بارلام اور یہوسفط

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

بارلام اور یہوسفط (لاطینی: Barlamus et Iosaphatus) دو افسانوی مسیحی شہدا اور مقدسین ہیں، یہ قصہ بنیادی طور پر گوتم بدھ کی زندگی پر مبنی ہے۔[1] یہ قصہ بتاتا ہے کہ ہندوستانی بادشاہ نے کس طرح اپنی سلطنت میں کلیسیا کو ایذا پہنچائی۔ جب جوتشیوں نے پیش گوئی کری کہ اُس کا خود کا بیٹا کچھ دنوں میں مسیحی بن جائے گا تو اُس نے نوجوان شہزادے یہوسفط کو قید کرلیا، جو نا اب تک زاہد برلام سے ملا تھا اور نہ ہی مسیحیت قبول کی تھی۔ کئی ابتلا و آزمائشوں کے بعد نوجوان شہزادے کے والد نے سچا ایمان تسلیم کرلیا اور اپنی تخت شاہی یہوسفط کے حوالے کرکے صحرا کی جانب زاہد بننے کے لیے چل دیا۔ بعد میں یہوسفط خود بھی تخت شاہی تیاگ کر تنہائی میں اپنے پرانے استاد کے ساتھ چلا گیا۔[2]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. John Walbridge The Wisdom of the Mystic East: Suhrawardī and Platonic Orientalism Page 129 – 2001 "The form Būdhīsaf is the original, as shown by Sogdian form Pwtysfi and the early New Persian form Bwdysf. … On the Christian versions see A. S. Geden, Encyclopaedia of Religion and Ethics, s.v. "Josaphat, Barlaam and," and M. P. Alfaric, ۔.۔"
  2. The Golden Legend: The Story of Barlaam and Josaphat Archived 16 دسمبر 2006 at the وے بیک مشین

بیرونی روابط[ترمیم]