بابی الائے سیئیس

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
بابی الائے سیئیس
The President, Shri Ram Nath Kovind presenting the Dhyan Chand Award, 2018 to Ms. Bobby Aloysius for Athletics, in a glittering ceremony, at Rashtrapati Bhavan, in New Delhi on September 25, 2018.JPG 

شخصی معلومات
پیدائش 22 جون 1974 (45 سال) اور 30 مئی 1974 (45 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
کیرلا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of India.svg بھارت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
مادر علمی یونیورسٹی آف کالیکٹ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ ایتھلیٹکس مقابلہ باز  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
کھیل ایتھلیٹکس  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں کھیل (P641) ویکی ڈیٹا پر
کھیل کا ملک Flag of India.svg بھارت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں ملک برائے کھیل (P1532) ویکی ڈیٹا پر

بابی الائے سیئیس (پیدائش 22 جون 1974ء) بھارت کی ایک خاتون کھلاڑی ہیں جو اب ترواننتپرم، کیرل میں رہتی ہیں۔ ان بھارتی اور جنوب ایشیائی کھیلوں میں 1995ء اور 2012ء کے درمیان لمبی کود کا ریکارڈ قائم کیا ہے۔[1] ان کا 1.9 1 میٹر کود کا ریکارڈ 2012ء میں کرناٹک کی سہانہ كماری کی جانب سے توڑا گیا۔ بابی نے ایتھنز اولمپکس [2] میں شرکت کی، بوسان ایشیائی کھیلوں میں چاندی کا تمغا اور جکارتہ ایشیائی چیمپئن شپ میں سونے کا تمغا جیتا۔[3]

بابی کی پیدائش چیمپیری، کنور، کیرلا، بھارت میں ہوئی تھی۔[4] بابی نے دنیا بھر کا کئی بار دورہ کیا اور آخر میں شريوسبیری، برطانیہ میں 2009ء تک رہی۔ اب وہ کیرلا ریاست کھیل کونسل تھرواننتپورم میں معاون معتمد (تکنیکی) کے طور پر کام کر رہی ہیں۔ ان کی شادی ایک صحافی، سہاجن سَكارِيا کے ساتھ ہوئی ہے۔[5] ان کے تین بچے ہیں، اسٹیفن ہولم سكاريا، گنگوتری سكاريا اور ریتویک سكاريا ہیں۔ وہ کالیکٹ یونیورسٹی کی سابق طالبہ ہے۔[6]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "It's Bobby Aloysius' day"۔ Chennai, India: The Hindu۔ جون 4, 2002۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جنوری 2010۔
  2. "The Olympics: 2004: Athletics: Newi student falls short in heats."۔ Daily Post (Liverpool, England)۔ اگست 27, 2004۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جنوری 2010۔
  3. K. P. Mohan (اگست 30, 2000)۔ "Bobby Aloysius scales to a surprise gold"۔ Chennai, India: The Hindu۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جنوری 2010۔
  4. "Bobby's Flop show is a big hit"۔ The Indian Express۔ جولا‎ئی 22, 1998۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جنوری 2010۔
  5. "Memorable day for Bobby Aloysius"۔ The Hindu۔ جولا‎ئی 19, 2004۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جنوری 2010۔
  6. "Department of Physical Education"۔ University of Calicut۔ مورخہ جنوری 29, 2009 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 جنوری 2010۔