خلیق ابراہیم خلیق

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
خلیق ابراہیم خلیق
پیدائش 1 فروری 1926(1926-02-01)ء
حیدرآباد، دکن، برطانوی ہندوستان
وفات 29 ستمبر 2006(2006-90-29) (عمر  80 سال)
کراچی، پاکستان
قلمی نام خلیق ابراہیم
پیشہ ادیب، فلمساز
زبان اردو
نسل مہاجر
شہریت Flag of پاکستانپاکستانی
اصناف نظم، غزل، تنقید، افسانہ
نمایاں کام منزلیں گرد کی مانند
اُردو غزل کے پچیس سال
اجالوں کے خواب
اہم اعزازات تمغا امتیاز
شریک حیات حمرہ خلیق
اولاد حارث خلیق

خلیق ابراہیم خلیق (انگریزی: Khalique Ibrahim Khalique) (پیدائش: یکم فروری، 1926ء - وفات: 29 ستمبر، 2006ء) اردو کے ممتاز شاعر، افسانہ نگار، نقاد اور فلمساز تھے۔

حالات زندگی[ترمیم]

خلیق ابراہیم خلیق یکم فروری، 1926ء کو حیدرآباد، دکن، برطانوی ہندوستان میں پیدا ہوئے[1][2]۔ تقسیم ہند کے بعد انہوں نے کراچی میں سکونت اختیار کی اور پریس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ پاکستان کے اہتمام میں متعدد دستاویزی فلمیں بنائیں جن میں غالب، پاکستان اسٹوری، آرکیٹینکچرل ہیریٹیج آف پاکستان، ون ایکٹر آف لینڈ، پاتھ ویز ٹو پراسپیریٹی اور کوکونٹ ٹری شامل ہیں۔ وفات سے چند برس قبل ان کی خود نوشت سوانح عمری کا پہلا حصہ منزلیں گرد کی مانند کے نام سے شائع ہوئی۔ ان کی دیگر تصانیف میں کامیاب ناکام، عورت،مرد اور دنیا، اردو غزل کے پچیس سال اور اجالوں کے خواب شامل ہیں۔ انگریزی اور اردو کے شاعر حارث خلیق ان کے فرزند ہیں۔[2]

اعزازات[ترمیم]

حکومت پاکستان نے ان کی خدمات کے اعتراف کے طور پر انہیں تمغا امتیاز عطا کیا۔[2]

تصانیف[ترمیم]

  • منزلیں گرد کی مانند (خود نوشت سوانح عمری)
  • اُردو غزل کے پچیس سال (تنقید)
  • اجالوں کے خواب (نظمیں)
  • کامیاب ناکام (افسانے)
  • عورت،مرد اور دنیا

وفات[ترمیم]

خلیق ابراہیم خلیق 29 ستمبر، 2006ء کو کراچی، پاکستان میں وفات پا گئے اور سخی حسن کے قبرستان میں سپردِ خاک ہوئے۔[1][2]

حوالہ جات[ترمیم]