ایو ساں لاریں

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
ایو ساں لاریں
(فرانسیسی میں: Yves Saint Laurent ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Study of Yves Saint Laurent by Reginald Gray.jpg
 

معلومات شخصیت
پیدائشی نام (فرانسیسی میں: Yves Henri Donat Mathieu-Saint-Laurent ویکی ڈیٹا پر (P1477) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیدائش 1 اگست 1936[1][2][3][4][5][6][7]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وہران  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 1 جون 2008 (72 سال)[8][1][2][3][4][5][6]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیرس[9]  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات دماغ کا سرطان  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات طبعی موت  ویکی ڈیٹا پر (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of France.svg فرانس[10]  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ درزن اصلی،  نمونہ ساز[11]،  کاسٹیوم ڈیزائنر،  کاروباری شخصیت،  آرٹ کولکٹر،  فیشن ڈیزائنر[12]،  جوہری[13]  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان فرانسیسی[14]  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل fashion history  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
Legion Honneur GO ribbon.svg گرینڈ آفیسر آف دی لیجن آف آنر (2007)  ویکی ڈیٹا پر (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحات  ویکی ڈیٹا پر (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ایو ساں لوراں (فرانسیسی: Yves Saint Laurent) (یکم اگست 1936ء - یکم جون 2008ء) مشہور الجزائری نژاد فرانسیسی فیشن ڈیزائنر تھے۔ وہ 20 ویں صدی میں فرانس کے فیشن منظرنامے کی عظیم ترین ہستیوں میں شمار کیے جاتے ہیں۔

ساں لوراں یکم اگست 1936ء کو الجزائر کے شہر اوران میں پیدا ہوئے، جو اس وقت فرانس کے قبضے میں تھا۔ انہیں بچپن سے ہم جنسیت کے طعنے برادشت کرنے پڑے۔ [حوالہ درکار] ایو ساں لوراں نے اکیس سال کی عمر میں فیشن ہاؤس کرستیاں دیوغ (Christian Dior) سے اپنا تعلق جوڑا اور ایسے ملبوسات متعارف کرائے جن میں عورتوں کی آزادی کے تصور کو اجاگر کیا۔

ایو ساں لوراں نے ایک مرتبہ کہا تھا کہ انہوں نے ہمیشہ عورت کے جسم کے لیے ڈیزائن کیا جس سے وہ اپنا انداز بنانے میں کامیاب ہوئے۔ ساں لوراں کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ بڑے بڑے فلمی ستارے ان کے گرد گھومتے نظر آتے تھے اور ان کے ڈیزائن نوجوان نسل میں انتہائی مقبول تھے۔ ایو ساں لوراں کی جدت پسندی نے عورت کی شخصیت کو اور بھی باوقار بنایا۔ [حوالہ درکار] ایو ساں لوراں اس بات پر قائل تھے کہ خوبصورت نظر آنا عورت اور مرد دونوں کا حق ہے۔ پچاس کی دہائی میں ایو ساں لوراں کے پہلے ڈیزائنوں نے معاشرے میں ہیجان کی کیفت پیدا کر دی۔ [حوالہ درکار]

ایو ساں لوراں ساری زندگی ذہنی اور جسمانی بیماریوں میں مبتلا رہے اور تقاریب میں بہت کم نظر آئے۔ یکم جون 2008ء کو دماغ کے سرطان کے باعث پاغی میں چل بسے۔ ان کی راکھ مراکش میں بہائی گئی۔

  1. ^ ا ب ربط : https://d-nb.info/gnd/118750798  — اخذ شدہ بتاریخ: 27 اپریل 2014 — اجازت نامہ: CC0
  2. ^ ا ب http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb120289995 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: فرانس کا قومی کتب خانہ — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  3. ^ ا ب Yves Saint Laurent
  4. ^ ا ب دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Yves-Saint-Laurent-French-designer — بنام: Yves Saint Laurent — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  5. ^ ا ب ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w6w51v61 — بنام: Yves Saint Laurent (designer) — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  6. ^ ا ب انٹرنیٹ بروڈوے ڈیٹا بیس پرسن آئی ڈی: https://www.ibdb.com/broadway-cast-staff/25286 — بنام: Yves Saint-Laurent — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  7. فائنڈ اے گریو میموریل شناخت کنندہ: https://www.findagrave.com/memorial/27248675 — بنام: Yves Saint Laurent — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  8. http://web.archive.org/web/20090116083250/http://www.theglobeandmail.com/servlet/story/RTGAM.20080601.wlaurent0501/BNStory/lifeStyle/home
  9. ربط : https://d-nb.info/gnd/118750798  — اخذ شدہ بتاریخ: 31 دسمبر 2014 — اجازت نامہ: CC0
  10. https://libris.kb.se/katalogisering/qn25bpp844f4324 — اخذ شدہ بتاریخ: 24 اگست 2018 — شائع شدہ از: 15 جنوری 2013
  11. بنام: Ontwerper — NMVW ID: https://hdl.handle.net/20.500.11840/pi69326 — اخذ شدہ بتاریخ: 16 جنوری 2020
  12. https://cs.isabart.org/person/150095 — اخذ شدہ بتاریخ: 1 اپریل 2021
  13. https://hedendaagsesieraden.nl/2022/09/28/all-that-glitters/
  14. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb120289995 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — مصنف: فرانس کا قومی کتب خانہ — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ