جولاہا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

جولاہا فارسی کا کلمہ ہے اور پیشہ کا نام ہے۔جولاہے کا پیشہ بعض کم تربرادریوں نے بھی اپنا کر اپنی سماجی حاصیت بلند کی ہے۔اس لیےکولی جلاہے ، چمار جولاہے ، موچی جولاہے اور رام داسی جولاہے ملتے ہیں ۔ امکان یہی ہے اس پیشے کو اپنا کر اپنے سابقوں کو گرادیا اور وہ صرف جولاہے بن گئے ۔ ان جولاہوں میں اکثریت مسلمانوں کی ہے اور کچھ ہندو اور سکھ ہیں ۔

انصاری[ترمیم]

تمام مسلمان جولاہے جو اپنی گوت مردم شماریوں میں اپنی اور ذات جولاہا لکھاتے رہے ۔ یہاں تک 1921ء کی محرم شماری تک یہی لکھوایا گیا ۔ مگر 1931ء میں انہوں نے اپنی ذات انصاری میں بدل دی ۔ ان کی روایات کے مطابق صحابی رسول حضرت ابو ایوب انصاری جولاہا کا کام کرتے تھے اور ان کی پیروی میں انہوں نے اپنی ذات انصاری لکھوائی ۔

ان کا برادری سسٹم اور رسومات اور کچھ عرصہ پہلے تک اپنی ذات میں شادی کرنا اس بات کی گواہی دیتا ہے کہ یہ اس سرزمین کے قدیم ماخذ سے تعلق رکھتے ہیں ۔

شاخیں[ترمیم]

چونکہ جولاہہ پیشہ کا نام ہے اور کپڑا کا کام کرنے والے کو جولاہا بولا جاتا ہےتو بہت ساری قوموں کے لوگوں نے رزق حلال کے حصول کے لیے اس پیشہ کو اپنایا اس لیے اب پنجاب کے علاقوں میں جولاہوں کی مختلف شاخیں ہیں بیشتر نے اپنی قوم کا نام نہیں چھوڑا ۔ ان میں بھٹی ، کھوکھر ، جنجوعہ ، سندھو ، کبیر بنسی ، اعوان ، جرپال ، گل ، رانجھا ، مغل وغیرہ وغیرہ ۔ ان میں کبیر بنسی مشرقی ہندوستان میں پھیلا ہوا ہے اور اس میں ہندو اور مسلمان دونوں شامل تھے ۔ یہ مشہور بھگت کبیر کے نام سے جس کے متعلق مشہور ہے وہ خود بھی جولاہا تھا ۔ مشرقی جولاہے دو بڑی شاخوں دیس والی اور تیل میں تقسیم ہیں ۔ دیس والی دیسی اور تیل ایک تیلی عورت سے شادی کرنے والے جولاہے کی نسل خیال کی جاتی ہے ۔ تیل بانسبت دیسوالی کے پست سمجھے جاتے ہیں ۔ جمنا کے اضلاع میں گنگا پوری اور وسط ہند میں ایک ملتانی شاخ بھی تھی ۔ یہ پشاور میں گولاہ اور ہزارہ میں کاسی کہلاتے تھے ۔ یہ مغرب میں مسلمان جولاہوں کی مختلف ذاتیں ملتی تھیں ۔ ان میں زیادہ تر علاقائی بنیادوں پر تقسیم تھے ۔ مثلاً جنڈ میں جانگلی ، دیسوالی ، بجواریہ اور پاریہ ذاتیں تھیں ۔ نابھ میں جانگلا ، پواڈھڑے باگری اور ملتانی پارے ، موچیا تھے ۔ جنگلی سیدوں اور پیروں کو بہت مانتے ہیں اور اپنی گوت میں شادی کرنے سے گریز کرتے ہیں ۔ مسلمان جولاہے عید الفطر کو بہت اہمیت دیتے ہیں ۔ بعض شب رات اور بعض محرم کو اہمیت دیتے ہیں ۔

ماخذ[ترمیم]

ہندوستانی تہذیب کا مسلمانوں پر اثر ۔ ڈاکٹر محمد عمر
پنجاب کی ذاتیں ۔ سر ڈیزل ایپسن
ذاتوں کا انسائیکلوپیڈیا ۔ ای ڈی میکلین ، ایچ روز