اے فلائنگ جٹ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اے فلائنگ جٹ
فائل:A Flying Jatt Poster.jpg
فلم کا پوسٹر
ہدایت کار ریمو ڈی سوزا
پروڈیوسر ایکتا کپور
شوبھا کپور
تحریر میور پوری
(مکالمے)
منظر نویس تشار ہیر نندنی
کہانی ریمو ڈی سوزا
ستارے
موسیقی سچن جگر
سنیماگرافی وجے اروڑہ
ایڈیٹر نتن ایف سی پی
پروڈکشن
کمپنی
تقسیم کار اے ایل ٹی انٹرٹینمنٹ
تاریخ اشاعت
  • 25 اگست 2016 (2016-08-25)[1]
ملک بھارت
زبان ہندی
بجٹ 35 crore [2]
باکس آفس <! - DO NOT use 1 (1.6¢ امریکی) template. It's use is NOT appropriate here .--> 40.90 crore [3]

'اے فلائنگ جٹ' ایک بالی ووڈ ہندی سپر ہیروز فلم ہے جس کی ہدایت ریمو ڈی سوزا نے کی ہے۔ فلم میں ٹائیگر شروف، جیکولین فرنینڈز اور پروفیشنل ریسلر ناتھن جونزنے مرکزی کردار ادا کیا ہے ۔[4][5] فلم میں ٹائیگر شروف نے ایک سپر ہیرو کا کردار نبھایا ہے جبکہ جیکولین فرنینڈز نے ٹائیگر شروف کی گرل فرینڈ کا کردار نبھایا ہے۔ فلم 25 اگست 2016 کو ریلیز ہوئی۔[6][7]

فنکار[ترمیم]

کہانی[ترمیم]

فلم کی کہانی کا اصل مقصد دنیا میں بڑھتی ہوئی آلودگی کی طرف توجہ دلانا ہے۔ فلم کے مرکزی کرداروں میں ٹائگر شروف (امن)، نتھن جونز (راکھا)، جیکلن فرنانڈس (کرتی)، کے کے مینن (مسٹر ملہوترا)، امرتا سنگھ (مسز ڈھلن)اور گورو پانڈے (روہت) موجود ہیں۔ امن، جو ایک مارشل آرٹ ٹیچر ہے اسے اپنے ہی اسکول کی ایک ٹیچر کِرتی سے محبت ہوتی ہے۔ جہاں امن رہتا ہے وہاں ایک درخت ہوتا ہے جس پر سکھوں کے مذہب کامقدس نشان بنا ہوتا ہے ،سب اس درخت کو بہت مقدس مانتے ہیں۔ امن کی ماں ایک کیمیکل فیکٹری کے مالک مسٹر ملہوتراکو یہ زمین بیچنے سے انکار کر دیتی ہے۔ جس پرملہوترااس درخت کو کاٹنے کے لیے " راکھا" کو بھیجتا ہے جو فلم میں ویلن کا کردار ہے۔ جس رات راکھا درخت کاٹنے آتا اس رات اس درخت سے امن کو پاورز ملتی ہیں اور وہ سپر ہیرو یعنی فلائنگ جٹ بن جاتاہے۔ راکھا ایک بار پھر واپس آتا ہے اور اس پر شہر کی گندگی اور آلودگی کا ایسا اثر ہوتا ہے کہ وہ پہلے سے زیادہ طاقت ور ہوجاتا ہے۔ ایک لڑائی میں پہلے فلائنگ جٹ اس سے بری طرح شکست کھاتا ہے پھر وہ اپنے والد جو ایک سکھ اور لڑاکا ہوتے ہیں ان کی پگڑی پہنتا ہے اور پھر اس میں مزید طاقت آجاتی ہے۔ راکھا ہمیشہ سے کہتا ہے کہ "اس دنیا میں کوئی جگہ ایسی نہیں جہاں تم مجھے ہرا سکو" کیونکہ دنیا میں ہر جگہ آلودگی ہوتی ہے جس سے راکھا کو طاقت ملتی ہے تو فلائنگ جٹ اسے لڑائی کے دوران خلاء میں لے جاتا ہے اور وہاں راکھا کو شکست دیتا ہے۔[11]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب "Shraddha Kapoor shoots for a cameo in A Flying Jatt"۔ Bollywood Hungama۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جون 2016۔
  2. Prarthna Sarkar۔ "'A Flying Jatt' day 1 box office collection: Tiger Shroff-starrer to beat 'Mohenjo Daro' and 'Baaghi' opening day records"۔ International Business Times, India Edition۔ اخذ شدہ بتاریخ 2016-08-29۔
  3. "Special Features: Box Office: Worldwide Collections and Day wise breakup of A Flying Jatt"۔ Bollywood Hungama۔ اخذ شدہ بتاریخ 2016-08-29۔
  4. "Tiger Shroff is no longer the Flying Sikh – he is the Flying Jatt"۔ Bollywood Hungama۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جون 2016۔
  5. "Tiger Shroff to play flying jatt, not flying sikh"۔ The Asian Age۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جون 2016۔
  6. "A Flying Jatt : First Look Posters Revealed"۔ Bollywood Reporter۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جون 2016۔
  7. "A Flying Jatt: Tiger Shroff is a superhero, Nathan Jones is the ultimate villain"۔ دی ٹائمز آف انڈیا۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جون 2016۔
  8. "Nathan Jones refuses VFX aid for stunts in 'A Flying Jatt'"۔ میڈ ڈے۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جون 2016۔
  9. Sonup Sahadevan۔ "Kay Kay Menon to play creator of Frankenstein monster in 'Flying Jat'"۔ The Indian Express۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جون 2016۔
  10. "Amrita Singh to play Tiger Shroff's mother in A Flying Jatt"۔ Bollywood Hungama۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 جون 2016۔
  11. اے فلائنگ جٹ