جانور

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(جانوروں سے رجوع مکرر)
Jump to navigation Jump to search
اضغط هنا للاطلاع على كيفية قراءة التصنيف

جانور

Animal diversity.png 

اسمیاتی درجہ مملکت[1][2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں صنف بندی درجہ (P105) ویکی ڈیٹا پر
جماعت بندی
طبقہ: گوشت خور، نباتات خور، شکار خور، مردم خور
سائنسی نام
Animalia[1][2][3]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں صنف بندی نام (P225) ویکی ڈیٹا پر
لنی اس ، 1758  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں صنف بندی نام (P225) ویکی ڈیٹا پر

جانور کثیرالخلیاتی زندہ نامئے ہیں جن کا تعلق مملکہ حیوانات سے ہے۔

امتیازی خصوصیات[ترمیم]

جانوروں میں کئی خصوصیات ہوتی ہیں جو ان کو دوسرے جانداروں سے ممتاز کرتی ہیں۔ یہ زیادہ تر کثیرالخلیاتی ہوتے ہیں، تاہم ان میں کچھ طفیلئے بھی ہوتے ہیں جو یک خلوی ہوتے ہیں لیکن جرثومے وغیرہ سے مختلف ہوتے ہیں۔، یہ مختلف النوع ہیں، عمومی طور پر جانوروں میں غذا کو ہضم کرنے کے لیے نظام انہضام ہوتا ہے، جو انہیں پودوں اور الجی وغیرہ سے الگ کرتا ہے۔ یہ پودوں، الجی جیسے جانداروں سے اس لیے بھی مختلف ہیں کیونکہ ان میں خلوی دیوار نسبتاً کم ہوتی ہے۔

ڈھانچہ[ترمیم]

تولید و افزائش[ترمیم]

تقریباًً تمام جانوروں میں تولید جنسی اختلاط سے عمل میں آتی ہے۔ بالغ جانور جفت لونیہ یا چَند لُونوِيَہ ہوتے ہیں۔ بہت سے جانور جنسی اختلاط کے بغیر بھی پیدا ہوتے ہیں، یہ طریقہء تولید خود زاہی کہلاتا ہے، جس میں تولید بلا جنسی اختلاط انڈوں کے ذریعے ہوتی ہے۔ کچھ جانوروں میں تولیدی عمل پارگی کے ذریعے بھی ہوتا ہے، جس میں خلیوں کی ٹوٹ پھوٹ سے تولیدی عمل ہوتا ہے۔

ارتقا[ترمیم]

حیاتیاتی جماعت بندی[ترمیم]

جانداروں (حیوانات و نباتات) کو جن درجات میں تقسیم کیا جاتا ہے وہ یوں ہیں کہ: میدان، مملکہ، شعبہ، جماعت، ذیلی جماعت، طبقہ، خاندان، جنس اور پھر نوع۔ یہ تو کل نو الفاظ ہوئے اور انکو تو سمجھا جاسکتا ہے مگر ان میں آنے والے لاتعداد حیوانات اور پودے! کتنوں کی درجہ بندی کو سمجھ سکتا ہے ایک انسانی ذہن؟ کیا انہیں انگریزی ہی میں لکھ دیا جائے؟ کیا اس طرح انگریزی میں لکھنے سے انکا مفہوم سمجھ میں آجائے گا؟ ان تمام سوالات کا حل اور اس شجرحیات کے پیچ در پیچ بل کھاتے اژدھے پر قابو پانا عام اور رائج طریقہ سے ناممکن ہی نہیں، فضول اور نقصان دہ بھی ہے۔ اس کے لیے کوئی ایسا طریقہ اختیار کرنا پڑے گا کہ سانپ بھی مر جائے اور لاٹھی بھی نہ ٹوٹے۔

بس اسی بات کو مد نظر رکھتے ہوئے اردو ویکیپیڈیا پر انگریزی کے ٹیڑھے ٹیڑھے ناموں کو جوں کا توں لکھ دینے کی بجائے باقاعدہ اصول اور ضوابط کی بنیادوں پر اردو کے نام بناکر استعمال کیے گئے ہیں۔ گو یہ نام شائد پیچیدہ تو محسوس ہوں مگر اس کے باوجود یہ اتنے پیچیدہ نہیں ہوں گے جتنے انگریزی کے نام اردو ابجد میں لکھنے سے ہوجاتے ہیں۔ اور پھر یہ کہ چونکہ ان ناموں کو اپنانے کے اصول اور ضوابط بھی اس صفحہ پر درج کیے گئے ہیں تاکہ کسی دقت کی صورت میں ان کی جانب رجوع کیا جاسکے۔

درجات اور انکا اسم حفظی[ترمیم]

اوپر بیان کردہ عبارت میں جو 9 عدد نام درجات کے مندرج ہیں وہ ایک مکمل ترین فہرست ہے۔ عموما کسی بھی جاندار (جانور یا پودے) کے ذکر کے ساتھ جن درجات کو لازمی ذکر کیا جاتا ہے وہ پالائی سے زیریں درجہ کی جانب یہ ہیں: مملکہ، شعبہ، جماعت، طبقہ، خاندان، جنس، نوع اور ان درجات کے ناموں کو نسبتاً آسانی سے حافطہ میں محفوظ کرنے کے لیے ہر درجہ کے نام کا پہلا لفظ لے کر ایک مختصر اسم حفظی (mnemonic) بھی اختیار کیا جاسکتا ہے جو مشجط خجـَن ہے۔ اسم حفظی تو اس کے علاوہ کوئی اور بھی بنایا جاسکتا ہے۔

نام دینا اور پہچاننا[ترمیم]

  • سب سے پہلے تو ہر جاندار کی ابتدا کا نام دیا جائگا جو قابل فہم اور آسان ہو (اگر پہلے سے رائج لفظ دستیاب ہوا تواسی کا انتخاب کیا جائیگا)
  • پھر اس نام کی درجہ بہ درجہ اترنے کی نوعیت کے لحاظ سے اس میں لاحقوں کا اضافہ کر دیا جائے گا (جس طرح انگریزی میں کیا جاتا ہے اور نیچے جدول میں درج کیا گیا ہے)
  • اس طرح لاحقوں کے اضافوں سے الفاظ بعض اوقات بالکل نئی (شائد کسی حد تک عجیب) صورت بھی اختیار کرسکتے ہیں، لیکن وہ اتنے عجیب ہرگز نہیں ہوسکتے کہ جتنے انگریزی کے اختیار کرنے پر ہوجائیں گے، لہذا اس نوبت کے آنے پر کوئی متبادل تلاش کیا جاسکتا ہے یا پھر لاحقوں میں ترمیم کا سوچا جاسکتا ہے۔
  • گو کہ ابھی یہ اضافے مشکل اور پیچیدہ لگ رہے ہیں، لیکن یہ بھی قابل غور بات ہے کہ جب انگریزی میں بھی یہ اضافے ہوتے ہیں تو عام آدمی تو کیا حیاتیات کے عام طالب علموں (ان سے الگ کہ جو انتہائی ذھین ترین طالب علم ہوں یا جنکی تعلیم اعلی انگریزی اداروں میں ہوئی ہو یا کہ جنکے قریب انکو بتانے اور سمجھانے والے قابل افراد میسر ہوں) کے لیے بھی سمجھنا ممکن نہیں ہوتیں۔ اگر انکو اردو کے اضافوں کے ساتھ بتایا جائیگا تو پیچیدہ یا عجیب ہونے کے باوجود ان کے سمجھنے کے امکانات انگریزی کے اضافوں کے ساتھ بتائے جانے والے اضافوں کی نسبت یقننا کہیں زیادہ اور دیرپا ذھن نشیں ہوں گے۔
درجہ (Rank) نباتات (Plants) طَحالِب (Algae) فُطریات (Fungi) حیوانات (Animal) اولانیات (Protista)
  • حیوانیات = قسمہ (Phylum)
  • نباتیات = شعبہ (Division)
-تات (-phyta) -قط (-mycota) -یا (-a)
ذیلی قسمیہ/ذیلی شعبہ

Subdivision/Subphylum

-تاتیہ (-phytina) -قطہ (-mycotina)
جماعت (Class) -یتی (-opsida) -یبی (-phyceae) -قطر (-mycetes)
ذیلی جماعت (Subclass) -یتیہ (-idae) -یبیہ (-phycidae) -قطریہ (-mycetidae) -تیہ
فوقی طبقہ (Superorder) -فط (-anae) -فطق
طبقہ (Order) -طب (-ales) -طبق
ذیلی طبقہ (Suborder) -طبی (-ineae) -طبقی
زیریں طبقہ (Infraorder) -طبیہ (-aria) -طبقیہ
فوقی خاندان (Superfamily) -فان (-acea) -(oidea) -خان
خاندان (Family) -آن (-aceae) (-idae) -خن
ذیلی خاندان (Subfamily) -آنہ (-oideae) (-inae) -خنہ
قبیلہ (Tribe) -یل (-eae) (-ini) حیل
ذیلی قبیلہ (Subtribe) -یلی (-inae) (-ina) حیلی

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ عنوان : Integrated Taxonomic Information System
  2. ^ ا ب پ مصنف: Michael A. Ruggiero، Dennis P. Gordon، Thomas M. Orrell، Nicolas Basile Bailly، Thierry Bourgoin، Richard C. Brusca، Thomas Cavalier-Smith، Michael D. Guiry اور پال ایم۔ کرک — عنوان : A Higher Level Classification of All Living Organisms — جلد: 10 — صفحہ: e0119248 — شمارہ: 4 — شائع شدہ از: PLoS ONE — https://dx.doi.org/10.1371/JOURNAL.PONE.0119248https://www.ncbi.nlm.nih.gov/pubmed/?term=25923521https://www.ncbi.nlm.nih.gov/pmc/articles/PMC4418965 — اجازت نامہ: CC0
  3.   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں دائرۃ المعارف حیات آئی ڈی (P830) ویکی ڈیٹا پر"معرف Animalia دائراۃ المعارف لائف سے ماخوذ"۔ eol.org۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 جولا‎ئی 2019۔ Check date values in: |accessdate= (معاونت)