جبرائیل

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

ایک جلیل القدر فرشتے کا نام، جو اسلامی عقیدے کے مطابق فرشتوں کے سردار ہیں۔ جو انبیاء کرام کی طرف وحی لایا کرتا تھے۔ روایت ہے کہ شب معراج میں حضرت جبریل براق لے کر آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آئے تھے اور مقام سدرۃ المنتٰہی تک ہمرکاب رہے تھے۔

قرآن میں جبرائیل[ترمیم]

قرآن مجید میں حضرت جبریل کا ذکر نام کے ساتھ تین جگہوں پر آیا ہے۔ اس کے علاوہ قرآن میں آپ کو روح القدس الروح الامین بھی کہا گیا ہے۔ دوسرے مقامات پر فقط اشارے ہیں۔

بائبل میں جبرائیل[ترمیم]

عہد نامہ قدیم اور عہد نامہ جدید میں بھی آپ کا تذکرہ کیا گیا ہے۔ کتاب دانی ایل میں اور متی کی انجیل میں نام کے ساتھ دو دو بار ذکر آیا ہے۔

القاب[ترمیم]

آپ کے مختلف القاب میں ناموس اعظم ، روح اعظم ، روح القدس اور روح الامین وغیرہ شامل ہیں۔ جبرائیل (علیہ السلام) اللہ تعالیٰ کے سب سے مقرب فرشتے ہیں۔ تمام انبیاء (علیہم السلام) پر وحی حضرت جبرائیل (علیہ السلام) کے توسط سے ہی آتی رہی ہے۔ [1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. تفسیر عزیزی پارہ 1 ص 359