جہاں آرا عالم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
جہاں آرا عالم
Jahanara Alam.jpg
ذاتی معلومات
مکمل نامجہاں آرا عالم
پیدائش1 اپریل 1993ء (عمر 29 سال)
کھلنا، بنگلہ دیش
عرفجہاں آرا
بلے بازیدائیں ہاتھ کی بلے باز
گیند بازیدائیں ہاتھ کی میڈیم گیند باز
حیثیتگیند باز
بین الاقوامی کرکٹ
قومی ٹیم
پہلا ایک روزہ (کیپ 2)26 نومبر 2011  بمقابلہ  آئرلینڈ
آخری ایک روزہ21 نومبر 2021  بمقابلہ  پاکستان
ایک روزہ شرٹ نمبر.26
پہلا ٹی20 (کیپ 2)28 اگست 2012  بمقابلہ  آئرلینڈ
آخری ٹی2029 فروری 2020  بمقابلہ  نیوزی لینڈ
ٹی20 شرٹ نمبر.26
ملکی کرکٹ
عرصہٹیمیں
2008/09کھلنا ڈویژن خواتین
2009/10-2012/13سلہٹ ڈویژن خواتین
2011اباہانی لمیٹڈ خواتین
2019–2020ولاسٹی
کیریئر اعداد و شمار
مقابلہ ایک روزہ ٹوئنٹی20آئی
میچ 37 71
رنز بنائے 152 167
بیٹنگ اوسط 6.90 6.68
100s/50s 0/0 0/0
ٹاپ اسکور 23 18*
گیندیں کرائیں 1498 1274
وکٹ 33 55
بولنگ اوسط 31.06 20.70
اننگز میں 5 وکٹ 0 1
میچ میں 10 وکٹ 0 0
بہترین بولنگ 3/21 5/28
کیچ/سٹمپ 5/– 12/–
ماخذ: ESPN کرک انفو، 21 نومبر 2021

جہاں آرا عالم (بنگالی: জাহানারা আলম)‏ (پیدائش: 1 اپریل 1993ء) ایک بنگلہ دیشی کرکٹ کھلاڑی ہیں جو بنگلہ دیش کی قومی خواتین کرکٹ ٹیم کے لیے کھیلتی ہیں۔ [1] وہ دائیں ہاتھ کی میڈیم فاسٹ باؤلر اور دائیں ہاتھ کی بلے باز ہیں۔ وہ اس ٹیم کی رکن تھی جس نے چین کے شہر گوانگزو میں 2010 ءکے ایشیائی کھیلوں میں چین کے خلاف کرکٹ میں چاندی کا تمغا جیتا تھا۔

کرکٹ کیریئر[ترمیم]

Alam bowling for Bangladesh during the 2020 ICC Women's T20 World Cup
عالم 2020 آئی سی سی خواتین کے ٹی20 عالمی کپ کے دوران میں بنگلہ دیش کے لیے باؤلنگ کر رہی ہیں۔

عالم نے اپناپہلا ایک روزہ میچ 26 نومبر 2011ء کو آئرلینڈ کی خواتین کرکٹ ٹیم کے خلاف کھیلا تھا۔ عالم نے اپنا پہلا ٹی 20، میچ 28 اگست 2012ء کو بھارتی خواتین کرکٹ ٹیم کے خلاف کھیلا تھا۔ جون 2018ء میں، وہ بنگلہ دیش کے اس دستےکا حصہ تھیں جس نے 2018ء خواتین کا ٹوئنٹی 20 ایشیا کپ ٹورنامنٹ جیت کر اپنا پہلا خواتین ایشیا کپ ٹائٹل جیتا تھا۔ [2][3][4] اسی مہینے کے آخر میں، انہیں 2018ء کے آئی سی سی خواتین عالمی ٹی ٹوئنٹی کوالیفائر ٹورنامنٹ کے لیے بنگلہ دیش کے دستےمیں شامل کیا گیا۔ [5] 28 جون 2018ء کو، وہ آئرلینڈ کے خلاف میچ میں، ٹی20 میں پانچ وکٹیں لینے والی بنگلہ دیش کی پہلی گیند باز بن گئیں۔ [6] اکتوبر 2018ء میں، انہیں ویسٹ انڈیز میں 2018ء کے آئی سی سی خواتین عالمی ٹوئنٹی 20 ٹورنامنٹ کے لیے بنگلہ دیش کے دستے میں شامل کیا گیا۔ [7][8] وہ چار میچوں میں چھ آؤٹ کے ساتھ ٹورنامنٹ میں بنگلہ دیش کے لیے مشترکہ طور پر سب سے زیادہ وکٹیں لینے والی کھلاڑی تھیں۔ [9] ٹورنامنٹ کے اختتام کے بعد، انہیں بین الاقوامی کرکٹ کونسلنے ٹیم میں اسٹینڈ آؤٹ کھلاڑی کے طور پر نامزد کیا تھا۔ [10] اگست 2019ء میں، اسکاٹ لینڈ میں 2019ء کے آئی سی سی خواتین عالمی ٹوئنٹی 20 کوالیفائر ٹورنامنٹ کے لیے انہیں بنگلہ دیش کے اسکواڈ میں شامل کیا گیا۔ [11] نومبر 2019ء میں، انہیں 2019ء کے جنوب ایشیائی کھیلوں میں کرکٹ ٹورنامنٹ کے لیے بنگلہ دیش کے دستے میں شامل کیا گیا۔ [12] بنگلہ دیش کی ٹیم نے فائنل میں سری لنکا کو دو رنز سے شکست دے کر طلائی تمغا حاصل کیا۔ جنوری 2020ء میں، انہیں آسٹریلیا میں ہونے والے 2020 آئی سی سی خواتین کے ٹی20 عالمی کپ کے لیے بنگلہ دیش کی ٹیم میں شامل کیا گیا۔ [13] نومبر 2021ء میں، انہیں زمبابوے میں 2021ء خواتین کرکٹ ورلڈ کپ کوالیفائر ٹورنامنٹ کے لیے بنگلہ دیش کی ٹیم میں شامل کیا گیا۔ [14] جنوری 2022ء میں، اسے ملائیشیا میں 2022ء کامن ویلتھ گیمز کرکٹ کوالیفائر ٹورنامنٹ کے لیے بنگلہ دیش کی ٹیم میں تین ریزرو کھلاڑیوں میں سے ایک کے طور پر نامزد کیا گیا۔ [15] اسی مہینے کے آخر میں، انہیں نیوزی لینڈ میں 2022 خواتین کرکٹ عالمی کپ کے لیے بنگلہ دیش کی ٹیم میں شامل کیا گیا۔ [16]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. মহিলা ক্রিকেটারদের ক্যাম্প শুরু (بزبان بنگالی). Sportbangla.com. 2014-01-10. 22 فروری 2014 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 05 مارچ 2014. 
  2. "Bangladesh name 15-player squad for Women's Asia Cup". International Cricket Council. 12 جون 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 31 مئی 2018. 
  3. "Bangladesh Women clinch historic Asia Cup Trophy". Bangladesh Cricket Board. 12 جون 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 11 جون 2018. 
  4. "Bangladesh stun India in cliff-hanger to win title". International Cricket Council. 12 جون 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 11 جون 2018. 
  5. "ICC announces umpire and referee appointments for ICC Women's World Twenty20 Qualifier 2018". International Cricket Council. 27 جون 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 جون 2018. 
  6. "Bangladesh pip Ireland in last-ball thriller". International Cricket Council. 28 جون 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 28 جون 2018. 
  7. "Media Release: ICC WOMEN'S WORLD T20 WEST INDIES 2018: Bangladesh Squad Announced". Bangladesh Cricket Board. 9 اکتوبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 9 اکتوبر 2018. 
  8. "Bangladesh announce Women's World T20 squad". International Cricket Council. 9 اکتوبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 9 اکتوبر 2018. 
  9. "ICC Women's World T20, 2018/19 – Bangladesh Women: Batting and bowling averages". ESPN کرک انفو. 19 نومبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 19 نومبر 2018. 
  10. "#WT20 report card: Bangladesh". International Cricket Council. 20 نومبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 19 نومبر 2018. 
  11. "Bangladesh name 14-member squad for ICC T20 World Cup Qualifier 2019". International Cricket Council. 11 اگست 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 11 اگست 2019. 
  12. "Nazmul Hossain to lead Bangladesh in South Asian Games". CricBuzz. 6 دسمبر 2019 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 30 نومبر 2019. 
  13. "Rumana Ahmed included in Bangladesh T20 WC squad". Cricbuzz. 29 جنوری 2020 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 29 جنوری 2020. 
  14. "Media Release : ICC Women's World Cup Qualifier 2021: Bangladesh Squad announced". Bangladesh Cricket Board. 06 دسمبر 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 4 نومبر 2021. 
  15. "Bangladesh drop Jahanara for CWC qualifiers". CricBuzz. اخذ شدہ بتاریخ 7 جنوری 2022. 
  16. "Jahanara returns to Bangladesh for World Cup". BD Crictime. اخذ شدہ بتاریخ 28 جنوری 2022. 

بیرونی روابط[ترمیم]