حجر بن عدی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
حجر بن عدی
حجر بن عدی
Hujr ibn Adi's Shrine.jpg
وفات 660 CE
وجۂ وفات سزائے موت ordered by خلافت امویہ معاویہ بن ابو سفیان
آخری آرام گاہ Adra, شام33°36′27″N 36°31′3″E / 33.60750°N 36.51750°E / 33.60750; 36.51750
نسل Yemeni Arab
وجۂ شہرت being a صحابی
مذہب اسلام
بچے Humaan ibn Hujr

حجر بن عدی صحابیٔ رسول صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم تھے۔ ان کو الکندی اور الادبار بھی کہا جاتا تھا۔[1] آپ عدی بن حاتم طائی کے بیٹے تھے۔ آپ کا جھگڑا زیاد بن سمیہ سے ہوا جب زیاد حضرت علی کو برا بھلا کہہ رہا تھا۔ آپ کو معاویہ بن ابی سفیان نے ان کے ساتھیوں سمیت قتل کروا دیا تھا۔[2] اس قتل کی پیشگوئی حضور صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم نے کی تھی۔ ابن کثیر نے البدایہ والنہایہ میں بیان کیا کہ حجر بن عدی کے قتل کے بعد معاویہ بن ابی سفیان سے حضرت عائشہ نے پوچھا کہ اے معاویہ تجھے کسی بات نے اہل عذراء یعنی حجر بن عدی اور ان کے ساتھیوں کے قتل پر آمادہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ میں نے ان کے قتل میں امت کی اصلاح اور ان کی زندگی میں امت کی خرابی دیکھی ہے۔ اس پر حضرت عائشہ سے نے فرمایا کہ میں نے آنحضرت صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم کو بیان کرتے سنا کہ عنقریب عذراء میں کچھ لوگ قتل ہوں گے جن کی خاطر اللہ اور آسمان والے غصے ہو جائیں گے۔[3]

مزار کی تباہی[ترمیم]

آپ کا مزار دمشق کے قریب مقام عدرا پر تھا۔اس میں ان کے بیٹے کی قبر بھی تھی۔ قبریں ایک مسجد کے اندر تھیں۔ 2 مئی 2013 کو دہشت گردوں نے مسجد اور قبر بارود سے اڑا دی۔ اور قبر کو کھود کر جسم کو نکال نامعلوم مقام پر لے گئے۔[4]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ا العقد الفرید۔ از این محمد احمد الربانی۔ انگریزی ترجمہ از بولاتا تیسری جلد طبع 2007۔ مزید تفصیل انگریزی وکی سے
  2. البدایہ والنہایہ از ابن کثیر جلد 6
  3. البدایہ والنہایہ از ابن کثیر جلد 6
  4. پریس ٹی وی 3 مئی 2013