاد ریاست جمهوری تقریباً تعطیل شده و همه مدیران برای تبلیغ جلیلی رفته‌اند" 
  39. https://www.etemadonline.com/بخش-سیاسی-9/666041-واکنش-مخبر-مرخصی-منصوری
  40. https://www.etemadonline.com/بخش-سیاسی-9/665767-قهر-صندوق-رای-حاکمیت
  41. https://www.etemadonline.com/بخش-سیاسی-9/665764-طلاب-جلیلی-روستا
  42. https://donya-e-eqtesad.com/بخش-سایت-خوان-62/4083044-فرمانده-کل-سپاه-نباید-دشمن-شاد-شویم-به-پای-صندوق-ها-بشتابید-این-جهاد-امروز-ماست
  43. https://iranwire.com/fa/news-1/131182-اعلام-آمار-غیررسمی-برآورد-نتایج-انتخابات-توسط-سپاه-پاسداران/
  44. "Exiled prince calls on Iranians to put aside 'false hopes', boycott election" 
  45. "Xi congratulates Masoud Pezeshkian on election as Iranian president"۔ Xinhua۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 جولا‎ئی 2024 
  46. "Putin Congratulates Iran's New President, Hopes for Closer Ties"۔ The Moscow Times (بزبان انگریزی)۔ 2024-07-06۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 جولا‎ئی 2024 
  47. "Saudi leaders congratulate Iran's new president"۔ Arab News (بزبان انگریزی)۔ 2024-07-06۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 جولا‎ئی 2024 

بیرونی روابط[ترمیم]