ایک ناتھ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ایک ناتھ
Eknath 2003 stamp of India.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 1533  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
مہاراشٹر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
تاریخ وفات سنہ 1599 (65–66 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ شاعر،  فلسفی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان مراٹھی زبان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر

ایک ناتھ (1533-1599)[1] مراٹھی کے ایک مشہور سنت، عالم اور مذہبی شاعر تھے۔ مراٹھی ادب کی ترویج میں ایک ناتھ دنیانشیور، نام دیو اور تکارام اور رام داس کے درمیان پُل کا کام کرتے ہیں۔ انیہں ان کے ابھنگ کی وجہ سے شہرت حاصل ہے جو آج بھی بھارت کے مراٹھی بولنے والے افراد گاتے ہیں۔

سوانح حیات[ترمیم]

ایک ناتھ کی زندگی کے بارے یقین سے تو کچھ نہیں کہا جا سکتا مگر روایتی طور پر مانا جاتا ہے کہ ایک ناتھ 16ویں صدی کے آخری تین چوتھائی میں زندہ تھے۔ روایات کے مطابق ان کا تعلق پئے ٹھن ک ایک براہمن خاندان سے تھا جو ایک ویرا دیوی کی پوجا کرتے تھے۔[1] ان کے بچپن میں ہی والدین کا انتقال ہو گیا تھا اور ان کی پرورش ان کے دادا بھنو داس نے کی جن کا تعلق وارکری فرقے سے تھا۔[2] کچھ ذرائع کے مطابق بھنو داس دادا نہیں بلکہ پردادا تھے۔[3] یہ بھی کہا جاتا ہے کہ ایک ناتھ کے گرو جناردن نامی ایک صوفی تھے۔[4] جناردن دتاتریا کے عقیدت مند تھے۔

ایک بار ایک مہر نے ایک ناتھ کو اپنے گھر کھانے کی دعوت دی جو انہوں نے قبول کر لی اور بھگوت پران کا ایک قطعہ پڑھا جس کا مفہوم کچھ اس طرح سے تھا کہ کتے کھانے والے اچھوت نے بھی اگر اپنے ذہن میں بھگوان کے لیے کوئی منت مانگی ہے تو اس کے الفاظ، اس کے اعمال، اس کے اثاثے اور اس کی زندگی بھی بھگوان سے منہ موڑنے والے برہمن سے بہتر ہو جاتی ہے حالانکہ اس میں برہمنوں کے پورے بارہ گن ہی کیوں نہ موجود ہوں۔ اچھوت نے اپنے اعمال سے اپنے پورے خاندان کو پوتر کیا جبکہ برہمن کو اس کا غرور لے ڈوبا۔ تاہم جب برہمنوں نے یہ سنا تو غصے سے آگ بگولہ ہو گئے۔ ایک ناتھ نے سزا کے لیے خود کو پیش کر دیا۔ تاہم انہوں نے پھر کھانے کی دعوت قبول کی۔ تاہم اس بار انہیں گاؤں بدر ہونے سے بچانے کے لیے بھگوان وٹھل نے ان کا روپ دھار کر مہر کے گھر کھانا کھایا۔[5]

حوالہ جات[ترمیم]

حواشی

  1. ^ ا ب Ganesh Vasudeo Tagare۔ Eknath۔ Sahitya Akademi۔ صفحہ 4۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ EKNATH : A BIOGRAPHICAL SKETCH* (A. D. 1533-1599) A reference to the Marathi Vangmaya Kosh (A biographical dictionary of Marathi writers) shows that there were three authors called "Eknath" and seven authors who used the mudrika (Pen- name) "Eka-Janardan" used by our author Eknath. Eknath was a Rigvedi Deshastha Brahmin, a follower of the Ashvalayana Sutra. His Gotra was Vishvamitra. His family deity was Ekaveera (or Renuka). His family lived at Paithan, ...
  2. Novetzke (2013), pp. 141-142
  3. Schomer & McLeo (1987), p. 94
  4. Novetzke (2013), p. 142
  5. J. Lele (ویکی نویس.)۔ Tradition and Modernity in Bhakti Movements (International Studies in Sociology and Social Anthropology)۔

کتابیات

بیرونی روابط[ترمیم]