خان جہاں بہادر ظفر جنگ کوکلتاش

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
خان جہاں بہادر ظفر جنگ کوکلتاش
معلومات شخصیت
وفات 23 نومبر 1697  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
لاہور  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
مدفن مقبرہ خان جہاں بہادر کوکلتاش  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام دفن (P119) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ گورنر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر

خان جہاں بہادر ظفر جنگ کوکلتاش (وفات: 23 نومبر 1697ء) عہدِ عالمگیری میں مغل صوبیدار لاہور اور مغل سالار تھے۔ خان جہاں بہادر سے متعلق تاریخی حقائق بہت کم میسر ہوئے ہیں البتہ عہدِ عالمگیری کے مؤرخ خافی خان نظام الملک کی تصنیف منتخب اللباب میں خان جہاں بہادر سے متعلق تاریخی معلومات ملتی ہیں۔

لاہور کی صوبیداری[ترمیم]

1680ء میں لاہور کی نظامت کے سلسلے میں اِختلاف پیدا ہو گئے تھے جنہیں دور کرنے کے لیے مغل شہنشاہ اورنگزیب عالمگیر نے مغل شہزادہ محمد اعظم کو لاہور کا صوبیدار مقرر کر دیا۔ بعد ازاں اِس منصب پر مکرم خان اور سپہ دار خان بھی مقرر کیے گئے۔ 11 اپریل 1691ء کو خان جہاں بہادر کو لاہور کی صوبیداری پر مقرر کیا گیا۔[1]

معزولی[ترمیم]

مقبرہ میں موجود خانِ جہاں بہادر ظفر جنگ کوکلتاش کی قبر

خان جہاں بہادر تقریباً ڈھائی سال تک لاہور کی نظامت پر مقرر رہا۔ جون 1693ء میں مغل شہنشاہ اورنگزیب عالمگیر نے خان جہاں بہادر کو لاہور کی نظامت سے معزول کر دیا جس کے بعد خان جہاں بہادر چار سال تک شہنشاہ کے زیر عتاب رہا۔ یہ تمام مدت لاہور میں ہی بسر ہوئی۔

کردار[ترمیم]

خان جہاں بہادر باوقار، فتح نصیب، صاحبِ تدبیر امیر تھا۔ خان جہاں بہادر نے 22 بڑی جنگوں میں فتح حاصل کی۔ اِن تمام جنگوں میں خان جہاں بہادر گہرے زخموں کا شکار ہوا مگر ہر جنگ میں نیک نامی و فتح حاصل کی۔[2]

وفات و مدفن [ترمیم]

مزید دیکھیے: مقبرہ خان جہاں بہادر کوکلتاش

1693ء میں معزولی کے بعد خان جہاں بہادر عسرت کی زندگی بسر کرتا رہا۔ آخری عمر میں وہ مغل شہنشاہ اورنگزیب عالمگیر کے زیرِ عتاب تھا۔[2] بروز ہفتہ 9 جمادی الاول 1109ھ مطابق 23 نومبر 1697ء کو خان جہاں بہادر نے لاہور میں وفات پائی۔ اور خان جہاں بہادر کو لاہور میں مغلپورہ کے نزدیک دفن کیا گیا جہاں بعد ازاں اُس کا شاندار مقبرہ خان جہاں بہادر کوکلتاش دسمبر 1697ء سے 1698ء کے درمیان تعمیر کیا گیا۔

مزید دیکھیے[ترمیم]

ماقبل 
سپہ دار خان
صوبیدار ناظم لاہور
21 اپریل 1691ءجون 1693ء
مابعد 
مہابت خان ابراہیم

حوالہ جات[ترمیم]

  1. دائرۃ المعارف الاسلامیہ (انسائیکلوپیڈیا آف اسلام):  جلد 18، صفحہ 38۔ مضمون: تعلیقہ لاہور۔ مطبوعہ لاہور 1985ء۔
  2. ^ ا ب خافی خان نظام الملک: منتخب اللباب، جلد 3، صفحہ 398۔ مطبوعہ نفیس اکیڈیمی کراچی 1985ء۔