تولوئی خان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
تولوئی خان
(منگولی میں: ᠲᠤᠯᠤᠢ ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
TuluiWithQueenSorgaqtani.jpg
 

معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش سنہ 1191[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات سنہ 1232 (40–41 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
منگولیا  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات زہر  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the Mongol Empire.svg منگول سلطنت  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
زوجہ سرقویتی بیگی  ویکی ڈیٹا پر (P26) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد نسل
والد چنگیز خان  ویکی ڈیٹا پر (P22) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
والدہ بورتے  ویکی ڈیٹا پر (P25) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
بہن/بھائی
خاندان بورجگین،  چنگیز خاندان  ویکی ڈیٹا پر (P53) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دیگر معلومات
پیشہ خان (منگول سلطنت)،  نائب السلطنت  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

تولوئی خان (پیدائش: 1191ء– وفات: 1232ء) چنگیز خان کا سب سے چھوٹا اور پسندیدہ بیٹا تھا جس نے 1227ء سے 1229ء تک حکومت کی۔

تاریخ[ترمیم]

اپنے باپ کے حکم پر اس نے نیشاپور، ہرات اور مرو کے علاقے فتح کیے۔

اولاد[ترمیم]

تولی خان کی اولاد یوان مغل کہلاتی تھی۔ تبت میں جاکر دلائ لامہ مشہور ہوئے۔ قبلائی بن تولی بن چنگیز کا دار السلطنت "بائغ" تھا۔ تولی خان کا بیٹا منکو تخت نشین ہون تو اس نے اپنے بھائی ہلاکو خان کو ایران اور عجم کی طرف ایک بڑی فوج دے کر ان مضبوط حکومتوں کی تسخیر کے لیے بھیجا۔ ہلاکو خان کی اولاد جا ایران اور عراق پر حکمران رہی مسلمان ہو گئے۔ محمود خان غازان پہلا مسلمان تھا۔ چین، منگولیا اور کوریا میں اس کی اولاد نے بدھ مت اختیار کیا۔

جغرافیہ[ترمیم]

تولی خان کو ان کے والد کی طرف سے کوریا، تبت اور منگولیا کا علاقہ دیا گیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

قاضی محمد اقبال چغتائ : وسط ایشیا کے مغل حکمران۔ چغتائ ادبی ادارہ، لاہور۔ 1983ء۔ صفحہ 30-31۔

تولوئی خان
ماقبل 
چنگیز خان
مغول سلطنت
25 اگست 1227ء13 ستمبر 1229ء
مابعد 
اوکتائی خان