برطانوی راج

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
برطانوی راج
نوآبادی برطانیہ

 

1858–1947
پرچم ہندوستان کا ستارہ
ترانہ
God Save the King/Queen
The British Indian Empire in 1936
دارالحکومت کلکتہ (1858–1912)
نئی دہلی (1912–1947)
شملہ (موسم گرما)
زبانیں ہندی-اردو, انگریزی, اور ہندوستان کی زبانیں
حکومت آئینی بادشاہت
ہندوستان کا شہنشاہ (1876–1947)
 - 1858–1901 ملکہ وکٹوریہ 1
 - 1901–1910 ایڈورڈ ہفتم
 - 1910–1936 جارج پنجم
 - 1936 ایڈورڈ ہشتم
 - 1936–1947 جارج ششم
Viceroy 2
 - 1858–1862 چارلس کیننگ (اول)
 - 1947 لوئس ماؤنٹبیٹن (آخر)
مقننہ شاہی مقننہ مجلس
تاریخ
 - جنگ آزادی ہند 1857ء 10 مئی 1857
 - حکومت ہندوستان ایکٹ 1858 2 اگست 1858
 - آزادی ہندوستان ایکٹ 1947 15 اگست 1947
 - تقسیم ہند 15 اگست 1947
سکہ برطانوی ہندوستانی روپیہ
جانشین
پیشرو
کمپنی راج
مغلیہ سلطنت
ڈومنین بھارت
ڈومنین پاکستان
برطانوی برما
مملکت آصفیہ
ریاست جموں و کشمیر
خانیت قلات
مستعمر عدن
موجودہ ممالک Flag of India.svg بھارت
Flag of Pakistan.svg پاکستان
Flag of Bangladesh.svg بنگلہ دیش
Flag of Myanmar.svg برما
1: Reigned as Empress of India from 1 May 1876, before that as Queen of the متحدہ مملکت برطانیہ عظمی و آئر لینڈ.
2: Viceroy and گورنر جنرل بھارت
Warning: Value specified for "continent" does not comply

نو آبادیاتی دور کے برطانوی علاقوں کے لیے دیکھیے سلطنت برطانیہ

برطانوی راج بمطابق 1909ء

برطانوی راج یا برطانوی ہند (باضابطہ نام: سلطنت ہندوستان) (انگریزی: British Raj یا British India، باضابطہ نام Indian Empire) کی اصلاح 1858ء سے 1947ء تک برطانیہ کے زیر نگیں بر صغیر کے لیے استعمال کی جاتی ہے۔

سلطنت ہندوستان علاقائی و بین الاقوامی سطح پر "ہندوستان" کے نام سے جانی جاتی تھی۔ "ہندوستان" جمعیت اقوام کا تاسیسی رکن اور 1900ء، 1920ء، 1928ء، 1932ء اور 1936ء کے گرمائی اولمپک کھیلوں میں شامل ہوا۔

شامل علاقے[ترمیم]

اس عرصے میں برطانیہ کے زیر قبضہ رہنے والے علاقوں میں موجودہ بھارت، پاکستان اور بنگلہ دیش شامل ہیں جبکہ کبھی کبھار عدن (1858ء سے 1937ءزیریں برما (1858ء تا 1937ءبالائی برما (1886ء تا 1937ء) شامل ہیں (مکمل برما 1937ء میں برطانوی ہند سے الگ کر دیا گیا)، برطانوی ارض صومال (1884ء سے 1898ء) اور سنگاپور (1858ء سے 1867ء) کو بھی برطانوی راج کا حصہ شمار کیا جاتا ہے۔ مشرق وسطٰی، جنگ عظیم اول کے فوراً بعد برطانیہ کے زیر قبضہ بین النہرین (موجودہ عراق) کا انتظام بھی حکومت برطانیہ کے ہندی دفتر سے چلایا جاتا تھا۔ ہندوستانی روپیہ مشرق وسطٰی کے کئی علاقوں اور مشرقی افریقہ میں زیر استعمال رہا۔

غیر شامل علاقے[ترمیم]

خطے کے دیگر ممالک میں 1802ء میں معاہدۂ ایمینز کے تحت برطانیہ کے زیر نگیں آنے والا علاقہ سیلون (موجودہ سری لنکا) برطانیہ کی شاہی نو آبادی تھی اور برطانوی ہند کا حصہ شمار نہیں ہوتی تھی۔ علاوہ ازیں نیپال اور بھوٹان کی بادشاہتیں برطانیہ سے معاہدے کے تحت آزاد ریاستوں کی حیثيت سے تسلیم کی گئی تھیں اور برطانوی راج کا حصہ نہیں تھیں۔ [1][2]۔ 1861ء کے معاہدے کے نتیجے میں سکم کی ریاست خودمختاری تسلیم کی گئی [3]۔ جزائر مالدیپ 1867ء سے 1965ء تک برطانیہ کے زیر نگیں رہے اور برطانوی راج کا حصہ شمار نہیں ہوتے تھے۔

آغاز و خاتمہ[ترمیم]

ہندوستان میں برطانوی راج کا آغاز 1858ء میں (جنگ آزادی ہند 1857ء کے بعد) ایسٹ انڈیا کمپنی کے اقتدار کے خاتمے اور ہندوستان کے براہ راست تاج برطانیہ کے زیر نگیں آنے سے ہوتا ہے اور خاتمہ 1947ء میں تقسیم ہند اور بھارت و پاکستان کے قیام کے ساتھ ہوتا ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ British Empire - Relations with Bhutan
  2. ^ http://www.britishempire.co.uk/maproom/nepal.htm British Empire - Relations with Nepal
  3. ^ "Sikkim." Encyclopædia Britannica. 2007. Encyclopædia Britannica Online. 5 Aug. 2007 <http://www.britannica.com/eb/article-46212>.