یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور
UET Lahore Logo.png
شعار پڑھ اس پروردگار کے نام سے جس نے پیدا کیا
تاسیس 1921
قسم سرکاری
تدریسی عملہ
741
طلبہ 8865
انڈرگریجویٹ 7000
مقام لاہور، پنجاب، پاکستان
شاخ مدنی
شوبنکر UETian
وابستگیاں پاکستان انجینئرنگ کونسل، پاکستانی ہائر ایجوکیشن کمیشن
ویب سائٹ www.uet.edu.pk

یونیورسٹی آف انجینئری اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور یا جامعہ انجینئری و ٹیکنالوجی، لاہور جس کو عرف عام میں یو ای ٹی، لاہور بھی کہا جاتا ہے، پاکستان کی سب سے پرانی انجینئری یونیورسٹی ہے۔ یہ یونیورسٹی ایک سرکاری جامعہ ہے جس کا سربراہ یعنی چانسلر گورنر پنجاب ہوتا ہے۔ جبکہ انتظامی سربراہ وائس چانسلر ہوتا ہے۔ اس جامعہ میں فی الوقت 6 فیکلٹیز ہیں جن کے تحت 23 ڈیپاٹمنٹس کام کر رہے ہیں۔ ہائیر ایجوکیشن کمیشن آف پاکستان کے مطابق، یونیورسٹی آف انجینئری اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور ملک کی چند بہترین انجینئری یونیورسٹوں میں سے ایک ہے۔[1][2] QS World University Rankings کی جانب سے 2010ء میں یونیورسٹی آف انجینئری اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور کو دنیا میں 281ویں نمبر پر قرار دیا گیا۔[3]

ہائر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی) نے معیار اور تحقیق کی بنیاد پر پاکستانی جامعات کی درجہ بندی 2013 کا اعلان کیا ہے۔ جس کے مطابق یونیورسٹی آف انجینئری اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور ہندسیات و طرزیات کے زمرے میں دوسرے نمبر پر ہے۔

یونیورسٹی جامعات انجمن دولت مشترکہ کی رکن بھی ہے۔[4]

تاریخ[ترمیم]

جامعہ ہندسیات و طرزیات، لاہور

1921ء میں مغلپورہ ٹیکنیکل کالج کا قیام اس وقت کے انگریز گورنر ایڈورڈ ڈگلس میکلاگن کی جانب سے عمل میں لایا گیا۔ جو آگے جا کر یونیورسٹی آف انجینئری اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور بن گیا۔ جامعہ کی مختصر تاریخ کچھ یوں ہے۔

  • 1921ء مغلپورہ ٹیکنیکل کالج
  • 1923ء میکلاگن انجینئری کالج
  • 1932ء جامعہ پنجاب سے الحاق
  • 1961ء جامعہ کی توسیع اور نیا نام West Pakistan University of Engineering & Technology
  • 1971*ء جامعہ کو یونیورسٹی آف انجینئری اینڈ ٹیکنالوجی، لاہور (University of Engineering and Technology, Lahore) کا نام دے دیا گیا جو اب تک یہی ہے۔
موجودہ طلبہ و طالبات کی تعداد 8865
موجودہ پی ایچ ڈی طلبہ 188
کیمپس کی تعداد 4
ڈیپاٹمنٹس کی تعداد 33
تحقیقی مراکز 14
فیکلٹی ارکان کی تعداد 741 (بشمول 122 بی ایچ ڈی)
فیکلٹی ارکان جو پی ایچ ڈی کر رہے ہیں بیرون ملک 180

لوکل 37

انڈر گریجوایٹس پروگرامز 29
پوسٹ گریجوایٹس پررگرامز 55
معاونتی سٹاف 1707
ہوسٹلز 16 (2700 طلبہ)
کیفے ٹیریا 5
کھیل کی میدان 5
آمدورفت کی سہولیات 49 بسیں
سٹوڈینٹس سروس سنٹرز 2

Source: [1]

محل وقوع[ترمیم]

جی ٹی روڈ لاہور

جامعہ جی ٹی روڈ، بیگم پورہ، لاہور (31°34′42.34″N 74°21′31.90″E / 31.5784278°N 74.3588611°E / 31.5784278; 74.3588611متناسقات: 31°34′42.34″N 74°21′31.90″E / 31.5784278°N 74.3588611°E / 31.5784278; 74.3588611) میں واقع ہے۔ جامعہ شالیمار باغ سے چند کوس کی فاصلے پر ہے۔ یہ ایک گنجان آباد علاقہ ہے۔ جامعہ کے سات بڑے دروازے میں جن کا نمبر شمار 0 سے 6 تک ہے۔ عام طور ہر گیٹ نمبر 3 ہی کو بطور داخلی راستہ استعمال کی جاتا ہے۔

کیپمس (جامعہ کار)[ترمیم]

  • جامعہ انجینئری و ٹیکنالوجی، لاہور (مرکزی)
  • جامعہ انجینئری و ٹیکنالوجی، کالا شاہ کاکو
  • رچنا کالج برائے انجینئری و ٹیکنالوجی، گوجرانوالہ
  • جامعہ انجینئری و ٹیکنالوجی، لاہور، فیصل آباد
  • جامعہ انجینئری و ٹیکنالوجی، لاہور، نارووال

عالمانہ[ترمیم]

جامعی شعبہ جات[ترمیم]

شعبہ فن تعمیر اور منصوبہ بندی

یو ای ٹی لاہور بیچلر، ماسٹرز اور ڈاکٹریٹ ڈگری مندرجہ ذیل شعبہ جات کے تحت پیش کرتا ہے۔

شعبہ جات[ترمیم]

شعبہ برقیاتی ہندسیات

تحقیقی مراکز[ترمیم]

لیزر اور اوپٹرونکس سینٹر

جامعہ میں اس وقت 16 تحقیقی مراکز کام کر رہے ہیں

قومی مکتبہ برائے ہندسیاتی علوم[ترمیم]

قومی مکتبہ برائے ہندسیاتی علوم

قومی مکتبہ برائے ہندسیاتی علوم (The National Library of Engineering Science) مرکزی مکتبہ ہے جس میں 400 قارئین کے لیے بیٹھنے کی گنجائش کے ہے۔ اس میں 125،000 سے زائد کتابیں موجود ہیں۔ ہندسیاتی موضوعات کے علاوہ، بنیادی علوم، معاشرتی علوم، ادب اور اسلامیات پر بھی کافی پڑھنے کا مواد بھی دستیاب ہیں۔ لیکن زیادہ تر مجموعہ خالص علوم، اطلاقی علوم اور ٹیکنالوجی کا احاطہ کرتا ہے۔

جامعہ کے مرکزی مکتبہ کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ حال ہی میں لجنہ اعلی تعلیم (ہائر ایجوکیشن کمیشن) کی طرف سے پاکستان میں ہندسیاتی و تکنیکی تعلیم کے لیے بنیادی وسائل کے مرکز کے طور پر منتخب کیا گیا ہے۔

یہ جامعہ انجینئری و ٹیکنالوجی، لاہور میں اللہ ہو چوک کے سامنے میں تین منزلہ عمارت ہے۔ اس کا افتتاح فیصل بن عبد العزیز آل سعود نے کیا۔

بیرونی روابط[ترمیم]

قابل ذکر سابق طلبہ[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

صارفی خانہ[ترمیم]

اگر آپکا تعلق یونیورسٹی آف انجینئری اینڈ ٹیکنالوجی سے ہے تو آپ مندرجہ ذیل صارفی خانہ استعمال کر سکتے ہیں۔

{{صارف یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی}}

UET یہ صارف یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کا موجودہ یا سابقہ طالب علم ہے۔


{{صارف یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی 2}}

UET Main Block2.jpg یہ صارف یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کا موجودہ یا سابقہ طالب علم ہے۔