تصور آفاق

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

تصور آفاق سے مراد کسی فرد یا معاشرے کا وہ بنیادی ادراکی رخ جو اس فرد یا معاشرے کے پورے علم یا مکمل نقطہ نظر کو محیط ہو۔ آسان الفاظ میں اس اصطلاح سے مراد کائنات اور نوع انسانی سے متعلق کسی فرد یا معاشرے کے تصورات و نظریات کا مجموعہ ہے۔ تصور آفاق میں طبعی فلسفہ؛ بنیادی، وجودی اور معیاری مسلمات، اقدار، جذبات، احساسات اور اخلاقیات وغیرہ سب شامل ہوتے ہیں۔ درحقیقت یہ اصطلاح جرمن نژاد ہے اور اول اول جرمن فلسفہ میں اس کا ظہور ہوا۔ جرمن زبان میں اسے Weltanschauung کہا جاتا ہے جو دو الفاظ Welt (دنیا) اور Anschauung (نظریہ) سے مل کر بنا ہے۔

یہ تصور جرمن فلسفہ اور علمیات کا بنیادی تصور ہے اور ان نظریات و تصورات کے مجموعہ پر منطبق کیا جاتا ہے جن کی مدد سے کوئی فرد یا معاشرہ دنیا کو دیکھتا، اس کی تشریح کرتا اور اس سے معاملہ کرتا ہے۔