بیلسٹک میزائل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

بیلسٹک میزائل (ballistic missile) ایسا میزائل ہوتا ہے جو سب سے پہلا راکٹ کی طرح زمینی کرہء ہوائی سے باہر نکلتا ہے اور وہاں سے اپنے ہدف کو نشانہ بناتا ہے۔ کروز میزائل کے مقابلے میں بیلسٹک میزائلوں کو ایک یا ایک سے زائد ہدف کے لیے روانہ کیا جا سکتا ہے۔ ان کی بنیادی اقسام میں شارٹ رینج، میڈیم رینج، انٹرمیڈیٹ رینج اور بین البراعظمی رینج شامل ہیں۔[1] پاکستان کے پاس غوری II ایک میڈیم رینج بلیسٹک میزائل ہے، جس کی رینج 2000کلومیٹر ہے۔ اس کے علاوہ ابابیل میزائل ہے جو زیادہ طاقتور ہے، شاہین 3 آواز سے 18 گنا تیز سب سے تیز رفتار پاکستانی میزائل ہے

بیلسٹک میزائل کے لیے راکٹ انجن استعمال کیا جاتا ہے، جو سب سے پہلے اس میزائل کو زمینی کرہء ہوائی سے باہر نکالتا ہے۔ یوں اس میزائل کو ہوا کی رگڑ کا سامنا کرنا نہیں پڑتا۔ انتہائی اوپر پہنچانے کے بعد اسے دوبارہ زمین کی جانب روانہ کیا جاتا ہے اور زمینی تجاذبی کشش کی وجہ سے یہ انتہائی رفتار حاصل کر لیتا ہے۔[2]

Trident II missile image.jpg

بیلسٹک میزائل زیادہ تر روایتی کے علاوہ غیرروایتی یعنی جوہری ہتھیار بھی لے جا سکتے ہیں اور یہ بیک وقت کئی مقامات کو نشانہ بنانے کے لیے بھی استعمال ہوتے ہیں۔ بلیسٹک میزائل کروز‍ میزائلوں کی طرح ہدف کو انتہائی ٹھیک ٹھیک نشانہ تو نہیں بنا سکتے مگر اس کے باوجود خاصی درستی سے ہدف تک پہنچ سکتے ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. گوگل کتب. 
  2. "Ballistic_missile".