تفاوتی نسائیت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

تفاوتی نسائیت کا خیال ہے کہ مرد اور عورت کے مابین اختلافات موجود ہیں۔[1] یہ اصطلاح کیرل گلکین کے قاغم کردہ اس نظریے سے نکلی ہے جو مرد اور عورت کے درمیان میں حیاتیاتی، نفسیاتی اور جذباتی فرق کو فرض کرتا ہے۔[2] تفاوتی یا اختلافی نسائیت/تانیثیت 1980ء کی دہائی میں نسائیت پسندوں کی طرف سے سامنے آئی، جو ایک حوالے سے آزاد خیال نسائیت کا ردعمل کا نتیجہ تھی۔۔[3] جو مرد و عورت کے درمیان مماثلات پر وور دیتی ہے تاکہ عورتوں کے لیے برابری کے حقوق کا مطالبہ کیا جا سکے۔ اخلافتی نسائيت مرد اور عورت کے درمیان میں برابری پر توجہ مرکوز کیے ہوئے ہے۔ مرد اور عورت کے درمیان میں اختلافات پر زور دیتی ہے اور دلیل دیتی ہے کہ مرد اور عورت کے لیے مماثلت اور ایک جیسا ہونا صروری نہین، اور مردانہ اور زنانہ فدروں کو برابر لیا جائے۔

تاریخ[ترمیم]

تفاوتی یا اختلافی نسائیت/تانیثیت 1980ء کی دہائی میں نسائیت پسندوں کی طرف سے سامنے آئی، جو ایک حوالے سے آزاد خیال نسائیت کا ردعمل کا نتیجہ تھی۔ نفاوتی نسائیت، اگرچہ اس کا مقصد ابھی بھی مرد اور عورت کے مابین مساوات ہے، یہ مرد اور عورت کے مابین اختلافات پر زور دیتی ہے اور یہ دلیل پیش کرتی ہے کہ مرد اور عورت، اور مردانہ اور زنانہ اقدار کے لئے یکسانیت یا مماثلت ضروری نہیں ہے، لیکن ان سے یکساں سلوک کیا جائے۔[4]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Carol Gilligan". Psychology's Feminist Voices. 22 فروری 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 28 فروری 2021. 
  2. "Accidental vs Essential Properties". Stanford Encyclopedia of Philosophy. اخذ شدہ بتاریخ 21 مارچ 2017. 
  3. Voet، Rian (1998). Feminism and Citizenship. SAGE Publications Ltd. 
  4. Voet، Rian (1998). Feminism and Citizenship. SAGE Publications Ltd.