حبیب الرحمن خان

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
حبیب الرحمن خان
معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش سنہ 1866  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاریخ وفات سنہ 1926 (59–60 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ استاد جامعہ  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ملازمت دار العلوم ندوۃ العلماء،  جامعہ عثمانیہ  ویکی ڈیٹا پر (P108) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

حبیب الرحمن خان شیروانی یا نواب حبیب الرحمن خان (پیدائش: 1866ء وفات: 1926ء) بھارت کے عالم دین، دار العلوم ندوۃ العلماء کے استاد اور علامہ شبلی نعمانی کے رفیق تھے، اردو ادیب تھے۔ آپ 1918ء سے 1919ء تک جامعہ عثمانیہ کے پہلے وائس چانسلر تھے۔[1]

حالات زندگی[ترمیم]

حبیب الرحمن خاں شروانی علی گڑھ کے قریب موضع بھیکم پور پیدا ہوئے۔ ابتدائی تعلیم آگرہ کالج میں حاصل کی۔ اسی زمانے میں تصنیف و تالیف کا شوق پیدا ہوا۔ مختلف رسائل اور اخبارات میں مضامین لکھنے شروع کیے۔ ایک عرصہ تک ’’الندوہ‘‘ لکھنؤ کے ایڈیٹر رہے۔ 1918ء میں ریاست حیدرآباد میں ’’صدر الصدور امور مذہب‘‘ کے فرائض سونپے گئے۔ 1922ء میں نواب صدر یار جنگ بہادر کا خطاب سرکاری نظام سے ملا۔ 13 سال بعد اپنے فرائض منصبی سے سبکدوش ہو کر علی گڑھ کے قریب اپنی ملکیت حبیب گنج میں واپس آ گئے۔ تصانیف دو درجن کے قریب ہیں جن میں علمائے سلف اور ’’نابینا علما‘‘ خصوصیت سے قابل ذکر ہیں۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "FORMER VICE-CHANCELLORS". osmania.ac.in.