بھارت قومی خواتین کرکٹ ٹیم کے ریکارڈ بلحاظ حریف

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
Eight female cricketers stand on a field. Two players are in red practice jerseys; three other players in red jerseys are facing toward them; a player in a blue shirt is facing away and hides another player in a blue game shirt. In the upper left corner is a fan with an Indian flag

بھارت خواتین کی قومی کرکٹ ٹیم بین الاقوامی خواتین کی کرکٹ میں بھارت کی نمائندگی کرتی ہے۔ بھارتی ٹیم بین الاقوامی کرکٹ کونسل کی ایک مکمل رکن ہے، [1] ٹیم بھارتی کرکٹ کنٹرول بورڈ کے زیر انتظام ہے۔ [2] بھارت کی خواتین کی قومی کرکٹ ٹیم نے پہلی بار 1976ء میں اس وقت مقابلہ کیا جب اس نے ویسٹ انڈیز کے خلاف چھ میچوں کی ٹیسٹ سیریز بھارت میں کھیلی۔ انہوں نے اپنی پہلی فتح معین الحق اسٹیڈیم، پٹنہ میں منعقدہ چوتھے میچ میں حاصل کی۔ تاہم چھٹے میچ میں شکست کے باعث یہ سیریز برابر ہو گئی۔ [3] بھارت نے 2002ء میں جنوبی افریقا کے خلاف واحد سیریز میں اپنی پہلی بیرون ملک فتح حاصل کی۔ [4] بمطابق اکتوبر 2017ء انہوں نے پانچ مختلف حریفوں آسٹریلیا، انگلینڈ، جنوبی افریقا، نیوزی لینڈ اور ویسٹ انڈیز کے خلاف 36 ٹیسٹ میچ کھیلے ہیں۔ فتوحات کے لحاظ سے، وہ انگلینڈ اور جنوبی افریقا کے خلاف سب سے زیادہ کامیاب رہی ہے اور ان میں سے ہر ایک کے خلاف دو فتوحات حاصل کی ہیں۔ [5][6]

بھارت نے اپنا پہلا خواتین ایک روزہ بین الاقوامی کرکٹ ( [7] ) میچ 1978ء کے عالمی کپ میں انگلینڈ کے خلاف کھیلا، جس کی میزبانی بھارت نے خود کی تھی۔ [8] ٹیم کی کارکردگی بری رہی اور وہ گروپ مرحلے کے بقیہ دو میچ ہار گئی۔ [9][10] 1982ء کے عالمی کپ میں، انہوں نے اپنا پہلا ایک روزہ میچ جیتا جب انہوں نے میک لین مکلین پارک، نیپئر، نیوزی لینڈ میں انٹرنیشنل الیون کو 79 رنز سے شکست دی۔ [11][12] بھارت کو پہلی غیر ملکی ایک روزہ سیریز جیت 1994–95 نیوزی لینڈ خواتین کے صد سالہ ٹورنامنٹ میں ملی۔ انہوں نے 1999ء میں انگلینڈ کے دورے کے دوران میں ایک روزہ سیریز جیتی۔ [3] وہ 2005ء اور 2017ء کے عالمی کپ ٹورنامنٹوں میں رنر اپ تھی۔ [8] بمطابق اکتوبر 2017ء انہوں نے بارہ مختلف حریفوں کے خلاف 248 ایک روزہ میچ کھیلے ہیں، اور ایک روزہ میچوں میں جیتنے کے حساب سے چوتھے نمبر پر سب سے زیادہ فتوحات (136) ہیں۔ [13] انہوں نے 37 سیریز جیتی ہیں اور ایک روزہ میں پانچویں کامیاب ٹیم رہی ہے۔ [14] اگست 2006ء میں انگلینڈ کے خلاف خواتین ٹوئنٹی20 بین الاقوامی کے بعد سے، بھارت نے 73 میچ کھیلے ہیں۔ [15] وہ بنگلہ دیش کے خلاف نو جیت کے ساتھ سب سے زیادہ کامیاب رہی ہے۔ [16] وہ 2009ء اور 2010ء کے آئی سی سی خواتین عالمی ٹوئنٹی 20 ٹورنامنٹوں میں سیمی فائنل میں شامل تھی۔ [17][18]

کلید[ترمیم]

  • م - کھیلے گئے میچوں کی تعداد
  • ڈبلیو - جیتنے والے میچوں کی تعداد
  • ہار - ہارے ہوئے میچوں کی تعداد
  • برابر - برابر میچز کی تعداد
  • ڈرا - میچوں کی تعداد ایک ڈرا پر ختم ہوئی
  • بے نتیجہ - میچوں کی تعداد بغیر کسی نتیجہ کے ختم ہوئی
  • ٹائی + ڈبلیو - میچوں کی تعداد برابر اور پھر ٹائی بریکر میں جیتا جیسے باؤل آؤٹ یا سپر اوور
  • ٹائی + ایل - میچوں کی تعداد برابر ہے اور پھر ٹائی بریکر میں کھو گیا ہے جیسے باؤل آؤٹ یا سپر اوور
  • جیت٪ - کھیلوں کی فیصد کھیل جیتنے والوں کو جیتا [n 1]
  • نقصان٪ - کھیلے گئے کھیلوں میں فیصد کھوئے ہوئے
  • ڈرا٪ - کھیلے گئے کھیلوں کی فیصد۔
  • پہلا۔ سال کے پہلے میچ کا پاکستان نے ملک کے خلاف کھیلا
  • آخری - آخری میچ کا سال جو پاکستان نے ملک کے خلاف کھیلا

ٹیسٹ کرکٹ[ترمیم]

حریف کی طرف سے بھارت کی خواتین کا ٹیسٹ کرکٹ کا ریکارڈ [5] [6]
حریف میچ جیتی ہاری برابر جیت% ہار% برابر% پہلا آخری
 آسٹریلیا 9 0 4 5 0.00 44.44 55.55 1977 2006
 انگلستان 14 2 1 11 14.28 7.14 78.57 1986 2021
 نیوزی لینڈ 6 0 0 6 0.00 0.00 100.00 1977 2003
 جنوبی افریقا 2 2 0 0 100.00 0.00 0.00 2002 2014
 ویسٹ انڈیز 6 1 1 4 16.66 16.66 66.66 1976 2014
کل 37 5 6 26 13.51 16.21 70.27 1976 2021

ایک روزہ بین الاقوامی[ترمیم]

بھارتی خواتین کا ایک روزہ بین الاقوامی ریکارڈ حریف [13] [19]
حریف میچ حیت ہار برابر این آر جیت% پہلا آخری
 آسٹریلیا 46 9 37 0 0 19.56 1978 2018
 بنگلادیش 4 4 0 0 0 100.00 2013 2017
 ڈنمارک 1 1 0 0 0 100.00 1993 1993
 انگلستان 72 31 39 0 2 44.28 1978 2021
 International XI 3 3 0 0 0 100.00 2013 2013
 آئرلینڈ 12 12 0 0 0 100.00 1993 2017
 نیدرلینڈز 3 3 0 0 0 100.00 1993 2000
 نیوزی لینڈ 48 19 28 1 0 38.88 1978 2019
 پاکستان 10 10 0 0 0 100.00 2005 2017
 جنوبی افریقا 27 15 11 0 1 57.69 1997 2021
 سری لنکا 29 26 2 0 1 92.85 2000 2018
 ویسٹ انڈیز 25 20 5 0 0 80.00 1993 2019
کل 280 153 122 1 4 55.61 1978 2021
حریف کی طرف سے بھارت کی خواتین کا ٹوئنٹی 20 انٹرنیشنل ریکارڈ [16] [20]
میچ حریف جیت ہار برابر برابر + جیت برابر+ہار این آر جیت% پہلا آخری
 آسٹریلیا 20 6 14 0 0 0 0 30.00 2008 2020
 بنگلادیش 12 10 2 0 0 0 0 83.33 2013 2020
 انگلستان 22 5 17 0 0 0 0 22.72 2006 2021
 ملائیشیا 1 1 0 0 0 0 0 - 2018 2018
 نیوزی لینڈ 12 4 8 0 0 0 0 33.33 2009 2020
 پاکستان 11 9 2 0 0 0 0 81.81 2009 2018
 جنوبی افریقا 13 8 4 0 0 0 0 66.66 2014 2021
 سری لنکا 18 14 3 0 0 0 1 82.35 2009 2020
 تھائی لینڈ 1 1 0 0 0 0 0 - 2018 2018
 ویسٹ انڈیز 18 10 8 0 0 0 0 55.55 2011 2019
کل 129 69 58 0 0 0 2 54.33 2006 2021

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Williamson، Martin (18 مئی 2007). "International Cricket Council: A brief history ۔۔۔". ای ایس پی این کرک انفو. 9 اگست 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 اکتوبر 2017. 
  2. "BCCI finally takes full control of India women's cricket". ESPNcricinfo. 13 نومبر 2006. 10 اکتوبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 اکتوبر 2017. 
  3. ^ ا ب Shubangi، Kulkarni (8 ستمبر 2000). "The history of Indian women's cricket". ESPNcricinfo. 3 اگست 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 7 ستمبر 2017. 
  4. "Statistics / Statsguru / Women's Test matches / Aggregate/overall records". ESPNcricinfo. 17 ستمبر 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 10 مارچ 2017. 
  5. ^ ا ب "India Women / Records / Women's Test Matches / Result Summary". ESPNcricinfo. 7 ستمبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 7 ستمبر 2017. 
  6. ^ ا ب "Records / Women's Test Matches / Team Records / Results Summary". ESPNcricinfo. 23 ستمبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 19 اکتوبر 2017. 
  7. "Statistics / Statsguru / Women's One Day Internationals / Aggregate/overall records". ESPNcricinfo. 7 ستمبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 7 ستمبر 2017. 
  8. ^ ا ب Thompson، Jenny. "A brief history ۔۔۔". ESPNcricinfo. 7 ستمبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 7 ستمبر 2017. 
  9. "Records / 1978 – India Women / Women's One Day Internationals / Match Results". ESPNcricinfo. 7 ستمبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 6 ستمبر 2017. 
  10. "1978 Women's World Cup / Points Table". ESPNcricinfo. 20 اکتوبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 20 اکتوبر 2017. 
  11. "Statistics / Statsguru / Women's One Day Internationals / Aggregate/Overall Records". ESPNcricinfo. 21 اکتوبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 20 اکتوبر 2017. 
  12. "Records / 1982 – India women's One Day Internationals / Match Results". ESPNcricinfo. 20 اکتوبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 20 اکتوبر 2017. 
  13. ^ ا ب "Records / Women's One Day Internationals / Team Records / Results Summary". ESPNcricinfo. 21 فروری 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 19 اکتوبر 2017. 
  14. "Records / Women's Twenty20 Internationals / Team Records / Results Summary". ESPNcricinfo. 20 دسمبر 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 7 ستمبر 2017. 
  15. "Statistics / Statsguru / Women's Twenty20 Internationals / Aggregate / Overall Records". ESPNcricinfo. 21 اکتوبر 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 20 اکتوبر 2017. 
  16. ^ ا ب "India Women / Records / Women's Twenty20 Internationals / Result Summary". ESPNcricinfo. 22 اکتوبر 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 7 ستمبر 2017. 
  17. "Women's World Twenty20, 2009". Wisden Cricketers' Almanack. reprinted by ESPNcricinfo. 14 مئی 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 2 ستمبر 2017. 
  18. English، Peter (13 مئی 2010). "Blackwell steers Australia into final". ESPNcricinfo. 10 اپریل 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 2 ستمبر 2017. 
  19. "India Women / Records / Women's One Day Internationals / Result Summary". ESPNcricinfo. 22 اکتوبر 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 7 ستمبر 2017. 
  20. "Records / Women's Twenty20 Internationals / Team Records / Results Summary". ESPNcricinfo. 31 اگست 2017 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 20 اکتوبر 2017.