بسنت پتنگ کا تہوار (پنجاب)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
بسنت پتنگ بازی سے بھرے آسمان کا منظر

بسنت پتنگ کا تہوار بھارت اور پاکستان دونوں جانب کی پنجاب ریاستوں میں مقبول ہے۔ یہ تہوار تاریخی طور پر راجا رنجیت سنگھ کے دور میں بہار کا خیرمقدم کرنے کے لیے منائی جاتی تھی۔ تہوار کی تقریبات پر مذہبی رنگ غالب تھا۔ مہاراجا کا میلے میں باقاعدہ گرنتھ صاحب سننا اور گرنتھی کو تحائف دینا مذہبی رسومات کے زمرے میں آتا ہے۔ ہندو برہمنوں کو نذرانے دیتے ہیں تو سکھ گرنتھیوں کو تحائف دیتے ہیں۔ سکھ مذہب میں بسنتی یا زرد رنگ کو بھی ایک خاص تقدس کا مرتبہ حاصل ہے۔[1]

پنجاب، پاکستان میں تہوار پر پابندی[ترمیم]

بسنت کے موقع پر دھاتی دھاگوں کے استعمال سے بعض ہلاکتوں کے باعث پنجاب، پاکستان کی صوبائی حکومت نے چند برس قبل بسنت کے تہوار اور اس موقع پر پتنگیں اڑانے پر پابندی عائد کر دی تھی۔ 2012ء میں اس کو لاہور لائی کورٹ نے برقرار رکھا تھا۔[2] تاہم صوبائی حکومت 2017ء سے اس تہوار کو بحال کرنے پر غور کر رہی ہے۔[3]

بھارتی پنجاب میں بسنت[ترمیم]

پنجاب، بھارت میں بسنت میلوں میں خواتین اور بچے پیلے رنگ کے کپڑوں میں ملبوس ہوکر بڑی تعداد میں شرکت کرتے ہیں۔ ھارت میں ان میلوں کو کو بسنت پنچمی کہتے ہیں۔ پنجاب کے شہر امرتسر اور اترپردیش کے شہر آگرہ کے میلے کافی مشہور ہیں۔ اس موقع پر سرسوتی دیوی کی پوجا کی جاتی ہے۔ اس موقع پر پتنگ بازی کا بھی اہتمام ہوتا ہے۔[4]

حوالہ جات[ترمیم]