جامعہ امداديہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search


گلشن امداد ستیانہ روڈ فیصل آباد پاکستان

جامعہ اسلامیہ امدادیہ

شیخ الحدیث حضرت مولانا نذیر احمد صاحب رحمت اللہ علیہ نے جامعہ اسلامیہ امدادیہ فیصل آباد رمضان 1403ھ 1983) ء( میں اپنے شیخ و مرشد عارف باللہ حضرت ڈاکٹر عبد الحی عارفی قدسرہ کی صدارت و سرپرستی میں قائم فرمایا۔ اس سے پہلے آپ ملک کے مختلف اہم دینی جامعات میں تدریسی فرائض انجام دے چکے تھے۔ آپ کا شمار ملک کے چند محبوب ترین مدرسین میں ہوتا تھا۔ دوران تدریس آپ مدارس کے حالات کا بنظر غائر مطالعہ کرتے اور حاصل ہونے والے تجربات کو اپنے دماغ کے کمپیوٹر میں محفوظ کرتے رہے۔ مدارس دینیہ میں معیار تعلیم و تربیت کے تنزل و انحطاط پر آپ میں ایک کڑھن اپنے تجربات اور اپنے بزرگوں کی تعلیمات کی روشنی میں معیار تعلیم و تربیت بلند کرنے کا ایک نقشہ اور اس مقصد کے سلسلے میں ایک خاص جذبہ آپ کے دل و دماغ پر سوار رہتا تھا۔ آپ کی عمر پچاس سال سے تجاوز کر کے پختگی کے دور میں داخل ہو چکی تھی، زندگی بھر کے ان تجربات، اس کڑھن ذہن میں بننے والے تعلیم و تربیت کے نقشون اور دل میں پروان چڑنے والے ان جذبوں کا ظہور جامعہ اسلامیہ امدادیہ کی صورت میں ہوا، جس نے بہت ہی مختصر عرصے میں ایک بڑے اور مقبول ادارے بلکہ ایک مؤثر تعلیمی و تربیتی تحریک کی شکل اختیار کر لی اور تمام سلاسل مقبولہ کے بزرگان دین، علما و طلبہ اور عوام کی توجہات کا مرکز بن گیا۔ فالحمدللہ علی ذلک۔

عطیات و صدقات

کرنٹ اکاؤنٹ 560

الائیڈ بنک ڈی گرونڈ فیصل آباد پاکستان


کرنٹ اکاؤنٹ 721

حبیب بنک فوارہ چوک
پیپلز کالونی نبمر 2

فیصل آباد پاکستان


کرنٹ اکاؤنٹ 424

حبیب بنک ستیانہ روڈ محمد آباد
فیصل آباد پاکستان