ایلس واکر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
الائس واکر
Alice Walker.jpg
واکر کی 2007ء کی ایک تصویر
پیدائش9 فروری 1944ء (عمر 76 سال)
ایٹنٹن، جارجیا، U.S.
پیشہNovelist, short story writer, poet, political activist
مادر علمیSpelman College
Sarah Lawrence College
دور1968–present
اصنافAfrican-American literature
نمایاں کامThe Color Purple
اہم اعزازاتPulitzer Prize for Fiction
1983
National Book Award
1983
شریک حیاتMelvyn Rosenman Leventhal (married 1967, divorced 1976)
ساتھیRobert L. Allen، Tracy Chapman
اولادRebecca Walker
from the BBC programme Desert Island Discs، مئی 19, 2013.[1]

ویب سائٹ
alicewalkersgarden.com

الائس واکر (انگریزی: Alice Walker) (ولادت: 9 فروری 1944ء) امریکا کی ناول نگار، افسانہ نگار، شاعرہ اور سماجی کارکن ہیں۔ 1982ء میں انہوں نے اپنا ناول دی کلر پرپل لکھا جس کے لئے انہیں نیسنل بک اوارڈ سے نوازا گیا۔ انہیں پولٹزر پرائز فار فکشن بھی ملا۔[2][3] اس کے علاوہ انہوں نے 1976ء میں میریڈین اور 1970ء میں دی تھرڈ لائف آف گرانج کوپ لینڈ جیسے ناول لکھے۔ واکر نسوانیت پسند لکھاری ہیں مگر انہوں نے اپنے لئے انگریزی لفظ (feminist) کی جگہ (womanist) منتخب کیا۔ انہوں نے اس کا مطلب “ایک سیاہ فام نسوانیت پسند یا رنگ کی نسوانیت پسند‘‘ ہے۔[4]

ابتدائی زندگی[ترمیم]

الائس مال سینئر تلولاہ-کیٹ واکر کی ولادت ایٹنٹن، جارجیا میں ہوئی۔ یہ ویک کشت کاری والا دیہی علاقہ ہے۔ان کے والد ولی لی واکر اور والدہ منی تولالاہ گرانٹ تھیں۔[5][6] شادی سے قبل واکر کے والدین مشترک کاشتکاری کرتے تھے۔ البتہ والدہ الگ سے بھی پیسے کماتی تھیں۔واکر اپنے آٹھ بھائی بہنوں میں سب سے چھوٹی تھیں مگر ان کے علاوہ کوئی بھی اسکول نہیں گیا۔ انہوں نے 4 برس کی عمر میں اسکول میں داخلہ لیا۔[5][7]

8 برس کی عمر میں ان کے ایک بھائی نے بی بی بندوق چلائی جس کی وجہ ان کی دائیں آنکھ میں زخم آگیا۔[7] چونکہ ان کے پاس کار نہیں لہذا انہیں فوری اسپتال نہیں لے جا سکا اور وہ اس آنکھ سے ہمیشہ کے لئے اندھی ہو گئیں۔ آنکھ زخمی ہونے کے بعد ہی انہوں نے پڑھنا لکھنا شروع کیا۔[5] ان کی آنکھ سے اسکار ٹیشو تو نکال دیا گیا مگر ایک نشان باقی رہ گیا ہے۔ اس وقت ان کی عمر 14 سال تھی۔ انہوں نے اپنے ایک افسانہ میں اس کا تذکرہ کیا ہے۔[8][7]

ایٹنٹن، جارجیا کے سارے اسکول سیاہ فام لوگوں کے بند کردئے گیے تھے۔ شہر بھر میں صرف ایک اسکول: بٹلر بیکر ہائی اسکول ایسا بچا تھا جس میں کوئی سیاہ فام داخلہ لے سکتا تھا۔ واکر کی تعلیم اسی اسکول میں ہوئی۔[7] جارجیا (امریکی ریاست) نے انہیں بہترین نمبرات سے کامیاب ہونے کی وجہ سے مکمل اسکالرشپ سے نوازا اور انہوں نے 1961ء میں اسپیلمین کالج میں داخلہ لیا۔[5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Alice Walker". Desert Island Discs. 19 مئی، 2013. BBC Radio 4. http://www.bbc.co.uk/programmes/b01shstm۔ اخذ کردہ بتاریخ جنوری 18, 2014. 
  2. "National Book Awards – 1983"۔ National Book Foundation. Retrieved مارچ 15, 2012. (With essays by Anna Clark and Tarayi Jones from the Awards 60-year anniversary blog.)
  3. "The 1983 Pulitzer Prize Winner in Fiction". The Pulitzer Prizes. اخذ شدہ بتاریخ 25 مارچ 2019. 
  4. "Document". gseweb.gse.buffalo.edu. اخذ شدہ بتاریخ 26 مارچ 2018. 
  5. ^ ا ب پ ت Bates، Gerri (2005). Alice Walker: A Critical Companion. Greenwood Press. OCLC 62321382. 
  6. Moore, Geneva Cobb, and Andrew Billingsley. Maternal Metaphors of Power in African American Women's Literature: From Phillis Wheatley to Toni Morrison. University of South Carolina Press, 2017, OCLC 974947406۔
  7. ^ ا ب پ ت The Officers of the Alice Walker Literary Society. "About Alice Walker". Alice Walker Literary Society. اخذ شدہ بتاریخ جون 15, 2015. 
  8. World Authors 1995–2000، 2003. Biography Reference Bank database. Retrieved اپریل 10, 2009.