جمال الدین بخاری (ہیئت دان)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search


جمال الدین بخاری (ہیئت دان)
چینی نام
روایتی چینی 扎馬魯丁[1]
فارسی نام
فارسی جمال الدين محمد بن طاھر بن محمد الزيدي البخاري

جمال الدین محمد ابنِ طاہر ابنِ محمد الزیدی البخاری (انگریزی: Jamal ad-Din Muḥammad ibn Ṭāhir ibn Muḥammad al‐Zaydī al‐Bukhārī ؛ چینی نام: زمال-اُڈِنگ ؛ مطلب ایمان کی خوبصورتی) پندرہویں صدی عیسوی کے ایک فارسی[2][3][4] ہیئت دان تھے۔ دراصل بخارا سے تعلق رکھتے تھے، انہوں نے 1250ء کے قریب قریب قبلائی خان کی خدمت میں پیش ہوکر نئے دار الحکومت بیجنگ میں اسلامی فلکیاتی بیورو قائم کیا تاکہ روایتی چینی بیورو کے ساتھ متوازی کام کیا جاسکے۔[5] قبلائی خان نے اس طرح بیوروکریٹک ڈھانچے کو برقرار رکھا، لیکن اس سلسلے میں چینی مشاہدات اور پیشن گوئیوں کو معزز مسلم علما کی طرف سے جانچ پڑتال کی اجازت دی۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Zhu & Fuchs 1946، صفحہ 3
  2. Liu Yingsheng and Peter Jackson. "CHINESE-IRANIAN RELATIONS iii. Mongol Period – Encyclopaedia Iranica". www.iranicaonline.org (بزبان انگریزی). Encyclopedia Iranica. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 11 فروری 2017. A Persian astronomer named Jamāl-al-Dīn Boḵārī، who had already visited China in the time of Möngke.۔. 
  3. Selin، Hrsg. H. (2006). Encyclopaedia of the History of Science, Technology, and Medicine in Non-Western Cultures (ایڈیشن 2.،). Berlin: Springer Netherland. صفحہ 1143. ISBN 978-1-4020-4559-2. 
  4. Morris Rossabi (28 نومبر 2014). From Yuan to Modern China and Mongolia: The Writings of Morris Rossabi. BRILL. صفحات 229–. ISBN 978-90-04-28529-3. 25 دسمبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. 
  5. van Dalen 2007