باب:ہاکی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
باب ہاکی

ہاکی کیا ہے؟

ہاکی (Hockey) دنیا کی قدیم اور مشہور کھیلوں میں شمار ہوتی ہے۔

ملبورن یونیورسٹی میں ہاکی کھیلی جا رہی ہے

ہاکی کا میدان 100 گز لمبا اور 60 گز چوڑا ہوتا ہے۔ گول پوسٹ 4 فٹ چوڑی ہوتی ہے۔ سفید رنگ کی گیند کا وزن 4٫5 اونس اور ہاکی کا وزن 12 سے 28 اونس تک ہوتا ہے۔ ہر ٹیم گیارہ کھلاڑیوں پر مشتمل ہوتی ہے۔ کھیل کا دورانیہ 70 منٹ اور کھیل برابر رہ جانے پر 20 منٹ اضافی دیئے جاتے ہیں اور صورت حال تبدیل نہ ہوتے پر پلنٹی سٹروک بھی ملتے ہیں۔ ہاکی پاکستان اور بھارت کا قومی کھیل ہے۔ جبکہ ہاکی کا پہلا عالمی چیمپئن اور زیادہ سے زیادہ مرتبہ عالمی فاتح بننے کا اعزاز پاکستان کے پاس ہے۔ اس کے علاوہ یہ کھیل یورپ اورآسٹریلیا میں بھی مشہور ہے۔

ہاکی کی اقسام مندرجہ ذیل ہیں۔

 مزید دیکھیے ہاکیاور یہ قوانین، تاریخ، شماریات
View new selections below (purge)

منتخب مضمون

فیلڈ ہاکی (Field hockey) یا صرف ہاکی (برصغیر اور دیگر ایشیائی ممالک میں ہاکی سے مراد فیلڈ ہاکی ہے جبکہ امریکہ، کینیڈا اور دیگر ممالک میں ہاکی سے مراد آئس ہاکی ہے) ہاکی کے خاندان کا ایک ٹیم کھیل ہے۔ کھیل ایک گھاس کے میدان یا ایک ٹرف کے میدان پر کھیلا جا سکتا ہے۔ فیلڈ ہاکی کھیل گولی سمیت گیارہ کھلاڑیوں کی دو ٹیموں کے درمیان کھیلا جاتا ہے۔ لکڑی یا فائبر گلاس سے بنی مختصر لاٹھی سے جسے ہاکی کہا جاتا ہے سے ربڑ کی گیند کے مشابہ سخت گول گیند کو مارا جاتا ہے۔ کھیل کا مقصد گیند کو مخالف ٹیم کے گول میں پہچانا ہوتا ہے۔

برفانی ہاکی

Ice Hockey sharks ducks.jpg

آئس ہاکی یا برفانی ہاکی (Ice hockey) ایک ٹیم کھیل ہے جو کہ برف پر کھیلا جاتا ہے۔ اس میں سکیٹیرز کی دو ٹیموں ہوتی ہیں جو کہ لاٹھی(ہاکی) کا استعمال کرتے ہوئے ایک سخت ربڑ ہاکی پک کو مخالف ٹیم نیٹ کے میں پہنچانے کی کوشش کرتی ہیں۔


منتخب تصویر

HOCKEY ARGENTINA PAKISTAN.jpg

خبروں میں

فیڈریشن آف انٹرنیشنل ایسوسی ایشن انٹرنیشنل ہاکی فیڈریشن (International Hockey Federation) فیلڈ ہاکی اور انڈور ہاکی کی انتظامیہ کا نام ہے۔ انٹرنیشنل ہاکی فیڈریشن کا صدر دفتر لوزان (Lausanne) سویٹزرلینڈ میں واقع ہے۔ انٹرنیشنل ہاکی فیڈریشن ہاکی کے ٹورنامنٹ یا مقابلوں کو ترتیب دیتی ہے جن میں سب سے قابلِ زکر ہاکی کا عالمی کپ ہے۔ انٹرنیشنل ہاکی فیڈریشن کی بنیاد 7 جنوری 1924 کہ فرانس کے شہر پیرس میں پاؤل لیوٹے نے رکھی تھی۔ پہلی ممبر کمیٹی میں کل سات ممالک ہسپانیہ، فرانس، آسٹریا، ھنگری، بیلجیم، چیکوسلوواکیہ اور سویٹزرلینڈ کو شامل کیا گیا تھا۔ 1982 میں خواتین کی ہاکی فیڈریشن کو بھی انٹرنیشنل ہاکی فیڈریشن میں زم کر دیا گیا۔

آج کے دن...

باب:ہاکی/Anniversaries/Nav

کیا آپ جانتے ہیں...

گلی کوچا ہاکی

سٹریٹ ہاکی

گلی کوچا ہاکی یا سٹریٹ ہاکی کا کھیل برفانی ہاکی (ice hockey) کی طرز پر کھیلا جاتا ہے، مگر برفانی سطح کی بجائے سڑک (یا اس طرح کی سطح) پر کھیلا جاتا ہے۔ کھلاڑی عام جوتے پہنتے ہیں، یا roller skate۔ یہ کھیل زیادہ تر ایسے ممالک میں کھیلا جاتا ہے جہاں برفانی ہاکی مقبول ہے، مثلاً کینڈا، جرمنی۔

2007ء عالمی کپ

جرمنی میں منعقد ہونے والے گلی کوچا ہاکی کے فائنل میں پاکستان نے امریکہ کو 5-2 سے ہرا کر کپ جیت لیا۔ اس ٹورنامنٹ میں گروپ اے اور گروپ بی کے علیحدہ علیحدہ فائنل ہوئے۔ گروپ بی، جس میں پاکستان شامل تھا، میں ایسے ممالک کھیلے جن کے ہاکی کھلاڑیوں کی تعداد 5000 سے کم ہو۔ دوسرے گروپ اے میں کینیڈا نے کامیابی حاصل کر کے سونے کا تمغا جیتا۔

کھمݰیر غاڑ(ہاکی کی قدیم ترین قسم)

کھمݰیر غاڑ پاکستان کے ضلع چترال کا ایک قدیم کھیل ہے جو کہ موجودہ ہاکی کی قدیم ترین شکل ہے۔ اس کھیل میں جو گیند استعمال ہوتی ہے اسے پڑنجو اور پڑنچ کہا جاتا ہے۔ اس کھیل میں استعمال ہونے والی اسٹک کو کھمشیر کہا جاتا ہے اور اسی مناسبت سے یہ کھیل کھمݰیر غاڑ کے نام سے مشہور ہے۔ یہ کھیل چترال کی تحصیل تورکھو اور موڑکھو میں اپنی اصلی شکل میں موجو ہے-

ازلان شاہ ہاکی کپ

اذلان شاہ کپ ہاکی کا بین الاقوامی مقابلہ ہے جو ملائیشیا میں منعقد ہوتا ہے۔ اس کا آغاز 1983ء میں بطور دو سالہ مقابل ہوا۔ 1998ء سے یہ سالانہ کھیلا جاتا ہے۔ اس کا نام ملائیشیا کے نویں بادشاہ سلطان اذلان شاہ پر رکھا گیا ہے، جو ہاکی کے شوقین ہیں۔ پاکستان نے یہ مقابل 1999ء، 2000ء، اور 2003ء، میں جیتا۔

نتائج

سال جیت دوسرا تیسرا چوتھا
1983
آسٹریلیا

پاکستان

بھارت

ملائیشیا
1985
بھارت

ملائیشیا

پاکستان

ہسپانیہ
1987
مغربی جرمنی

پاکستان

برطانیہ

ملائیشیا
1991
بھارت

پاکستان

CIS

نیوزی لینڈ
1994
انگلستان

پاکستان

آسٹریلیا

ملائیشیا
1995
بھارت

جرمنی

نیوزی لینڈ

ہسپانیہ
1998
آسٹریلیا

جرمنی

جنوبی کوریا

نیوزی لینڈ
1999
پاکستان

جنوبی کوریا

جرمنی

کینیڈا
2000
پاکستان

جنوبی کوریا

بھارت

ملائیشیا
2001
جرمنی

جنوبی کوریا

آسٹریلیا

پاکستان
2003
پاکستان

جرمنی

نیوزی لینڈ

جنوبی کوریا
2004
آسٹریلیا

پاکستان

جنوبی کوریا

جرمنی
2005
آسٹریلیا

جنوبی کوریا

پاکستان

نیوزی لینڈ
2006
نیدرلینڈز

آسٹریلیا

بھارت

نیوزی لینڈ
2007
آسٹریلیا

ملائیشیا

بھارت

جنوبی کوریا
2008
ارجنٹائن

بھارت

نیوزی لینڈ

پاکستان
2009
بھارت

ملائیشیا

نیوزی لینڈ

پاکستان
2010
تفصیلات
 بھارت
 جنوبی کوریا

آسٹریلیا

ملائیشیا
2011
تفصیلات

آسٹریلیا

پاکستان

برطانیہ

نیوزی لینڈ
2012
تفصیلات

نیوزی لینڈ

ارجنٹائن

بھارت

برطانیہ
2013
تفصیلات

آسٹریلیا

ملائیشیا

جنوبی کوریا

نیوزی لینڈ
2014
تفصیلات

آسٹریلیا

ملائیشیا

جنوبی کوریا

چین
2015
تفصیلات

کارکردگی بلحاظ قوم

ٹیم فاتح دوسرا مقام تیسرا مقام
 آسٹریلیا 8 (1983, 1996, 2004, 2005, 2007, 2011, 2013, 2014) 2 (1999, 2006) 3 (1994, 2001, 2010)
 بھارت 5 (1985, 1991, 1995, 2009, 2010*) 1 (2008) 5 (1983, 2000, 2006, 2007, 2012)
 پاکستان 3 (1998, 2000, 2003) 6 (1983, 1987, 1991, 1994, 2004, 2011) 2 (1985, 2005)
 جرمنی 2 (1987, 2001) 3 (1995, 1996, 2003) 1 (1999)
 جنوبی کوریا 2 (1999, 2010*) 4 (1998, 2000, 2001, 2005) 4 (1996, 2004, 2013, 2014)
 ارجنٹائن 1 (2008) 1 (2012)
 انگلستان 1 (1994) 2 (1987, 2011)
 نیدرلینڈز 1 (2006)
 نیوزی لینڈ 1 (2012) 4 (1995, 2003, 2008, 2009)
 ملائیشیا 5 (1985, 2007, 2009, 2013, 2014) 1 (1999)
* مشترکہ فاتحین

منتخب مواد

نو اے طرف ہاکی نئے طرز کا کھیل 2011 میں متعارف کرایا گیا جس میں ہر ٹیم میں 11 کی بجائے 9 کھلاڑی ہوتے ہیں۔ اس نئی شکلبندی کا مقصد ہاکی کے کھیل میں تیزی لانا ہے۔ اس طرز کا پہلا مردوں کا مبارزہ 20-23 اکتوبر 2011ء میں پاکستان، نیوزی لینڈ، بھارت اور آسٹریلیا کی ٹیموں کے درمیان کھیلا گیا جس میں آسٹریلیا فاتح رہا،اس کے ساتھ ہی خواتین کا ہاکی مبارزہ بھارت، آسٹریلیا اور ملائشیا کے درمیان ہوا۔

ابواب کیا ہیں؟ | فہرست ابواب | منتخب ابواب