تفسیر مظہر القرآن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

تفسیر مظہر القرآن جو ترجمہ وتفسیر مظہر القرآن سے معروف ہے

مترجم و مفسر[ترمیم]

شیخ الاسلام مفتی اعظم ہند محمد مظہر اللہ شاہ دہلوی

ناشر[ترمیم]

محمد حفیظ البرکات شاہ۔ ضیاء القرآن پبلی کیشنز۔ لاہور۔

تعارف[ترمیم]

اس تفسیر کا مختصر تعارف اور پس منظر یہ ہے کہ برصغیر پاک وہند میں سب سے پہلے قرآن کا ترجمہ شاہ ولی اللہ محدث دہلوی نے 1737ء میں مسلمانوں کے اندر قرآن فہمی کا جذبہ پیدا کرنے اور انہیں اس کا شعور بخشنے کے لیے آسان فارسی میں کیا، پھر بر صغیر پاک وہند میں قرآن مجید کے اس پہلے فارسی ترجمے کا اردو ترجمہ کرنے کی سعادت مفتی اعظم ہند شاہ محمد مظہر اللہ دہلوی کے حصہ میں آئی۔ آپ نے نہ صرف شاہ ولی اللہ محدث دہلوی کے فارسی ترجمہ کا اردو ترجمہ کیا بلکہ اس پر تفسیری حواشی بھی تحریر فرمائے جو آپ کے علم، فکر کا نتیجہ اور مطالعہ و تجربہ کا نچوڑ ہیں۔ جو ہر طبقہ کے لیے ہر لحاظ سے مفید ہیں۔، خصوصاً عقائد کی اصلاح کا اس میں بہت خیال رکھا گیا ہے۔ اسی ترجمہ اور تفسیری حواشی کو بعد میں " مظہر القرآن " کے نام سے شائع کیا گیا ۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. تفسیر مظہر القرآن،ضیاء القرآن پبلی کیشنز۔ لاہور