ایلی کوہن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ایلی کوہن
אלי כהן
(عبرانی میں: אלי כהן خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی زبان میں نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (عبرانی میں: אלי خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیدائشی نام (P1477) ویکی ڈیٹا پر
پیدائش 26 دسمبر 1924(1924-12-26)
اسکندریہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 18 مئی 1965(1965-50-18) (عمر  40 سال)
سوریہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
وجۂ وفات پھانسی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وجۂ وفات (P509) ویکی ڈیٹا پر
مدفن دمشق  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام دفن (P119) ویکی ڈیٹا پر
طرز وفات سزائے موت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں طرزِ موت (P1196) ویکی ڈیٹا پر
قومیت اسرائیلی
زوجہ نادیہ
اولاد صوفی, اریت, شائی
عملی زندگی
پیشہ جاسوس  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
ملازمت موساد  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں نوکری (P108) ویکی ڈیٹا پر
الزام
جرم جاسوسی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں جرم (P1399) ویکی ڈیٹا پر

ایلی کوہن (Eli Cohen)ا(عبرانی: אֱלִיָּהוּ בֵּן שָׁאוּל כֹּהֵן‎‎, عربی: ايلي كوهين‎; 26 دسمبر1924 – 18 مئی1965)،یک اسرائیلی جاسوس تھا۔ اس کو عربی زبان پر عبور حاصل تھا۔ اس نے شام کی فوجی اسٹیبلشمنٹ میں اس قدر اثر و رسوخ حاصل کیا کہ اسے شامی وزارت دفاع میں بطور مشیر ذمہ داریاں تک دے دی گئیں، صرف یہی نہیں بلکہ اعزازی طور پر میجر کا عہدہ بھی دیا گیا تھا۔ ایلی کوہن اپنا کام انتہائی ذہانت سے کر رہا تھا اور شام کو اُس پر بالکل بھی شک نہیں تھا کہ روس کی وجہ سے شام کو ایلی پر شک ہو گیا۔ اصل میں جب بھی ایلی کوہن اپنے ملک اسرائیل بذریعہ سیٹیلائٹ رابطہ کرنے کی کوشش کرتا تو روس کے سگنل بُری طرح متاثر ہوتے۔ جب معاملہ زیادہ پیچیدہ ہوا تو روس نے شام سے شکایت کی، لیکن شام نے واضح طور پر انکار کیا کہ اُن کی طرف سے تو ایسا کچھ نہیں کیا جا رہا۔ پھر جب روس نے باقاعدہ ثبوت فراہم کیے تو شام نے تحقیقات کا آغاز کیا تو سراغ ڈھونڈتے ڈھونڈتے ایلی کوہن کے گھر تک پہنچ گئے اور 24 جنوری 1965ء کو ایلی کوہن ریڈیو سگنل بھیجتا ہوا گرفتار ہو گیا۔ شام کی فوجی عدالت سے اس کو سزائے موت سنائی جس کو رکوانے کے لیے دنیا بھر میں مظاہرے ہوئے مگر 18 مئی 1965ء کو شام کے شہر دمشق میں اس کو سرِعام پھانسی دے دی گئی۔ اسرائیلی وزیر اعظم نے 1965 میں ایلی کوہن کے لیے ہی پہلی بار ون مین آرمی کی اصطلاح استعمال کی گئی۔