ایوان کونسلرز (جاپان)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

متناسقات: 35°40′35.5″N 139°44′40.5″E / 35.676528°N 139.744583°E / 35.676528; 139.744583

ایوان کونسلرز
参議院
Sangiin
Coat of arms or logo
قسم
قسم
Upper house
قیادت
Akiko Santō، LDP (caucus: independent)
از 1 اگست 2019
Toshio Ogawa، CDP (caucus: independent)
از 1 اگست 2019
ساخت
نشستیں 245
Svgfiles House of Councillors Japan 20191010.svg
سیاسی گروہ

Government (141)

Opposition (104)

انتخابات
Parallel voting:
Single non-transferable vote (147 seats)
پارٹی لسٹ سسٹم (98 seats)
Staggered elections
پچھلے انتخابات
21 جولائی 2019
اگلے انتخابات
2022
مقام ملاقات
Japanese diet inside.jpg
Chamber of the House of Councillors
ویب سائٹ
www.sangiin.go.jp
Imperial Seal of Japan.svg
مضامین بسلسلہ
سیاست و حکومت
جاپان
باب Japan

ایوان کونسلرز (انگریزی: House of Councillors) جاپان کی پارلیمان کا ایوان بالا ہے۔ پارلیمان جاپان کا ایوان زیریں ایوان نمائندگان کہلاتا ہے۔ ایوان بالا ما قبل جنگ کے ایوان پیرز کا متبادل ہے۔ اگر ایوان زیریں اور ایوان بالا میں بجٹ، معاہدہ یا وزیر اعظم جاپان کے عہدہ پر آپسی رضامندی نہ ہوتو ایوان زیریں کو اپنے فیصلے پر بضد رہنے کا اختیار ہے۔ دیگر معاملات میں ایوان زیریں ایوان بالا کے فیصلوں کو دو تہائی اکثریت کی منظوری کے ساتھ کالعدم کر سکتا ہے۔

ایوان کونسلرز میں کل 242 ارکان ہوتے ہیں جو 6 سال کی مدت کے لئے منتخب ہوتے ہیں۔ ہر کونسلر کو کی عمر کم از کم 30 سال ہونی چاہئے جبکہ ایوان زیریں کے رکن کی عمر کم از کم 25 سال ہونا لازمی ہے۔ ایوان بالا کبھی تحلیل نہیں ہوتا ہے۔ ہر انتخاب میں نصف ارکان منتخب ہوتے ہیں۔ ہر انتخابات میں 121 ارکان امید وار ہوتے ہیں جن میں 73 ارکان 47 ضلعوں میں واحد ناقابل منتقل ووٹ کے ذریعے منتخب ہوتے ہیں جبکہ 48 ارکان ملک بھر سے متناسب نمائندگی کے ذریعے منتخب ہو کر آتے ہیں۔[1]

ایوان بالا اور ایوان زیریں میں فرق[ترمیم]

ایوان نمائندگان کے پاس کئی ایسے اختیارات ہیں جو ایوان کونسلرز کے پاس نہیں ہیں۔ مثال کے طور پر اگر ایوان زیریں میں کوئی بل منظور ہوا اور ایوان بالا نے اس بل کو نا منظور کر دیا تو ایوان زیریں (ایوان نمائندگان) دو تہائی اکثریت کی منظوری کے ساتھ ایوان بالا (ایوان کونسلرز) کے فیصلے کو کالعدم کر سکتا ہے۔ البتہ معاہدہ، بجٹ اور وزیر اعظم کے انتخاب میں ایوان بالا ایوان زیریں کے فیصلہ کو موخر کر سکتا ہے مگر منسوخ نہیں کر سکتا ہے۔ اس لحاظ سے ایوان نمائندگان ایوان کونسلرز کے مقابلے میں زیادہ با اختیار تسلیم کیا جاتا ہے۔ ایوان زیریں کے ارکان 4 برس کے لئے منتخب ہوتے جبکہ ایوانا بالا کے ارکان 6 سال کے لئے منتخب ہوتے ہیں۔ ایوان زیریں کو وزیر اعظم تحلیل کر سکتا ہے۔ تحریک عدم اعتماد کی صورت میں بھی ایوان زیریں تحلیل ہو جاتا ہے جبکہ ایوان بالا کبھی تحلیل نہیں ہوتا ہے۔ اس طرح ایوان نمائندگان زیادہ حساس اور عوام سے قریب ہوتا ہے۔

گرچہ ایوان زیریں کے ارکان 4 سال کے لئے منتخب ہوتے ہیں مگر جاپان میں قبل از وقت اتنخابات عام بات ہے۔ ارکان پارلیمان کی اوسط میعاد اب تک 3 سال رہی ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Hayes 2009, p. 50