بندھ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے

بندھ (دیوناگری: बंध) جنوب ایشیائی ممالک بالخصوص بھارت اور نیپال میں استعمال ہونے والے احتجاج کی ایک شکل ہے۔ یہ عام ہڑتال کے برابر ہے۔ بندھ کے دوران، کوئی سیاسی جماعت یا برادری عام ہڑتال کا اعلان کرتی ہے۔[1] مثال کے طور پر بھارت بندھ کی کال بھارت بھر کے لیے ہوتی ہے جبکہ بندھ کسی انفرادی ریاست یا قصبہ میں ہوتا ہے۔

کوئی برادری یا سیاسی جماعت بندھ کا اعلان کرتی ہے تو عوام سے امید کی جاتی ہے کہ گھروں میں رہے اور کام پہ نہ جائے، دکان دار اپنی دکانیں بند رکھیں اور عوام کی بسوں اور کیبوں کے ٹرانسپورٹ آپریٹر اپنا کام بھی روک دیں۔ ایسی بھی مثالیں موجود ہیں کہ بڑے شہر تک تھم جاتے ہیں۔[2]

بندھ کے دوران میں چوری ، زبردستی بندش ، آتش گیر حملوں ، سنگساری اور بندھ کے منتظمین اور پولیس کے مابین جھڑپیں عام ہیں۔

پابندی[ترمیم]

بھارتی عدالت عظمٰی نے 1998ء میں 'بندھ' کے نام پر کسی بھی طرح کی غنڈہ گردی کے خلاف فیصلہ سنایا تھا،[3] لیکن سیاسی جماعتیں انھیں اب تک انعقاد کرتی ہیں۔

2004ء میں ، بھارتی عدالت عظمٰی نے دو سیاسی جماعتوں ، بھارتیہ جنتا پارٹی (بھاجپا) اور شیو سینا کو ، ممبئی شہر میں بم دھماکوں کے خلاف احتجاج کے طور پر بندھ کرنے پر جرمانہ عائد کیا۔[3] حکومتِ مغربی بنگال نے بھی بھارتیہ کمیونسٹ پارٹی کی جانب سے کیے جانے والے بندھ پر پابندی عائد کردی تھی۔[4] عدالت عظمٰی بندھوں کے دوران میں صرف رضاکارانہ طور پر اداروں کو بند کرنے کی اجازت دیتی ہے۔[5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Will Bharat Bandh shut Mumbai down on Thursday?". NDTV. 28 مئی 2012. اخذ شدہ بتاریخ 30 مئی 2012. 
  2. "Bengaluru to shut on Bharat Bandh". Deccan Chronicle. اخذ شدہ بتاریخ 30 مئی 2012. 
  3. ^ ا ب Pay damages first, court tells parties آرکائیو شدہ (Date missing) بذریعہ hindu.com (Error: unknown archive URL); The Hindu، Saturday, 17 ستمبر 2005
  4. Note ban: Mamata refuses to support opposition bandh on 28 نومبر۔ Catch News. Retrieved on 19 جون 2017.
  5. https://www.business-standard.com/article/specials/sc-upholds-kerala-hc-order-banning-bandhs-197111301009_1.html