حلیم بروہی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
حلیم بروہی
Haleem-brohi-newpic.jpg 

معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش 5 اگست 1935  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
وفات 28 جولا‎ئی 2010 (75 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
حیدرآباد  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of Pakistan.svg پاکستان
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہند  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ سندھ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ صحافی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان سندھی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
P literature.svg باب ادب

سندھی زبان کے مقبول مزاح اور ناول نگار .حلیم بروہی نے 5 اگست، 1935ء میں حیدرآباد، پاکستان کے ایک پولیس افسر عبد العزیز کے گھر میں جنم لیا۔ انہوں نے ایل ایل بی کے بعد میں وکالت شروع کی۔ بعد میں انہوں نے سندھ یونیورسٹی جامشورو میں ملازمت اختیار کی۔ حلیم بروہی نے انگریزی اور سندھی زبانوں میں دس کے قریب کتابیں لکھیں۔ جن میں ’حلیم شو‘ سندھی میں ان کی مقبول ترین کتاب رہی ہے۔ انہوں نے انیس سو پچھہتر میں ’اوڑاھ‘ کے نام سے ایک ناول لکھی جو نوجوانوں میں کافی مقبول ہوئی۔ ان کے انگریزی کالموں کا ایک انتخاب بھی شائع ہوا۔ وہ ایک منفرد شخصیت اور منفرد اصولوں کے حامی ادیب تھے۔ انہیں انگریزی زبان پر بہت اچھی دسترس حاصل تھی۔ وہ انگریزی اخبار دی فرنٹیئر پوسٹ میں اکثر کالم لکھتے رہے۔ حلیم بروہی اپنے ادبی نظریات اور اصولوں کی وجہ سے کافی متنازع بھی رہے ہیں۔ انہوں نے طویل عرصے تک سندھی کو رومن سکرپٹ میں لکھنے کی تحریک چلائی۔ تاہم سندھی زبان کے کئی ممتاز ادیب ان کی اس تحریک اور مہم کے خلاف تھے۔