"یروشلم تصادم، 2021ء" کے نسخوں کے درمیان فرق

Jump to navigation Jump to search
308 بائٹ کا اضافہ ،  6 مہینے پہلے
مواد
(مواد)
(ٹیگ: ترمیم از موبائل ترمیم از موبائل ایپ آئی فون ایپ ترمیم)
(مواد)
(ٹیگ: ترمیم از موبائل ترمیم از موبائل ایپ آئی فون ایپ ترمیم)
 
== پس منظر ==
اسرائیل کی سپریم کورٹ میں ایک مقدمہ زیر سماعت تھا جس میں عدالت کو مشرقی یروشلم کے علاقے شیخ جراح سے بیدخل شدہ 6 خاندانوں کے بارے میں 10 مئی 2021ء کو فیصلہ کرنا تھا۔ ‎شیخ جراح صدیوں سے متنازع ہے۔ دو یہودی ٹرسٹیوں نے مل کر شیخ جراح کا کچھ حصہ 1876ء میں عرب جاگیر داروں سے خرید لیا تھا۔ سن 1948ء کی عرب اسرائیل جنگ کے دوران میں اس علاقے پر اردن نے قبضہ کر لیا۔ یہاں اردن نے اقوام متحدہ کی مدد سے ان فلسطینی مہاجروں کے لیے 28 گھر تعمیر کیے جو نو تشکیل شدہ اسرائیلی ریاست سے ہجرت کر کے آئے تھے۔ لیکن 1967ء میں 6 روزہ جنگ کے دوران یہ علاقہ پھر سے اسرائیل کے قبضے میں چلا گیا اور یہاں کے مالکانہ حقوق دوبارہ یہودی ٹرسٹیوں کو دے دیے گئے۔ یہودی ٹرسٹیوں نے ان گھروں کو دائیں بازو کی ایک آباد کار تنظیم ہو فروخت کر دیا۔ جو اس وقت سے فلسطینی رہائشیوں کو بے دخل کرنے کی کوششوں میں مصروف ہے۔ اسرائیلی قانون کے تحت یہودی 1948ء کی عرب اسرائیل جنگ سے پہلے مشرقی یروشلم میں واقع یہودی ملکیتی جائدادوں کو دوبارہ سے حاصل کرسکتے ہیں جب کہ فلسطینیوں کو یہ حق حاصل نہیں ہے۔
 
== حوالہ جات ==

فہرست رہنمائی