تبادلۂ خیال:تاریک مادہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
  1. ڈارک_میٹر

کہکشاؤں میں کچھ ایسا مادہ بھی موجود ہے جو نہ روشنی منعکس کرتا ہے، نہ کسی اور قسم کی توانائی، مگر یہ کہکشاؤں میں موجود ہے تبھی کہکشائیں اپنی موجودہ شکل میں موجود ہیں۔ اس مادے کو ڈارک میٹر(Dark Matter) کا نام دیا گیا، آج سائنسدان یہ سمجھتے ہیں کہ ڈارک میٹر کائنات میں موجود تمام مادے کے لئیے ایک ڈھانچے کا کام کرتا ہے، اور کائنات کی ابتداء میں ڈارک مادے ہی نے اس بیج کا کام کیا جس سے جڑ کر عام مادے کو کہکشائیں اور دوسرے بڑے اجسام بنانے کا موقع ملا، یعنی ڈارک میٹر بالکل ایک کرسمس ٹری(Christmas Tree) کے درخت کی طرح ہے جبکہ عام مادہ یا قابلِ مشاہدہ مادہ اس کرسمس ٹری پر لگے ہوئے برقی قمقے ہیں جو چمکتے ہیں اور واضع دکھائی دیتے ہیں، مگر درحقیقت کرسمس ٹری کے درخت کی طرح حقیقی کرسمس ٹری درخت ہی ہے۔ سائنسدان سمجھتے ہیں کہ ڈارک میٹر بھی کوئی بنیادی کوانٹم ذرہ ہے جو عام مادے پر بالکل بھی عمل(Interact) نہیں کرتا، مگر ابھی تک اسکی دریافت نہیں ہو پائی۔ مگر اسکے شواہد کائنات میں موجود روشنی کے گریویٹیشنل لینزنگ کے عمل سے گزرنے کے باعث ملے ہیں، کیونکہ باقی تمام مادے کی طرح یہ بھی ثقالت پیدا کرتا ہے اور یہ ثقالت بڑی بڑے بڑے کہکشاؤں کے جھنڈوں میں روشنی کو موڑنے کا کام کرتا ہے، گو کہ ابھی ڈارک میٹر کے بنیادی ذرے(Fundamental Particle) کو دریافت کرنا باقی ہے مگر یہ بات وسوق سے کہی جا سکتی ہے کہ ڈارک میٹر وجود رکھتا ہے، بلکہ اسکی حیت کو سمجھنا کائنات کی بنیادی سمجھ بوجھ رکھنے کے لئیے لازمی ہے، کیونکہ 21 فیصد کائنات ڈارک میٹر ہی ہے۔ . تحریر غالب کمال امین اکبر (تبادلۂ خیالشراکتیں) 11:48, 11 فروری 2017 (م ع و)