ترکمان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ترکمان
Türkmenler
Түркменлер
توركمنلر
Independence Day Parade - Flickr - Kerri-Jo (215).jpg
20 ویں یوم آزادی کی پریڈ، 2011 میں لوک لباس میں ترکمان
کل آبادی
ت 7.9 ملین[a]
گنجان آبادی والے علاقے
Flag of ترکمانستان ترکمانستان4.7 ملین[1]
Flag of ایران ایران1.7 ملین[2]
Flag of Islamic Emirate of Afghanistan افغانستان1.2 ملین[3][4]
Flag of ازبکستان ازبکستان152,000[5]
Flag of روس روس46,885[6]
Flag of تاجکستان تاجکستان15,171[7]
Flag of یوکرین یوکرین7,709[8]
Flag of پاکستان پاکستان6,000[9]
Flag of ریاستہائے متحدہ ریاست ہائے متحدہ5,000[حوالہ درکار]
زبانیں
ترکمانی زبان[10]
مذہب
بنیادی طور پر اہل سنت[10]
متعلقہ نسلی گروہ
اوغوز ترک

a. ^ The total figure is merely an estimation; a sum of all the referenced populations.

ترکمان (ترکمان: Türkmenler، Түркменлер، توركمنلر، Turkmen Turks (ترکمان: Türkmen türkleri، توركمن تورکلری[11][12][13] وسطی ایشیا سے تعلق رکھنے والے ترک نسلی گروہ ہیں، جو بنیادی طور پر ترکمانستان، ایران کے شمالی اور شمال مشرقی علاقوں اور شمال مغربی افغانستان میں رہتے ہیں۔ ترکمانوں کے بڑے گروپ ازبکستان، قازقستان اور شمالی قفقاز (اسٹاوروپول کرائی) میں بھی پائے جاتے ہیں۔ وہ ترکمان زبان بولتے ہیں، جسے ترک زبانوں کی مشرقی اوغوز شاخ کے حصے کے طور پر درجہ بندی کیا جاتا ہے۔ دیگر اوغز زبانوں کی مثالیں ترکی، آذربائیجانی، قشقائی، گاگوز، خراسانی اور سالار ہیں۔

زبان[ترمیم]

ترکمان (Turkmen: Türkmençe ، Түркменче) ایک ترک زبان ہے جو وسطی ایشیا کے ترکمان، خاص طور پر ترکمانستان، ایران اور افغانستان میں بولی جاتی ہے۔ اس کے ترکمانستان میں ایک اندازے کے مطابق پچاس لاکھ مقامی بولنے والے ہیں، شمال مشرقی ایران میں مزید 719,000 بولنے والے ہیں[14] اور شمال مغربی افغانستان میں 1.5 ملین لوگ ہیں۔[15]

آبادی اور آبادی کی تقسیم[ترمیم]

ماسکو، روس، یوم فتح کی پریڈ میں ترکمان اخل ٹیک گھوڑا

1911ء میں، روسی سلطنت میں ترکمانوں کی آبادی کا تخمینہ 290,170 تھا، اور یہ اندازہ لگایا گیا تھا کہ ان کی کل تعداد [تمام ممالک میں] 350,000 سے زیادہ نہیں ہے"۔[16] 1995ء میں ترکمان ماہرین تعلیم نے اندازہ لگایا۔

۔۔۔ازبکستان میں 125,000 ترکمان، 40,000 روس اور 22,000 تاجکستان میں آباد ہیں۔ ترکمانوں کا سب سے بڑا گروپ ایران (850,000)، افغانستان (700,000) عراق (235,000)، ترکی (150,000)، شام (60,000) اور چین (85,000) میں ہے۔ مجموعی طور پر بیرون ملک مقیم ترکمانوں کی تعداد تقریباً 2.2 ملین ہے۔[17]

آج وسطی ایشیا اور قریبی پڑوسیوں کے ترکمان باشندے یہاں رہتے ہیں:

ترکمانستان، جہاں 5,042,920 افراد کی آبادی کا تقریباً 85% حصہ (جولائی 2006ء کا تخمینہ) ترکمان نسلی ہے۔ اس کے علاوہ، ایک اندازے کے مطابق شمالی افغانستان سے تعلق رکھنے والے 1,200 ترکمان مہاجرین فی الحال ترکمانستان میں سوویت افغان جنگ اور افغانستان میں دھڑے بندیوں کی وجہ سے مقیم ہیں جس نے طالبان کے عروج و زوال کو دیکھا۔[18]

افغانستان، جہاں 2006ء تک، 200,000 نسلی ترکمان بنیادی طور پر ترکمان-افغان سرحد کے ساتھ فاریاب، جوزجان، سمنگان اور بغلان کے صوبوں میں مرکوز ہیں۔ بلخ اور قندوز صوبوں میں بھی کمیونٹیز موجود ہیں۔

افغانستان سے ترکمان لڑکی اور بچہ
بندر ترکمن میں ایرانی ترکمان

پاکستان، جس میں سوویت افغان جنگ کے دوران میں 5000 سے کم ترکمان افغانستان سے بھاگے تھے۔ آج ترکمانوں کی ایک چھوٹی سی آبادی پشاور میں مقیم ہے، جہاں وہ بنیادی طور پر قالین کے کاروبار سے وابستہ ہیں۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "The World Factbook". اخذ شدہ بتاریخ 18 مارچ 2015. 
  2. ^ ا ب "Ethnologue". اخذ شدہ بتاریخ 8 اگست 2018. 
  3. "Ethnic Groups"۔ Library of Congress Country Studies. 1997. اخذکردہ بتاریخ 2010-10-08. ^ Jump up to: a b
  4. "The Ethnic Groups of Afghanistan". 
  5. Alisher Ilhamov (2002)۔ Ethnic Atlas of Uzbekistan۔ Open Society Institute: Tashkent.
  6. 2002 Russian census
  7. 2002 Tajikistani census (2010)
  8. "About number and composition population of Ukraine by data All-Ukrainian census of the population 2001". Ukraine Census 2001. State Statistics Committee of Ukraine. اخذ شدہ بتاریخ 17 جنوری 2012. 
  9. (PDF) https://web.archive.org/web/20060321181818/http://www.unhcr.org/cgi-bin/texis/vtx/home/opendoc.pdf?tbl=SUBSITES&page=SUBSITES&id=434fdc702. 21 مارچ 2006 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ.  مفقود أو فارغ |title= (معاونت)
  10. ^ ا ب "Who are the Turkmen and where do they live?". Center for Languages of the Central Asian Region. بلومنگٹن، انڈیانا: انڈیانا یونیورسٹی بلومنگٹن. 2021 [2020]. 3 جون 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 24 اگست 2021. 
  11. Mehmet Kara، Türkmen Türkleri Edebiyatı (The Literature of the Turkmen Turks)، Türk Dünyası El Kitabı، Türk Kültürünü Araştırma Enstitüsü Yayınları، Ankara 1998، pp. 5-17
  12. Gokchur، Engin (2015). "Upon Common Word Existance of Turkmen Turkish and Turkey's Turkish Dialects". The Journal of International Social Research. 8 (36): 135. 
  13. "Türkmenistan, kardeş ülke (Turkmenistan, brotherly nation)". Türkiye gazetesi. 
  14. "Iran". Ethnologue. 
  15. ترکمان at ایتھنولوگ (18th ed., 2015)
  16. Turanians and Pan-Turanianism. London: Naval Staff Intelligence Department. نومبر 1918. 
  17. Çaryýew، B.؛ Ilamanow، Ýa. (2010). Türkmenistanyň Geografiýasy (بزبان التركمانية). Ashgabat: Bilim Ministrligi. 
  18. "UNHCR Begins Compiling Database of Refugees in Turkmenistan". 08 دسمبر 2005 میں اصل سے آرکائیو شدہ.