حملقار برقا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
حملقار برقا
Dishekel hispano-cartaginés-2.jpg
حملقار کی سکوں پر نقش 1.ہاتھی پر سوار اور 2. حملقار کی تصویر

معلومات شخصیت
پیدائش 275 ق م
کارتھج  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 228 ق م
ہسپانیہ  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجہ وفات غرق  ویکی ڈیٹا پر (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت کارتھج  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اولاد ہنی بال بارقا
صدربل بارقا
ماجو بارقا
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان،  فوجی افسر  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عسکری خدمات
وفاداری قدیم قرطاج  ویکی ڈیٹا پر (P945) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لڑائیاں اور جنگیں پہلی فونیشی جنگ  ویکی ڈیٹا پر (P607) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

حملقار برقا یا برکا ( 275 – 228 ق م) ایک کارتاژ جنرل اور سیاست دان تھا۔ حملقار بارقا خاندان کا سربراہ تھا، ہنی بال، صدربل بارقا اور ماجو بارقا کا باپ اور صدربل ایماندار کا سسر تھا۔ نام حملقار (فونک ”ḥmlqrt“، ملقرت کا بھائی) کارتاژی بشندوں کا عام نام ہے۔ نام برق کا فونک زبان میں مطلب گرج چمک بنتا ہے [1] حملقار نے کارتاژ اراضی فورسز کو 241 سے 247 ق م تک صقلیہ میں، پہلی جنگ فونک کے آخری مراحل میں کمانڈ کیا۔ اس نے اپنی فوج کو چاک و چوبند رکھا اور گوریلا جنگ میں کامیاب سربراہی کرتے ہوئے رومیوں کو صقلیہ میں شکست دی۔ حملقار نے سن 241 ق م میں افریقا کو اپنی شکست کے بعد امن معاہدہ کے تحت چھوڑ دیا۔

روم اور حملقار کے درمیان میں امن معاہدہ

سن 240ق م میں جب باڑے جنگ برپا ہوئی تو حملقار نے فوج کو دوبارہ کمانڈ کیا۔ اور جنگی تنازع کے خاتمے میں اہم کردار ادا کیا۔ حملقار نے اسپین میں کارتاژی مہم کو سن 237 ق م میں کمانڈ کیا،اور آٹھ سالوں تک جنگ اسپین میں جاری رہی یہاں تک حملقار کا انتقال ہو گیا۔ حملقار کو فونک جنگ دوم کے لیے زمہ دار ٹہرایا جاتا ہے کیونکہ اس نے اپنے بیٹے ہنی بال بارقا کو رومیوں سے لڑنے کی حکمت عملی سمجھادی تھی۔ اور اس طرح بارقا رومیوں کو شکست دینے میں کامیابی ہو گئے۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. S. Lancel, Hannibal p.6.

کتابیات[ترمیم]

  •  چشولم، ہیو، ویکی نویس (1911ء). "en:Hamilcar Barca". دائرۃ المعارف بریطانیکا (ایڈیشن 11ویں). کیمبرج یونیورسٹی پریس. 
  • Baker، G. P. (1999). Hannibal. New York: Cooper Square Press. ISBN 0-8154-1005-0. 
  • Bath، Tony (1995). Hannibal's Campaigns. en:New York: Barnes & Noble Books. ISBN 0-88029-817-0.  or Patrick Stephens, Cambridge, England 1981. ISBN 0-85059-492-8.
  • Bagnall، Nigel (2005). The Punic Wars. New York: Thomas Dunne Books/St. Martin's Press. ISBN 0-312-34214-4. 
  • Goldsworthy، Adrian (2003). The Fall of Carthage. London: Cassell. ISBN 0-304-36642-0. 
  • Lancel، Serge (1999). Hannibal. Wiley-Blackwell. ISBN 0-631-21848-3. 
  • Lazenby، John Francis (1998). Hannibal's War. Norman: University of Oklahoma Press. ISBN 0-8061-3004-0. 
  • Lazenby، John Francis (1996). The First Punic War. Stanford: Stanford University Press. ISBN 1-85728-136-5. 

مزید پڑھیے[ترمیم]

  • Warry, John (1993). Warfare in The Classical World. Salamander Books Ltd. ISBN 1-56619-463-6. 
  • Lancel, Serge (1997). Carthage A History. Blackwell Publishers. ISBN 1-57718-103-4. 

بیرونی روابط[ترمیم]