جوز اورٹیگا گیسیٹ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
جوز اورٹیگا وائی گیسیٹ
José Ortega y Gasset
José Ortega y Gasset (ہسپانوی)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقامی نام (P1559) ویکی ڈیٹا پر
Image illustrative de l'article جوز اورٹیگا گیسیٹ
اورٹیگا وائی گیسیٹ 1920ء کی دہائی میں

معلومات شخصیت
پیدائش 9 مئی 1883[1][2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
میدرد   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 18 اکتوبر 1955 (72 سال)[1][2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
میدرد   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
مقام دفن San Isidro Cemetery[*]   خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام دفن (P119) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of Spain.svg ہسپانیہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مادر علمی میڈرڈ یونیورسٹی
پیشہ فلسفی،مصنف،ریاضی دان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
تصنیفی زبان ہسپانوی زبان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں بولی، لکھی اور دستخط کی گئیں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر

پروفیسر ڈاکٹر جوز اورٹیگا وائی گیسیٹ (انگریزی: José Ortega y Gasset)، (ہسپانوی تلفظ: [xoˈse orˈteɣa i ɣaˈset]; پیدائش: 9 مئی، 1883ء - وفات: 18 اکتوبر، 1955ء) ہسپانوی آزاد خیال فلسفی، سماجی مفکر، جمالیاتی نقاد،ماہرِ تعلیم، مدیر، مضمون نگار اور معتقد مسلک انسانیت تھے جن کی تحریروں نے بیسویں صدی میں ہسپانوی ثقافت و ادب اور عالمی فلسفہ پر بڑے گہرے اثرات مرتب کئے۔ وہ میڈرڈ یونیورسٹی میں مابعد طبیعیات کے پروفیسر تھے۔ ان کی کتاب The Revolt of the Masses (عوام کی بغاوت) شہرۂ آفاق کی حیثیت رکھتی ہے۔

حالات زندگی[ترمیم]

جوز اورٹیگا گیسیٹ 9 مئی، 1883ء کو میڈرڈ، اسپین میں پیدا ہوئے [3][4][5]۔ انہوں نے میڈرڈ ینویورسٹی (1898ء - 1904ء) سے پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی اور جرمنی (1904ء - 1908ء) میں لائپزش، نورنبرگ، کولون اور برلن میں تعلیم حاصل کی[3]۔ وہ میڈرڈ یونیورسٹی میں مابعد طبیعیات کے پروفیسر تھے۔ 1948ء میں انہوں نے میڈرڈ میں انسٹی ٹیوٹ آف ہیومنیٹیز قائم کیا۔ ان کی اہم ترین تصانیف میں Meditations on Quixote ۔(1914ءInvertebrate Spain ۔(1921ءIdeas on the Novel ۔(1924ءThe Revolt of the Masses ۔(1930ء) اور The Origin of Philosophy ۔(1943ء) شامل ہیں۔ اس کے علاوہ انہوں نے اخبارات و رسائل میں سینکڑوں کی تعداد میں مضامیں لکھے جو بارہ جلدوں میں شائع ہوئے اور انگریزی، فرانسیسی اور جرمن زبان میں ترجمہ ہوچکے ہیں[5]۔ گیسیٹ کی شہرۂ آفاق کتاب The Revolt of the Masses کا اردو ترجمہ عوام کی بغاوت کے نام سے آئی یو جرال نے کیا ہے اور اسے مقتدرہ قومی زبان پاکستان نے شائع کیا ہے۔

وفات[ترمیم]

جوز اورٹیگا گیسیٹ 18 اکتوبر، 1955ء کو میڈرڈ، اسپین میں جگر اور پیٹ کے کینسر کی وجہ سے وفات پاگئے۔[3][4]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ 1.0 1.1 مذکور : Encyclopædia Britannica Online — دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Jose-Ortega-y-Gasset — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  2. ^ 2.0 2.1 مذکور : SNAC — ایس این اے سی آرک آئی ڈی: http://snaccooperative.org/ark:/99166/w6zp44k6 — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  3. ^ 3.0 3.1 3.2 جوز اورٹیگا وائی گیسیٹ، دائرۃ المعارف برطانیکا
  4. ^ 4.0 4.1 جوز اورٹیگا وائی گیسیٹ، نیو ورلڈ انسائیکلوپیڈیا
  5. ^ 5.0 5.1 جوز اورٹیگا وائی گیسیٹ، اسٹینفورڈ انسائیکلو پیڈیا آف فلاسفی