ایک روزہ بین الاقوامی کرکٹ میں پاکستان کے ریکارڈز کی فہرست

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

یہ فہرست پاکستان ایک روزہ بین الاقوامی کرکٹ ریکارڈ کی ایک فہرست ہے ، یہ ریکارڈ ٹیم اور ایک روزہ بین الاقوامی (او ڈی آئی) کرکٹ میں ٹیم اور انفرادی پرفارمنس ہے. ٹیسٹ کرکٹ کے لیے ریکارڈز ٹیسٹ کرکٹ ریکارڈوں کی فہرست میں موجود ہیں۔ یہ فہرست ایک روزہ انٹرنیشنل کرکٹ ریکارڈ کی فہرست پر مبنی ہے.

علامت مطلب
کھلاڑی موجودہ کرکٹ میں فعال ہے!
* پلیئر ناٹ آؤٹ رہا یا شراکت داری قائم رہی
عالمی ریکارڈ
تاریخ میچ کی تاریخ
اننگز اننگز کی تعداد
میچز میچز کی تعداد
مخالف ٹیم سری لنکا کے خلاف کھیل رہی تھی
مدت اس وقت کے دوران جب کھلاڑی ون ڈے کرکٹ میں سرگرم تھا
کھلاڑی کھلاڑی ریکارڈ میں شریک تھا
مقام ایک روزہ انٹرنیشنل کرکٹ کے میدان جہاں میچ کھیلا گیا تھا


ٹیم ریکارڈ[ترمیم]

مجموعی ریکارڈ[ترمیم]

میچ کھیلے جیتے ہارے برابر بے نتیجہ جیت کی شرح فیصد %
942 495 418 9 20 54.17
آخری تجدید: 7 جولائی 2022[1]

ٹیم جیت، ہار اور برابر[ترمیم]

بالمقابل ایک روزہ میچ جیتے ہارے برابر بے نتیجہ %جیت پہلا آخری
مکمل ارکان
 افغانستان 4 4 0 0 0 100.00 2012 2019
 آسٹریلیا 104 32 68 3 3 32.17 1975 2019
 بنگلادیش 37 32 5 0 0 86.48 1986 2019
 انگلستان 91 32 56 0 3 36.36 1974 2021
 بھارت 132 73 55 0 4 57.03 1978 2019
 آئرلینڈ 7 5 1 1 0 78.57 2007 2016
 نیوزی لینڈ 107 55 48 1 3 53.36 1973 2019
 جنوبی افریقا 82 30 51 0 1 37.03 1992 2021
 سری لنکا 155 92 58 1 4 61.25 1975 2019
 ویسٹ انڈیز 134 63 71 3 0 47.08 1975 2022
 زمبابوے 62 54 4 2 2 91.66 1992 2020
شریک ارکان
 کینیڈا 2 2 0 0 0 100.00 1979 2011
 ہانگ کانگ 3 3 0 0 0 100.00 2004 2018
 کینیا 6 6 0 0 0 100.00 1996 2011
 نمیبیا 1 1 0 0 0 100.00 2003 2003
 نیدرلینڈز 3 3 0 0 0 100.00 1996 2003
 سکاٹ لینڈ 3 3 0 0 0 100.00 1999 2013
 متحدہ عرب امارات 3 3 0 0 0 100.00 1994 2015
مجموعہ 936 490 417 9 20 53.98 1973 2022
یہ شماریات  پاکستان بمقابلہ  جنوبی افریقا بمقام سنچورین پارک میں کھیلے گئے تیسرے ایک روزہ میچ جو 7 اپریل 2021 کو کھیلا گیا، تک کے ہیں۔ [2]

پہلی باہمی ایک روزہ سیریز جیت[ترمیم]

بالمقابل ہوم گراؤنڈ پر جیت کا سال ملک سے باہر جیت کا سال
 آسٹریلیا 1982 2002
 بنگلادیش 2003 1999
 انگلستان 2000 1974
 بھارت 1978 1987
 نیوزی لینڈ 1984 1994
 جنوبی افریقا 2013
 سری لنکا 1982 1986
 ویسٹ انڈیز 1990 2005
 زمبابوے 1993 1993
آخری تجدید: 1 جولائی 2020[3]

دو طرفہ سیریز کے تمام میچوں میں جیت[ترمیم]

دو طرفہ سیریز میں تمام میچ جیتنے کو وائٹ واش کہا جاتا ہے۔ اس طرح کا پہلا واقعہ اس وقت ہوا جب ویسٹ انڈیز نے 1976 میں انگلینڈ کا دورہ کیا تھا۔ پاکستان نے اس طرح کی 20 فتوحات ریکارڈ کیں۔[4]

بمقابلہ میچ میزبان سیزن
 سری لنکا 4  پاکستان 1985/86
 نیوزی لینڈ 3  پاکستان 1990/91
 ویسٹ انڈیز 3  پاکستان 1990/91
 زمبابوے 3  پاکستان 1993/94
 زمبابوے 3  پاکستان 1996/97
 ویسٹ انڈیز 3  کینیڈا 1999
 بنگلادیش 3  بنگلادیش 2001/02
 نیوزی لینڈ 3  پاکستان 2002
 زمبابوے 5  زمبابوے 2002/03
 بنگلادیش 5  پاکستان 2003
 نیوزی لینڈ 5  پاکستان 2003/04
 ویسٹ انڈیز 3  ویسٹ انڈیز 2005
 زمبابوے 5  پاکستان 2007/08
 بنگلادیش 5  پاکستان 2007/08
 ویسٹ انڈیز 3  متحدہ عرب امارات 2008/09
 زمبابوے 3  زمبابوے 2011
 بنگلادیش 3  بنگلادیش 2011/12
 ویسٹ انڈیز 3  متحدہ عرب امارات 2016/17
 سری لنکا 5  متحدہ عرب امارات 2017/18
 زمبابوے 5  زمبابوے 2018
آخری تجدید: 1 جولائی 2020[4]

دو طرفہ سیریز کے ہر میچ میں ہار[ترمیم]

پاکستان کو 11 مرتبہ وائٹ واش (تمام میچوں میں شکست) کا سامنا کرنا پڑا۔

بمقابلہ میچ میزبان سیزن
 ویسٹ انڈیز 3  پاکستان 1980/81
 انگلستان 3  پاکستان 1987/88
 ویسٹ انڈیز 5  ویسٹ انڈیز 1987/88
 آسٹریلیا 3  پاکستان 1998/99
 سری لنکا 3  پاکستان 1999/00
 آسٹریلیا 5  آسٹریلیا 2009/10
 انگلستان 4  متحدہ عرب امارات 2011/12
 آسٹریلیا 3  متحدہ عرب امارات 2014/15
 بنگلادیش 3  بنگلادیش 2015
 نیوزی لینڈ 5  نیوزی لینڈ 2017/18
 آسٹریلیا 5  متحدہ عرب امارات 2018/19
آخری تجدید: 1 جولائی 2020[4]

ٹیم کے سکورنگ ریکارڈ[ترمیم]

ایک اننگز میں زیادہ سے زیادہ سکور[ترمیم]

رینک اسکور مخالف مقام موسم
1 399-1
 زمبابوے کوئنز اسپورٹس کلب 20 جولائی 2018
2 386-7
 بنگلادیش ڈمبر 21 جون 2010
3 375-3
 زمبابوے لاہور 26 مئی 2015
4 371-9  سری لنکا نروبی 4 اکتوبر 1996
5 364-7  نیوزی لینڈ شارجہ 15 دسمبر 2014
364-4  زمبابوے کوئنز اسپورٹس کلب 22 جولائی 2018
6 361-7  انگلستان ساؤتھامپٹن 11 مئی 2019
7 358-9  انگلستان برسٹل 14 مئی 2019
8 353-6  انگلستان کراچی 15 دسمبر 2005
9 351-4  جنوبی افریقا دربان 7 فروری 2007
ماخذ: کرک انفو . آخری اپ ڈیٹ: 14 اگست 2022

ایک اننگز میں کم سے کم سکور[ترمیم]

درجہ سکور مخالف ٹیم بمقام تاریخ سکورکارڈ
1 43  ویسٹ انڈیز نیولینڈز اسٹیڈیم، کیپ ٹاؤن، جنوبی افریقہ 25 فروری 1993 سکورکارڈ
2 71 برسبین کرکٹ گراؤنڈ، برسبین، آسٹریلیا 9 جنوری 1993 سکورکارڈ
3 74  انگلستان ایڈیلیڈ اوول، ایڈیلیڈ، آسٹریلیا 1 مارچ 1992 سکورکارڈ
 نیوزی لینڈ یونیورسٹی اوول، ڈنیڈن، نیوزی لینڈ 13 جنوری 2018 سکورکارڈ
5 75  سری لنکا قذافی اسٹیڈیم، لاہور، پاکستان 24 جنوری 2009 سکورکارڈ
آخری تجدید: 1 جولائی 2020[5]

دونوں ٹیموں کا زیادہ سے زیادہ مجموعہ[ترمیم]

درجہ مجموعہ سکور بمقام تاریخ سکورکارڈ
1 734/10  انگلستان (373/3) v  پاکستان (361/7) روزباؤل، ساؤتھمپٹن، انگلستان 11 مئی 2019 سکورکارڈ
2 719/13  انگلستان (444/3) v  پاکستان (275) ٹرینٹ برج، ناٹنگھم، انگلستان 30 اگست 2016 سکورکارڈ
3 717/13  پاکستان (358/9) v  انگلستان (359/4) برسٹل کاؤنٹی، برسٹل، انگلستان 14 مئی 2019 سکورکارڈ
4 709/8  پاکستان (375/3) v  بنگلادیش (334/5) قذافی اسٹیڈیم، لاہور، پاکستان 26 مئی 2015 سکورکارڈ
5 693/15  بھارت (349/7) v  پاکستان (344/8) نیشنل اسٹیڈیم، کراچی،پاکستان 13 مارچ 2004 سکورکارڈ
آخری تجدید: 1 جولائی 2020[6]


دونوں ٹیموں کا کم سے کم مجموعہ[ترمیم]

درجہ مجموعہ سکور بمقام تاریخ سکورکارڈ
1 88/13  پاکستان (43) v  ویسٹ انڈیز (45/3) صحارا پارک نیولینڈز، کیپ ٹاؤن، جنوبی افریقا 25 فروری 1993 سکورکارڈ
2 130/10  نیوزی لینڈ (64) v  پاکستان (66/0) شارجہ کرکٹ اسٹیڈیم، شارجہ، متحدہ عرب امارات 15 اپریل 1986 سکورکارڈ
3 136/11  زمبابوے (67) v  پاکستان (69/1) کوئنز اسپورٹس کلب، بولاوایو، زمبابوے 18 جولائی 2018 سکورکارڈ
4 143/11  پاکستان (71) v  ویسٹ انڈیز (72/1) برسبین کرکٹ گراؤنڈ، برسبین،آسٹریلیا 9 جنوری 1993 سکورکارڈ
5 151/12  نیوزی لینڈ (74) v  پاکستان (77/2) شارجہ کرکٹ اسٹیڈیم، شارجہ، متحدہ عرب امارات 1 مئی 1990 سکورکارڈ
آخری تجدید: 1 جولائی 2020[7]

ایک اننگز میں پاکستان کے خلاف سب سے بڑا مجموعہ[ترمیم]

درجہ سکور مخالف ٹیم بمقام تاریخ سکورکارڈ
1 444/3  انگلستان ٹرینٹ برج،ناٹنگھم، انگلستان 30 اگست 2016 سکورکارڈ
2 392/6  جنوبی افریقا سپراسپورٹ پارک،سینچورین، گاؤٹینگ،جنوبی افریقا 4 فروری 2007 سکورکارڈ
3 373/3  انگلستان روز باؤل،ساؤتھمپٹن،انگلستان 11 مئی 2019 سکورکارڈ
4 369/5  نیوزی لینڈ مکلین پارک،نیپئر،نیوزی لینڈ 3 فروری 2015 سکورکارڈ
369/7  آسٹریلیا ایڈیلیڈ اوول،ایڈیلیڈ،آسٹریلیا 26 جنوری 2017 سکورکارڈ
آخری تجدید: 1 جولائی 2020[8]

ایک اننگز میں پاکستان کے خلاف سب سے کم مجموعہ[ترمیم]

درجہ سکور مخالف ٹیم بمقام تاریخ سکورکارڈ
1 64  نیوزی لینڈ شارجہ کرکٹ اسٹیڈیم، شارجہ، متحدہ عرب امارات 15 اپریل 1986 سکورکارڈ
2 67  زمبابوے کوئنز اسپورٹس کلب، بولاوایو، زمبابوے 18 جولائی 2018 سکورکارڈ
3 74  نیوزی لینڈ شارجہ کرکٹ اسٹیڈیم، شارجہ، متحدہ عرب امارات 1 مئی 1990 سکورکارڈ
4 78  سری لنکا 17 اپریل 2002 سکورکارڈ
5 79  بھارت جناح اسٹیڈیم، سیالکوٹ، پاکستان 13 اکتوبر 1978 سکورکارڈ
آخری تجدید: 1 جولائی 2020[9]

انفرادی ریکارڈ[ترمیم]

انفرادی ریکارڈ (بیٹنگ)[ترمیم]

سب سے زیادہ انفرادی سکور[ترمیم]

رینک چلتا ہے پلیئر مخالف مقام تاریخ
1 210 * فخر زمان  زمبابوے کوئنز اسپورٹس کلب 20 جولائی 2018
2 194 سعید انور  بھارت چنئی 21 مئی 1997
3 160 عمران نذیر  زمبابوے کنگسٹن 21 مارچ 2007
4 152 شرجیل خان  آئرلینڈ ڈبلن 18 اگست 2016
5 151 امام الحق  انگلستان برسٹل 14 مئی 2019
6 144 یونس خان  ہانگ کانگ کولمبو 18 جولائی 2004
7 143 شعیب ملک  بھارت کولمبو 25 جولائی 2004
8 141 * محمد یوسف  زمبابوے کوئنز اسپورٹس کلب 23 نومبر 2002
9 140 * محمد حفیظ  سری لنکا شارجہ 22 دسمبر 2013
10 140 سعید انور  بھارت ڈھکا 18 جنوری 1998
ماخذ: کرییکنفو آخری اپ ڈیٹ: 14 مئی 2019

کیریئر میں زیادہ سکور[ترمیم]

درجہ چلتا ہے اوسط ہڑتال کی شرح پلیئر میچز اننگز مدت
1 11،739 39.53 74.20 انضمام الحق 375 348 1991-2007.
2 9،720 42.08 74.91 محمد یوسف 281 267 1998-2010.
3 8،824 39.21 80.67 سعید انور 247 244 1989-2003.
4 8،027 23.81 116.94 شاہد آفریدی 393 364 1996-2015.
5 7،481 35.12 81.75 شعیب ملک 282 253 1999 سے پہلے
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 14 مئی 2019.

سب سے زیادہ کیریئر اوسط[ترمیم]

رینک اوسط چلتا ہے پلیئر میچز اننگز مدت
1 60.04 1،381 امام الحق 27 27 2017 پہلے.
2 52.83 1،585 فخر زمان 34 34 2017 پہلے.
3 49.88 2،544 بابر اعظم 62 60 2015-قبل
4 47.62 2،572 ظہیر عباس 62 60 1974-1985
5 47.14 1،320 حارث سہیل 34 33 2013-قبل
اہلیت: 20 اننگز.



</br> ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 14 مئی 2019.

بہترین سٹرائیک کی شرح[ترمیم]

رینک سٹرائیک کی شرح پلیئر مدت
1 116.94 شاہد آفریدی 1996-2015
2 113.40 شرجیل خان 2013-2017
3 106.92 عماد وسیم 2015-قبل
4 97.83 فخر زمان 2017 پہلے.
5 89.60 منظور الہی 1984-1995
اہلیت: 500 سے زائد گیندوں کا سامنا.



</br> ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 14 مئی 2019

زیادہ کیریئر سنچریاں[ترمیم]

رینک سنچریاں کھلاڑی مدت
1 20 سعید انور 1989-2003
2 15 محمد یوسف 1998-2010.
3 11 محمد حفیظ 2003-پری.
4 10 اعجاز احمد 1986-2000.
5 10 انضمام الحق 1992-2007.
ماخذ: کرییکنفو آخری اپ ڈیٹ: 2 اپریل 2017.

زیادہ 50+ اسکور[ترمیم]

رینک نصف سنچریاں پلیئر مدت
1 93 انضمام الحق 1991-2007.
2 77 محمد یوسف 1998-2010.
3 63 سعید انور 1989-2003.
4 58 جاوید میانداد 1975-1996.
5 55 یونس خان 2000-2015.
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 14 مئی 2019.

زیادہ صفر[ترمیم]

رینک بتھ پلیئر مدت
1 29 شاہد آفریدی 1996-2015.
2 28 وسیم اکرم 1984-2003.
3 22 یونس خان 2000-2015.
4 20 انضمام الحق 1991-2007.
5 19 سلیم ملک 1982-1999.
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 14 مئی 2019.

انفرادی ریکارڈ (گیند بازی)[ترمیم]

زیادہ کیریئر وکٹیں[ترمیم]

رینک وکٹ پلیئر میچز اوسط مدت
1 502 وسیم اکرم 356 23.52 1984-2003.
2 416 وقار یونس 262 23.84 1989-2003.
3 395 شاہد آفریدی 398 34.53 1996-2015.
4 288 ثقلین مشتاق 169 21.78 1995-2003.
5 269 عبد الرزاق 265 31.53 1996-2011.
6 247 شعیب اختر 163 24.70 1998-2011.
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 22 نومبر 2016.

بہترین بولنگ کے اعداد و شمار[ترمیم]

رینک بولنگ پلیئر حزب اختلاف زمین تاریخ
1 7/12 شاہد آفریدی  ویسٹ انڈیز پروویڈنس 14 جولائی 2013
2 7/36 وقار یونس  انگلستان لیڈز 17 جون 2001
3 7/37 عاقب جاوید  بھارت شارجہ 25 اکتوبر 1991
4 6/14 عمران خان  بھارت شارجہ 22 مارچ 1985
5 6/16 شعیب اختر  نیوزی لینڈ کراچی 21 اپریل 2002
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 22 نومبر 2016.

بہترین کیریئر اوسط[ترمیم]

رینک اوسط پلیئر میچز گیندوں مدت
1 21.78 ثقلین مشتاق 169 8770 1995-2003.
2 22.72 سعید اجمل 113 6000 2008-2015.
3 23.22 سرفراز نواز 45 2412 1973-1984.
4 23.52 وسیم اکرم 356 18،186 1984-2003.
5 23.84 وقار یونس 262 12،698 1989-2003.
6 24.70 شعیب اختر 158 750 9 1998-2011.
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 14 مئی 2019.

بہترین اکانومی شرح[ترمیم]

رینک شرح اکانومی پلیئر مدت
1 3.63 سرفراز نواز 1973-1984.
2 3.71 اکرم رضا 1989-1995.
3 3.89 عمران خان 1974-1992.
4 3.89 وسیم اکرم 1984-2003.
5 4.06 عبدالقادر 1983-1993.
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 15 اکتوبر 2015.

زیادہ تر پانچ وکٹ[ترمیم]

رینک 5 وکٹیں پلیئر مدت
1 13 وقار یونس 1989-2003.
2 9 شاہد آفریدی 1996-2015.
3 6 ثقلین مشتاق 1995-2003.
4 6 وسیم اکرم 1984-2003.
5 4 شعیب اختر 1998-2011.
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 22 نومبر 2016.

انفرادی ریکارڈ (وکٹ کیپنگ)[ترمیم]

ایک روزہ کیریئر میں زیادہ آؤٹ (کیچ اور سٹمپ)[ترمیم]

رینک خطرات پکڑو سٹمپ پلیئر مدت
1 287 214 73 معین خان 1990-2004.
2 220 182 38 راشد لطیف 1992-2003.
3 187 156 31 کامران اکمل 2002-قبل.
4 121 98 23 سرفراز احمد 2007 - قبل
5 103 81 22 سلیم یوسف 1982-1990.
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 14 مئی 2019.

انفرادی ریکارڈ (دیگر)[ترمیم]

زیادہ میچ کھیلنے والی کھلاڑی[ترمیم]

رینک میچز پلیئر مدت
1 398 شاہد آفریدی 1996-2015.
2 375 انضمام الحق 1991-2007.
3 356 وسیم اکرم 1984-2003.
4 283 سلیم ملک 1982-1999.
5 282 شعیب ملک 1999 سے پہلے.
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 14 مئی 2019.

کپتان کے طور پر زیادہ جیت[ترمیم]

رینک وون میچز پلیئر جیت٪
1 25 37 شعیب ملک 67.56
2 21 34 سلیم ملک 64.70
3 37 62 وقار یونس 61.66
4 66 109 وسیم اکرم 61.46
5 51 87 انضمام الحق 60.71
(کم از کم 30 کھیل) ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 4 جولائی 2018.

پارٹنرشپ ریکارڈ[ترمیم]

سب سے زیادہ وکٹ شراکت داری[ترمیم]

شراکت داری چلتا ہے کھلاڑیوں مخالف مقام سال
پہلی وکٹ 310 فخر زمان اور امام الحق  زمبابوے کوئنز اسپورٹس کلب 2018
دوسری وکٹ 263 عامر سہیل اور انضمام الحق  نیوزی لینڈ شارجہ 1994
تیسری وکٹ 230 سعید انور اور اعجاز احمد  بھارت ڈھکا 1998
چوتھا وکٹ 206 شعیب ملک اور محمد یوسف  بھارت سپراسپورٹ پارک 2009
پانچویں وکٹ 176 یونس خان اور عمر اکمل  سری لنکا کولمبو 2009
چھٹی وکٹ 147 فواد عالم اور صہیب مقصود  سری لنکا ہیمبوٹاٹا 2014
ساتویں وکٹ 124 محمد یوسف اور راشد لطیف  آسٹریلیا کارڈف 2001
آٹھویں وکٹ 100 فواد عالم اور سہیل تنویر  ہانگ کانگ پورٹ آف پورٹ 2008
نویں وکٹ 90 سرفراز احمد اور حسن علی  جنوبی افریقا دربان 2019
دسویں وکٹ 103 محمد عامر اور سعید اجمل  نیوزی لینڈ ابوظہبی 2009
ماخذ: کرییکنفو . آخری اپ ڈیٹ: 14 مئی 2019.

مزید دیکھیے[ترمیم]

  • ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ ریکارڈ کی فہرست
  • 10،000 سے زائد ایک دن انٹرنیشنل کرکٹ کو رنز کرنے والے بٹمنمنز کی فہرست چل رہی ہے
  • ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ کی ٹوپی چالوں کی فہرست
  • ٹیسٹ کرکٹ ریکارڈ کی فہرست
  • فہرست کی فہرست ایک کرکٹ ریکارڈ
  • کرکٹ ورلڈ کپ ریکارڈ کی فہرست

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "ریکارڈ/ ایک روزہ matches / Team records / Results summary". کرک انفو. اخذ شدہ بتاریخ 7 جولائی 2022. 
  2. "ریکارڈز / پاکستان / ایک روزہ میچ / خلاصہ نتائج". کرک انفو. اخذ شدہ بتاریخ 1 جولائی 2020. 
  3. "Records / Pakistan / ODI matches / Series summary". ESPNcricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 01 جولا‎ئی 2020. 
  4. ^ ا ب پ "Records – ODIs – Team Records – Whitewashes". اخذ شدہ بتاریخ 02 جولا‎ئی 2020. 
  5. "پاکستان کے ایک روزہ کرکٹ کے ریکاڈ– اننگز کا کم سے کم مجموعہ". کرک انفو. اخذ شدہ بتاریخ 1 جولائی 2020. 
  6. "Pakistan ODI Records – Highest match aggregates". کرک انفو. اخذ شدہ بتاریخ 1 جولائی 2020. 
  7. "Pakistan ODI Records – Lowest match aggregates". ESPNcricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 1 جولائی 2020. 
  8. "پاکستان کے ایک روزہ ریکارڈ– پاکستان کے خلاف ایک روزہ اننگز میں زیادہ سے زیادہ سکور". کرک انفو. اخذ شدہ بتاریخ 1 جولائی 2020. 
  9. "Pakistan ODI Records – Lowest Full innings totals". ESPNcricinfo. اخذ شدہ بتاریخ 1 جولائی 2020.