حنین زعبی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
حنین زعبی
Hanee Zoabi, 28 Sep 2012.jpg 

مناصب
رکن کنیست[1]   ویکی ڈیٹا پر منصب (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رکنیت مدت
24 فروری 2009  – 5 فروری 2013 
پارلیمانی مدت 18ویں کنیست 
رکن کنیست[2]   ویکی ڈیٹا پر منصب (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رکنیت مدت
5 فروری 2013  – 31 مارچ 2015 
پارلیمانی مدت 19ویں کنیست 
رکن کنیست[2]   ویکی ڈیٹا پر منصب (P39) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رکنیت مدت
31 مارچ 2015  – 30 اپریل 2019 
پارلیمانی مدت 20ویں کنیست 
معلومات شخصیت
پیدائش 23 مئی 1969 (50 سال)[1]  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
ناصرہ[1]  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش ناصرہ[1]  ویکی ڈیٹا پر رہائش (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Israel.svg اسرائیل
Flag of Palestine.svg دولت فلسطین  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت بلد
متحدہ عرب فہرست
مشترکہ فہرست  ویکی ڈیٹا پر سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی جامعہ عبرانی یروشلم
جامعہ حیفا  ویکی ڈیٹا پر تعلیم از (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ سیاست دان، معلمہ  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان عربی  ویکی ڈیٹا پر مادری زبان (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان انگریزی[1]، عبرانی[1]، عربی  ویکی ڈیٹا پر زبانیں (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

حنین زعبی (عربی: حنين زعبي، عبرانی: חנין זועבי‎‎; پیدائش 23 مئی 1969ء)، ایک عرب اسرائیلی سیاست دان، زعبی اس وقت چار عرب سیاسی جماعتوں کے اتحاد مشترکہ فہرست کی طرف سے کنیست کی رکن ہیں۔ زعبی 2009ء سے کنیست کا حصہ ہیں، زعبی پہلی عرب خاتون ہے جو اسرائیل کی پارلیمان میں کسی عرب سیاسی جماعت سے منتخب ہو کر پہنچی ہے۔[3] زعبی کیا تعلق بلد جماعت سے ہے، زعبی دو بار 2009ء اور 2013ء میں رکن پارلیمان منتخب ہو چکی ہے۔[3][4]

سوانح[ترمیم]

حنین زعبی ناصرہ کے ایک مسلمان گھرانے میں پیدا ہوئی۔[5] زعبی نے فلسفہ اور نفسیات کی تعلیم جامعہ حیفہ سے حاصل کی، بیچلر آف آرٹس کی سند حاصل کی اور ایم اے اڑٹس کی سند ابلاغ میں جامعہ عبرانی یروشلم سے حاصل کی۔[6] یہ اسرائيل کی پہلی عرب خاتون ہیں جنھوں نے ابلاغیات میں ایم اس کی سند لی اور اور عرب اسکولوں میں پہلی بار ابلاغیات کو شامل نصاب کروایا۔[3] زعبی بطور ریاضی کی استانی کے اور وزارت تعلیم اسرائیل کے لیے اسکول انسپکٹر کا کام کرتی ہیں۔[3]

سیاست[ترمیم]

2001ء میں زعبی نے بلد میں شمولیت اختیار کی۔[6] 2003ء میں، زعبی نے غیر سرکاری تنظیم ای لام – مرکز ذرائع ابلاغ برائے عرب فلسطینی، اسرائیل میں قائم کیا۔ زعبی 2009ء تک اس کی ناطم رہی اور 2009ء میں سیاست کی طرف توجہ دینے کی وجہ سے استعفی دے دیا۔[6]

2009ء کے انتخابات سے پہلے انہوں نے بلد کی فہرست پر تیسرا مقام جیت لیا اور جماعت نے تین نشستیں جیتنے کے بعد ان کو کنیست کے لیے نامزد کیا۔ اس طرح یہ پہلی خاتون رکن کنیست بنی جو عرب تھیں (اس سے قبل حسنیہ جبارہ اور نادیا حلو غیر عرب فہرست پر رکن منتخب ہو چکی تھیں)۔[7] زعبی نے 2006ء میں بلد سے کنیست کے لیے رکن بننے کی کوشش کی لیکن نشست جیتنے کے لیے جماعت کے پاس مطلوبہ ارکان نہ بن سکے۔[6]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب پ ت ٹ חה"כ חנין זועבי — ناشر: کنیست
  2. http://main.knesset.gov.il/mk/Pages/MKPositions.aspx?MKID=846 — ناشر: کنیست
  3. ^ ا ب پ ت Jonathan Cook (فروری 25, 2009)۔ "Palestinian Woman Makes History in Israeli Parliament"۔ AlterNet۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ جون 22, 2010۔
  4. Emmanuel Martinez (اپریل 2009)۔ "An interview with Haneen Zoubi, the only female Arab in the Knesset"۔ Alternatives International Journal۔ Alternatives International۔ صفحہ 6۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل (پی‌ڈی‌ایف) سے آرکائیو شدہ۔
  5. Jason Koutsoukis (16 مئی، 2009)۔ "Voice of equality"۔ دا ایج۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ My parents are Muslims. They pray, they fast, they have been to Mecca, but they raised their children to think and feel as liberal, open-minded people. Check date values in: |date= (معاونت)
  6. ^ ا ب پ ت Netty C. Gross (مارچ 16, 2009)۔ "Provocative Parliamentarian (Extract)"۔ دی جروشلم پوسٹ۔ مورخہ 25 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ جون 22, 2010۔
  7. "Haneen Zoubi Makes Knesset History, And Then Some"۔ Caledoniyya۔ فروری 26, 2009۔ اخذ شدہ بتاریخ جون 22, 2010۔

بیرونی روابط[ترمیم]

  • کنیست ویب سائٹ پر

حنین زعبی

وڈیو[ترمیم]