تاریخِ زوال و سقوطِ سلطنتِ روما

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
The History of the Decline and Fall of the Roman Empire  
No-Book.svg
مصنف ایڈورڈ گبن
ملک انگلینڈ
زبان انگریزی
موضوعات تاریخِ زوال و سقوطِ سلطنتِ روما
ناشر ستھراہن اینڈ کادیل,لندن
تاریخ اشاعت 1776–89
ذرائع ابلاغ شائع شدہ
صفحات 6جلد
کانگرس DG311

تاریخِ زوال و سقوطِ سلطنتِ رومایہ مشہور برطانوی مورخ و مستشرق ایڈورڈ گبنکی تصنیف ہے جو سلطنت روم کے عروج زوال سے بحث کرتی ہے۔ اس کتاب کی علمی حیثیت کا اندازہ اس بات سے کیا جا سکتا ہے کہ مصنف مذکورہ بالا کو جدید تاریخ نگاری کا بانی کہا جاتا ہے۔

موضوع[ترمیم]

کتاب میں سلطنت روم کی شروع سے زوال تک کی مکمل تجزیاتی تاریخ قلم بند کی گئی ہے۔ کہتے ہیں کہ ابھی گبن کا یہ کتاب لکھنے کا ارادہ نہیں تھا، مگر تاریخ سے اپنی دلچسپی کے باعث اس نے شوقیہ ہزاروں صفحات کا مواد جمع کیا۔ مشہور ادیب ای ایم فورسٹر لکھتا ہے، گبن نے تاریخ کے حوالے سے جو کتابیں پڑھیں، جو نوٹس تیار کئے، ان کی تعداد حیران کن ہے، تاہم اس زمانے میں اس مطلق علم نہیں تھا کہ وہ یہ سب کچھ کیوں پڑھ رہا ہے۔ ‘‘ بنیادی طور پر یہ روم کے ابتدا سے زوال تک کی داستان ہے۔ تاریخ کی اہم ترین کتابوں میں اس کا شمار ہوتا ہے ۔ گبن کی تحقیق ، اس کا شاندار اسلوب ، غیر جذباتی اور غیر معتصب تجزیاتی انداز سے تاریخ انسانی کے عظیم مورخین میں شامل کرتا ہے

تنقید[ترمیم]

Edward Gibbon (1737–1794).

اس کتاب کے پندرویں اورسولہویں باب میں عیساہیت پر کافی زور دار حملے کیے ہیں جس پر بہت کچھ لکھا گیا۔ اس پر اکثر مسلمان سیرت نگاروں نے تنقید کی ہے کیوں کہ ایڈ ورڈ گبن خود عربی سے نا بلد اس لیے اس نے کتاب کے وہ مقام(پچاسواں باب) جہاں پر اسلام و پیغمبر اسلام کا ذکر ہے وہاں اپنے سے پہلے کے مستشرقین کے کام سے استفادہ کیا، جس وجہ سے وہ غیر جانبدار نہ رہ سکا اور پہلے کے مستشرقین کا انداز اپنا لیا جو کافی حد تک تعصب اور غیر سنجیدہ پن سے بھرا ہوا ہے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]