ثقافتی قبولیت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

ثقافتی قبولیت (انگریزی: Acculturation) ایک ایسا طریقہ ہے جس کے تحت سماجی، نفسیاتی اور ثقافتی تبدیلی ابھرتی ہے جب دو ثقافتیں آمنے سامنے ہوتی ہیں اور ایک دوسرے پر اثر انداز ہوتی ہیں۔ ثقافتی قبولیت میں ایک فرد نئے تہذیبی ماجول کو قبول کرتا ہے، عادات و اطوار اپناتا ہے اور اس نئے ماحول سے خود کو ہم آہنگ کرتا ہے۔ مختلف النوع ثقافتوں سے لوگ نئی ابھرتی ثقادت میں خود کو ڈھالتے ہیں، جس میں زیادہ رواں ثقافت کا حصہ بننا، ان کی رسموں کو اپنانا، مگر متصلًا اصل ثقافتی اقدار اور روایات کی بھی پاس بانی ساتھ میں کی جاتی ہے۔ ثقافتی قبولیت کے اثرات رواں ثقافت کی من و عن قبولیت اور آمیزشی ہم آہنگی، دونوں صورتوں میں دیکھی جاتی ہے۔ [1]

اسکارف اور مغربی ثقافت[ترمیم]

مغربی ثقافت میں حجاب اور اسکارف کے خلاف مشرقی ثقافت سے کافی متصادم رائے پائی جاتی ہے۔ تاہم وہاں جاکر بسنے والے جس طرح ان ملکوں کے طور طریقے اپنا رہے ہیں، وہیں وہاں کے عوام کی جانب سے ان طریقوں کو قبول کرنے کا جذبہ بھی پایا جا رہا ہے۔

2016ء میں کینیڈا کے ایک ٹی وی چینل ’سٹینیوز‘ (سٹی نیوز)، ٹورنٹو نے اپنی گیارہ بجے رات کی نشریات میں صحافی جنیلہ ماسا کو پہلی بار ان کے اسکارف کے ساتھ ٹی وی پر خبریں پڑھنے کی اجازت دی۔جنیلہ ماسا کی نیوز پروڈیوسرکا کہنا تھا کہ یہ کینیڈا کی براڈ کاسٹنگ کی تاریخ میں کسی اسکارف پہننے والی خاتون صحافی کے ٹیلی ویژن پر نظر آنے کا پہلا واقعہ ہے۔ جنیلہ ماسا نے اس موقعے پرایک جذباتی ٹویٹ کی ۔ جس میں انہوں نے لکھا کہ ’’ آج کی رات صرف میرے لئے اہم نہیں ۔ میرا نہیں خیال کہ کینیڈا میں کسی خاتون نے اس سے پہلے حجاب پہن کر خبریں پڑھی ہوں۔' [2]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Cole، Nicki Lisa؛ Cole، Ph D. Nicki Lisa؛ journalist، Ph D. is a freelance؛ California، has taught a range of sociology courses at the University of؛ Barbara، Santa؛ College، Pomona. "Understanding Acculturation". ThoughtCo. اخذ شدہ بتاریخ 09 دسمبر 2018. 
  2. سکارف کی قبولیت کی بحث اور میڈیا