"پارسی" کے نسخوں کے درمیان فرق

Jump to navigation Jump to search
16 بائٹ کا اضافہ ،  4 مہینے پہلے
م
خودکار: درستی املا ← ان کی؛ تزئینی تبدیلیاں
(←‏آبادی: روابط شامل کیے)
(ٹیگ: ترمیم از موبائل ترمیم از موبائل ایپ اینڈرائیڈ ایپ ترمیم)
م (خودکار: درستی املا ← ان کی؛ تزئینی تبدیلیاں)
 
 
== آبادی ==
=== تاریخی آبادی ===
[[زرتشتیت|پارسی مذہب]] کا بانی [[زرتشت]] موجودہ شمالی ایران میں 628 قبل ازمسیح پیدا ہوا اور 551 قبل ازمسیح دنیا سے رخصت ہوا اس کی کتاب اوستا کہلاتی ہے کسی زمانے میں پارسی مذہب [[فارسی سلطنت|فارس]] کا سرکاری مذہب رہا جب ساتویں صدی عیسوی میں [[مسلمانوں]] نے [[فارس کی مسلم فتوحات|ایران فتح]] کیا تو ایران کی اکثریت نے اسلام قبول کر لیا پارسیوں کی اکثریت تو ایران میں ہی رہی لیکن کئی پارسی خاندان [[ہندوستان]] آ گئے کوئٹہ ،بمبئی، [[مالابار]] اور [[کراچی]] میں کئی پارسی خاندان آکر آباد ہو گئے۔
 
=== موجودہ آبادی ===
پارسیوں کا بنیادی وطن شمالی ایران ہے اور آج بھی تقریباً 25000 پارسی وہاں آباد ہیں لیکن اس وقت دنیا میں اگر کسی ایک جگہ سب سے زیادہ پارسی لوگ آباد ہیں تو وہ [[ممبئی]] ہے ویسے دنیا میں آتش پرستوں یعنی زرتشت کو ماننے والے پارسیوں کی تعداد چند لاکھ ہے پاکستان سے گذشتہ تیس برسوں میں بہت سے پارسی خاندان برطانیہ ،امریکا اور کینیڈا منتقل ہو گئے ہیں۔ انکیان کی اکثریت [[بمبئی]] اوراس کے گردو نواح میں آباد ہے۔ یہ لوگ عموما تجارت پیشہ ہیں اور سماجی بہبود کے کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں۔ بمبئی اور کراچی کے کئی سکول ہسپتال اور [[کتب خانہ|کتب خانے]] ان کے سرمائے سے چل رہے ہیں۔ ہندوستان کا پہلا [[فولاد]] کا کارخانہ [[جمشید ٹاٹا]] نے [[جمشید پور]] میں بنائی۔ ہندوستان میں جدیدسٹیج ڈرامے اور فلم سازی کے بانی بھی یہی ہیں۔
آج دنیا میں ایک اندازے کے مطابق صرف ایک لاکھ چالیس ہزار پارسی باقی رہ گئے ہیں جن میں سے بیشتر بھارت میں آباد ہیں۔کم تعداد میں ہونے کے باوجود پارسی بھارتی معیشت میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں۔ ٹاٹا خاندان سمیت ملک کے اہم صنعت کار پارسی ہیں۔
 
==== سکھر ====
پہاڑی چاڑھیوں والے سندھ کے تیسرے بڑے شہر [[سکھر]] کی سینٹ سیویئر چرچ والی چاڑھی اترتے ہی ایک قدیمی عمارت نمودار ہوتی ہے۔یہ قدیمی عمارت پارسیوں کی عبادت گاہ اور دھرم شالا ہوا کرتی تھی۔
سکھر میں پارسیوں کا ٹیمپل کئی سالوں سے ویران پڑا ہے۔ عمارت کے ماتھے پر ٹیمپل کی تعمیر کا سال انیس سو تئیس اور ماما پارسی لکھا ہوا ہے۔ ماما پارسی کے نام سے کراچی میں پارسیوں کے سکول ہوا کرتے تھے۔[[کوئٹہ]] سے منسلک پارسیوں کی ایک انجمن کے زیر انتظام سکھر کی یہ عبادگاہ اب منہدم ہونے کے قریب پہنچی ہے۔
 
== تاریخِ پاکستان میں پارسیوں کا کردار ==
حالیہ دنوں میں پارسی پاکستان کے صرف تین بڑے شہروں کراچی، کوئٹہ اور [[لاہور]] میں رہائش پزیر ہیں۔ پاکستان کی تاریخ میں پارسی برادری کا اہم کردار رہا ہے پارسی کمیونٹی نے پاکستان کی تعمیر وترقی میں ،باوجود بہت ہی کم ہونے کے، اہم ترین کردار ادا کیا ہے ایک پارسی شخصیت ہی نے [[قائد اعظم]] کو سیاست کے میدان میں متعارف کرایا تھا پھر قائد اعظم نے ایک [[مریم جناح|پارسی خاتون]] کو مسلمان کرکے شادی کی۔
 
== پارلیمنٹ میں نمائندگی ==
[[پاکستان]] اور [[بھارت]] میں ماضی قریب میں یعنی پندرہ سال قبل تک پارسیوں کی [[پارلیمنٹ]] میں نمائندگی رہی ہے لیکن پاکستان میں اب ان کی تعداد 18سو تک رہ گئی ہے اس لیے خدشہ یہ ہے کہ آئندہ الیکشن میں شائد ان کو [[ہندو]]وؤں، [[بدھ مت]] کے پیروکاروں، [[سکھ]]وں اور [[مسیحیوں]] کے مقابلے میں اقلیت کی بنیاد پر کوئی نشست نہ ملے جہاں تک قومی و صوبائی اسمبلیوں اور [[سینیٹ]] میں کسی اقلیتی نمائندے کی شرکت کا تعلق ہے تو اس حوالے سے بھی پارسی برادری کا کردار ہمیشہ مثبت رہا ہے ہمارے ہاں خود اقلیت کے لوگ یعنی مسیحی، سکھ، ہندو، بدھ مت کے ماننے والے بھی عموماً پارسی شخصیت پر اتفاق کرلیتے ہیں اور اس کی بنیادی وجہ یہ ہے کہ پارسی مجموعی طور پر تعداد میں کم ہیں پھر ان کی اقتصادی اور تعلیمی حالت بہت معیاری ہے۔
 
== تعداد میں کمی کی وجوہات ==
دنیا میں پارسیوں کی تعداد میں کمی سے مستقبل قریب میں ان کے دنیا سے ختم ہوجانے کے اندیشے بڑھ رہے ہیں جس کی چند بنیادی وجوہات ہیں سب سے بڑا مسئلہ تو ان میں آبادی میں اضافے کے مقابلے میں کمی کا رحجان ہے۔
اس وقت پارسیوں کی آبادی میں پوری دنیا میں 18سال سے کم عمر افراد کا تناسب کل آبادی کا 18فیصد ہے جب کہ 18سے 60 برس تک عمروں تک پارسی افراد کا تناسب 31فیصد ہے اور باقی آبادی 60برس کی عمر سے بھی زیادہ عمررسیدہ ہے اس طرح ان میں شرح پیدائش شرح اموات کے مقابلے میں بہت کم ہے اور پھر [[امریکا]] اور [[کینیڈا]] میں اب یہ لوگ دوسرے مذاہب کے لوگوں سے شادیاں بھی رچا رہے ہیں حالانکہ ماضی میں یہ لوگ نہ دوسرے مذہب کے فرد کو شادی میں اپنی لڑکی دیتے تھے اور نہ باہر سے یعنی دوسری مذہب کے فرد سے شادی کرتے تھے۔ پارسی کمیونٹی تیزی سے معدوم ہو رہی ہے اور بعید نہیں کہ عنقریب یہ صفحہ ہستی سے ہی مٹ جائے۔
 
== پاکستان میں معروف شخصیات ==
پارسی گھرانے سے تعلق رکھنے والے '''اردشیر کاؤس جی''' 13 اپریل 1926 میں [[کراچی]] میں پیدا ہوئے، انہوں نے 1988 سے 2011 تک مستقل [[ڈان]] اخبار کے لیے ہفتہ وار کالم لکھنے کے فرائض انجام دیے، آپ کا شمار پاکستان کے انتہائی مستند اور بے باک کالم نگاروں میں کیا جاتا تھا۔ وربائی جی سوپری والا پارسی ہائی اسکول اور ڈی جے سندھ گورنمنٹ کالج سے تعلیم کمل کرنے کے بعد وہ اپنے خاندانی کاروبار شپنگ سے منسلک ہو گئے۔ کاؤس جی کے ان کی بیوی نینسی دنشا سے دو بچے ہیں، ان کی بیٹی کراچی میں رہائش پزیر اور خاندانی کاروبار سے منسلک ہیں جبکہ ان کے بیٹے جو ایک [[معمار]] ہیں وہ امریکا میں مقیم ہیں۔ وہ ایک کالم نگار ہونے کے ساتھ ساتھ ایک بزنس مین اور سماجی کارکن بھی تھے۔
 
* واڈیا خاندان
* ٹاٹا خاندان
* پیناز مسانی (گلوکار)
 
== حوالہ جات ==
111,622

ترامیم

فہرست رہنمائی