بپتسمہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
سینٹ ویلنٹائن سینٹ لوسیلا کو بپتسمہ دیتے ہوِئے

بپتسمہ یونانی زبان کا لفظ ہے جس کے معنی اصطباغ یا غسل (Baptism) کے ہیں اور مسیحیوں کی ایک مذہبی رسم ہے جسےازخود یسوع مسیح نے قائم کیا[1]۔ اِس رسم کے ذریعے نومولود یا غیر مسیحی آدمی کو مسیحیت میں داخل کیا جاتا ہے[2]۔ یہ رسم عموماً گرجوں میں ادا کی جاتی ہے۔ بعض گرجوں میں مسیحیوں کو اُس وقت بپتسمہ دیا جاتا ہے جب وہ جوان ہوجائیں۔

بپتسمہ کے طریقے[ترمیم]

بپتسمہ دینے کے تین طریقے ہیں جس میں نومولود یا غیر مسیحی شخص پرمقدس پانی چھڑک کریا اُنڈیل کر یا پانی کے حوض میں ڈُبکی لگوانے کے عمل سے مسیحیت میں باقاعدہ داخل کیا جاتاہے[3]۔ بپتسمہ دریا، سمندر یا چشمہ جیسی کسی بہتے ہوئے پانی کے ذریعے بھی کیا جاتا ہے[4]۔ دریائے یردن پر یسوع مسیح نے یوحنا اصطباغی سے بپتسمہ لیا [5]۔اورصعودِ آسمانی کے وقت اپنے حواریِن کو بھی بذریعہ باپ، بیٹے اورروح القدس کے نام میں بپتسمہ دینے اورانجیل کی منادی کا حکم صادِرفرمایا[1]۔عیدِ پنتکست پر یسوع مسیح کے شاگرد پطرس کے وعظ سے تین ہزارلوگ قائل ہوئے اور اُنہوں نے حوارینِ مسیح سے بپتسمہ لیا [6]۔یہاں سے مسیحی کلیسیاء کی ابتدا ہوئی[7]۔

کلیسیائی دستورات[ترمیم]

مسیحیت کے رومن کیتھولک اور پروٹسٹنٹ فرقے کے ذیلی گروہ، انگلیکانی ، اُسقفی ، لوتھرن ، پریسبیٹرین ، میتھوڈسٹ اور اس طرز کے بچوں اور بالغوں پر پانی کے چھڑکنے اور اُنڈیلنے جبکہ اِنجیلی ، بپتسماوی/اصطباغی ، خمسینی (پینتی کاسٹل) اورنعمتی صِرف بالغوں کو پانی کے حوض یا چلتے ہوئے پانی یعنی نہریا دریا پربپتسمہ دیتے ہیں۔

بپتسمہء بمطابق اہل اسلام[ترمیم]

مسلمانوں کے مطابق اصطباغ (the way something is colored) کا مطلب وہ مسلمان جو ہسپانیہ میں رہتے تھے اور جنھیں زبردستی مسیحی بنایا گیا ہو اور بنانے کی کوشش کی گئی ہو۔[8]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ 1.0 1.1 اِنجیل مقدس بمطابق متی 28: 16-20
  2. اِنجیل مقدس بمطابق مرقس 16:16
  3. 3 Types of Baptism in Christianity | Synonym
  4. رسولوں کے اعمال 8: 36
  5. اِنجیل مقدس بمطابق متی 3: 13-17
  6. رسولوں کے اعمال 2: 41
  7. رسولوں کے اعمال 2: 40-47
  8. دنیا بھر میں مسلمانوں کا قتل عام، محمد انور بن اختر، ص- 29 تا 31