حیدرآبادی بریانی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
حیدرآبادی بریانی
Biryani of Hyderabad.jpg
حیدرآبادی بریانی
اصلی وطن بھارت
علاقہ یا ریاست تلنگانہ
بنیادی اجزائے ترکیبی باسمتی چاول، گوشت (یا گوشتمسالے
حیدرآبادی بریانی ی
مرچی کا سالن اور دہی چٹنی - بریانی کے لوازمات

حیدرآبادی بریانی حیدرآبادی طرز پر بنائی جانے والی بریانی ہے جو کچے گوشت اور دم کی بریانی کہلاتی ہے۔[1]

اجزائے ترکیبی[ترمیم]

حیدرآبادی بریانی کے اجزائے ترکیبی میں باسمتی چاول، بکرے یا مرغ کا گوشت، دہی، پیاز کے لچھے، مسالے، لیموں اور زعفران شامل ہیں۔ دھنیا پتی اور پیاز کے تلے ہوئے لچھے کو اوپر سے آرائش کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ بکرے کے گوشت کو ترجیح دی جاتی ہے تاہم مرغ یا دوسرے جانوروں کے گوشت بھی استعمال کیے جاتے ہیں۔[1]

تاریخ[ترمیم]

بریانی ہندوستانی الاصل ہے اور دکن کے حکمران نظام کا خاصہ سمجھی جاتی ہے۔ برصغیر کے دیگر خطوں کے بنسبت جنوبی ہند میں بریانی کی زیادہ اقسام پائی جاتی ہیں۔ نیز جنوبی ہند میں چاول اصل غذا کے طور پر بھی استعمال کیا جاتا ہے۔[2] نظام دکن کے باورچی خانے میں مغلائی اور ایرانی پکوان میں کچھ تبدیلیاں اور جدت پیدا کرکے بریانی ایجاد کی گئی۔[3][4]

اقسام[ترمیم]

حیدرآبادی بریانی کی دو قسمیں ہیں: کچی بریانی اور پکی بریانی۔[5]

حیدرآبادی مرغ بریانی

کچے گوشت کی بریانی[ترمیم]

کچے گوشت کی بریانی بنانے کے لیے گوشت کو رات بھر مسالوں میں رکھا جاتا ہے اور پکانے سے قبل دہی ملا دی جاتی ہے۔ اور لمبے باسمتی چاول[6] کی پرتوں کے درمیان میں گوشت رکھ کر دم پر پکایا جاتا ہے۔

پکی بریانی[ترمیم]

پکی بریانی میں گوشت کو زیادہ دیر ملا کر نہیں رکھا جاتا اور پرت جمانے سے قبل ہی اسے پکا لیا جاتا ہے۔ پکی یخنی کے اجزا پہلے ہی پکا لیے جاتے ہیں۔

سبزی بریانی بھی بریانی کی ایک قسم ہے جو گاجر، مٹر کے دانے، پھول گوبھی، آلو اور کاجو ڈال کر بنائی جاتی ہے۔

لوازمات[ترمیم]

بریانی عموماً دہی چٹنی یا مرچی کے سالن[3] سے کھائی جاتی ہے۔ بگھارا بینگن بھی ساتھ رکھا جاتا ہے۔ سلاد میں پیاز، گاجر، ککڑی اور لیموں کے ٹکڑے رکھے جاتے ہیں۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ 1.0 1.1 کولین ٹیلر سن (2004)۔ Food culture in India۔ گرین وڈ پبلیکیشن۔ صفحہ 115۔ آئی ایس بی این 0-313-32487-5۔ اخذ کردہ بتاریخ 12 اکتوبر 2011ء۔ 
  2. Vir Sanghvi
  3. ^ 3.0 3.1 "Telangana / Hyderabad News : Legendary biryani now turns `single'"۔ The Hindu۔ 2005-08-18۔ اخذ کردہ بتاریخ 2011-02-18۔ 
  4. "Of biryani, history and entrepreneurship - Rediff.com Business"۔ In.rediff.com۔ 2004-04-09۔ اخذ کردہ بتاریخ 2011-02-18۔ 
  5. "Metro Plus Chennai / Eating Out : Back to Biryani"۔ دی ہندو۔ 2005-06-13۔ اخذ کردہ بتاریخ 2011-02-18۔ 
  6. http://www.timesonline.co.uk/tol/life_and_style/related_features/article1474804.ece۔ اخذ کردہ بتاریخ ستمبر 30، 2009ء۔  |title= غائب یا خالی (معاونت)[مردہ ربط]