خواتین کرکٹ عالمی کپ، 1988ء

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
خواتین کرکٹ عالمی کپ، 1988ء
1988 Women's Cricket World Cup logo.png
تاریخ29 نومبر – 18 دسمبر 1988
منتظمIWCC
کرکٹ طرزخواتین ایک روزہ بین الاقوامی (محدود اوور کرکٹ)
ٹورنامنٹ طرزDouble راؤنڈ روبن ٹورنامنٹ
Playoffs
میزبانFlag of Australia.svg آسٹریلیا
فاتح آسٹریلیا (3rd title)
رنر اپ انگلستان
شریک ٹیمیں5
کل مقابلے22
بہترین کھلاڑیانگلستان کا پرچم Carole Hodges
کثیر رنزآسٹریلیا کا پرچم Lindsay Reeler (448)
کثیر وکٹیںآسٹریلیا کا پرچم Lyn Fullston (16)
1982
1993

خواتین کرکٹ عالمی کپ، 1988ء 29 نومبر سے 18 دسمبر 1988ء تک آسٹریلیا میں کھیلا جانے والا ایک بین الاقوامی کرکٹ ٹورنامنٹ تھا۔آسٹریلیا نے پہلی بار خواتین کرکٹ عالمی کپ کی میزبانی کی، یہ خواتین کرکٹ عالمی کپ کا چوتھا ایڈیشن تھا، اور گزشتہ نیوزی لینڈ میں ہونے والے 1982 کے عالمی کپ کے چھ سال بعد منعقد ہوا۔

ٹورنامنٹ کا انتظام بین الااقوامی خواتین کرکٹ کونسل (آئی ڈبلیو سی سی) نے کیا تھا، یہ ٹورنامنٹ میچ 60 اوور پر کے میچوں پر مشتمل تھا۔ آسٹریلیا تیسری بار عالمی کپ جیتا، فائنل میں آسٹریلیا نے انگلینڈ کو 8 ووکٹوں سے شکست دی۔ نیوزی لینڈ نے آئرلینڈ کو70 زنز سے شکست دے کر تیسری پوزیشن لی۔ نیدرلینڈز ٹورنامنٹ کی واحد ٹیم تھی جس نے کوئی میچ نہیں جیتا، اور چھٹے نمبر پر رہی۔ آئرلینڈ اور نیدرلینڈز دونوں پہلی بار عالمی کپ میں شریک ہوئی تھیں۔ بھارت ٹیم پچھلے دو عالمی کپ مقابلوں کی طرح اس بار بھی دعوت دی گئی تھی، لیکن مالی تعاون نہ ہونے کی وجہ سے وہ شامل نہ سو کی۔[1] دو آسٹریلیائی، لنڈسے ریلر اور لن فلسٹن نے ٹورنامنٹ میں سب سے زیادہ رنز اور ووکٹیں لیں۔[2][3]

  • نوٹ: نیوزی لینڈ کی نینسی ولیمز نے ابتدائی میچ میں سے کندھے میں چوٹ آنے سے وہ الگ ہو گئیں، اور کیتھرین کیمبل کو ٹیم میں شامل کیا گیا۔ [4]

میدان[ترمیم]

7 میدانوں پر 1988ء کرکٹ عالمی کپ کے مقابلے منعقد ہوئے۔ میچ:

وارم اپ میچ[ترمیم]

آسٹریلیائی ریاست اور دعوت نامہ ٹیموں کے خلاف کم از کم پانچ وارم اپ میچ کھیلے گئے، جو پورے ٹورنامنٹ میں ہی گھیرے میں آ گئے۔ [5]

گروپ اسٹیج[ترمیم]

پوائنٹس ٹیبل[ترمیم]

ٹیم کھیلے ج ہ ب بنا نتیجہ پوائنٹس رن ریٹ
 آسٹریلیا 8 7 1 0 0 28 3.630
 انگلستان 8 6 2 0 0 24 3.097
 نیوزی لینڈ 8 5 3 0 0 20 3.418
 آئرلینڈ 8 2 6 0 0 8 1.965
 نیدرلینڈز 8 0 8 0 0 0 1.695
ماخذ: کرکٹ آرچیو

میچ[ترمیم]

میلبورن کرکٹ گراؤنڈ میں منعقدہ فائنل ریڈیو اور اے بی سی ٹیلی ویژن پر براہ راست نشر کیا گیا۔ [6]

میچ[ترمیم]

29 نومبر
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
284/1 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیدرلینڈز
29 (25.1 اوور)
آسٹریلیا 255 زنز سے جیت گیا
ولیٹن اسپورٹس کلب (نمبر۔ 1 اوول)، پرتھ
  • آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی

29 نومبر
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
232/4 (60 اوور)
بمقابلہ
 آئرلینڈ
78/9 (60 اوور)
نیوزی لینڈ 154 زنز سے جیت گیا
ولیم اسپورٹس کلب (نمبر۔ 2 اوول)، پرتھ
  • نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی

30 نومبر
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
186 (59.3 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
187/7 (58.2 اوور)
انگلینڈ 3 ووکٹوں سے جیت گیا
ولیٹن اسپورٹس کلب (نمبر۔ 1 اوول)، پرتھ
  • نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی

30 نومبر
اسکور کارڈ
آئرلینڈ 
196/5 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیدرلینڈز
110/7 (60 اوور)
آئرلینڈ 86 زنز سے جیت گیا
ولیم اسپورٹس کلب (نمبر۔ 2 اوول)، پرتھ
  • نیدرلینڈز نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

3 دسمبر
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
210 (60 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
84/8 (60 اوور)
آسٹریلیا 126 زنز سے جیت گیا
نارتھ سڈنی اوول
  • انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

4 دسمبر
اسکور کارڈ
آئرلینڈ 
78/8 (60 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
81/0 (20.4 اوور)
آسٹریلیا 10 ووکٹوں سے جیت گیا
نارتھ سڈنی اوول
  • آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

4 دسمبر
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
297/5 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیدرلینڈز
87 (51 اوور)
نیوزی لینڈ 210 زنز سے جیت گیا
نارتھ سدںی اوول ((نمبر۔ 2 اوول))
  • نیدرلینڈز نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

5 دسمبر
اسکور کارڈ
آئرلینڈ 
126 (57.5 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
127/3 (43.3 اوور)
انگلینڈ 7 ووکٹوں سے جیت گیا
نارتھ سڈنی اوول
  • انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

6 دسمبر
اسکور کارڈ
نیدرلینڈز 
97 (60 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
98/1 (29.3 اوور)
انگلینڈ 9 ووکٹوں سے جیت گیا
نارتھ سدںی اوول
  • انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

7 دسمبر
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
167/9 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
121/8 (60 اوور)
آسٹریلیا 46 زنز سے جیت گیا
مانوکا اوول، کینبرا
  • نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

9 دسمبر
اسکور کارڈ
نیدرلینڈز 
143 (60 اوور)
بمقابلہ
 آئرلینڈ
144/5 (56.4 اوور)
آئرلینڈ 5 ووکٹوں سے جیت گیا
کیری بیپٹسٹ گرامر اسکول (نمبر۔ 1 اوول)، ملبورن
  • آئرلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

10 دسمبر
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
211/3 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
136/6 (60 اوور)
آسٹریلیا 75 زنز سے جیت گیا
البرٹ کرکٹ گراؤنڈ، ملبورن
  • آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی

11 دسمبر
اسکور کارڈ
انگلستان 
167/8 (60 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
152 (57.4 اوور)
انگلینڈ 15 زنز سے جیت گیا
رچمنڈ کرکٹ گراؤنڈ، ملبورن
  • انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی
  • آسٹریلیا ٹورنامنٹ کا یہ واحد میچ تھا، جو ہارا۔

11 دسمبر
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
217/6 (60 اوور)
بمقابلہ
 آئرلینڈ
106/8 (60 اوور)
نیوزی لینڈ 111 زنز سے جیت گیا
البرٹ کرکٹ گراؤنڈ، ملبورن
  • آئرلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی

13 دسمبر
اسکور کارڈ
آئرلینڈ 
109/9 (60 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
110/0 (25.3 اوور)
انگلینڈ 10 ووکٹوں سے جیت گیا
کیری بیپٹسٹ گرامر اسکول (نمبر۔ 1 اوول)، ملبورن
  • انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

13 دسمبر
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
255/2 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیدرلینڈز
78 (59.1 اوور)
نیوزی لینڈ 177 زنز سے جیت گیا
کیری بیپٹسٹ گرامر اسکول ((نمبر۔ 2 اوول))، ملبورن
  • نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

14 دسمبر
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
258/4 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیدرلینڈز
85 (53.3 اوور)
آسٹریلیا 173 زنز سے جیت گیا
کیری بیپٹسٹ گرامر اسکول (نمبر۔ 2 اوول)، ملبورن
  • آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی

14 دسمبر
اسکور کارڈ
انگلستان 
177 (59.4 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
178/5 (55 اوور)
نیوزی لینڈ 5 ووکٹوں سے جیت گیا
کیری بیپٹسٹ گرامر اسکول (نمبر۔ 1 اوول)، ملبورن
  • انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی

16 دسمبر
اسکور کارڈ
آئرلینڈ 
88 (56.2 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
89/0 (21.4 اوور)
آسٹریلیا 10 ووکٹوں سے جیت گیا
کیری بیپٹسٹ گرامر اسکول (نمبر۔ 1 اوول)، ملبورن
  • آئرلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی

16 دسمبر
اسکور کارڈ
انگلستان 
278/3 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیدرلینڈز
98/9 (60 اوور)
انگلینڈ 180 زنز سے جیت گیا
کیری بیپٹسٹ گرامر اسکول (نبمر۔ 2 اوول)، ملبورن
  • نیدرلینڈز نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کی

فائنل[ترمیم]

18 دسمبر
اسکور کارڈ
انگلستان 
127/7 (60 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
129/2 (44.5 اوور)
Janette Brittin 46* (108)
لین لارسن 2/22 (12 اوور)
Lindsay Reeler 59* (147)
Jo Chamberlain 1/23 (8 اوور)
آسٹریلیا 8 ووکٹون سے جیت گيا
ملبورن کرکٹ گراؤنڈ
امپائر: Robin Bailhache اور Len King
  • انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی۔

تیسرے نمبر کے لیے میچ[ترمیم]

17 دسمبر
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
208/6 (60 اوور)
بمقابلہ
 آئرلینڈ
138/7 (60 اوور)
Karen Gunn 46*
Mary-Pat Moore 1/10 (6 اوور)
Mary-Pat Moore 54*
Brigit Legg 2/14 (12 اوور)
نیوزی لینڈ 70 رنز سے جیت گیا۔
رچمنڈ کرکٹ گراؤنڈ، ملبورن
  • نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کی۔

سب سے زیادہ رنز[ترمیم]

اس جدول میں سب سے زیادہ رنز اسکور کرنے والی کھلاڑی شامل ہیں۔

پلیئر ٹیم چلتا ہے Inns اوسط اعلیٰ ترین 100s 50s
لنڈسے رییلر  آسٹریلیا 448 8 149.33 143 * 2 2
ڈیبی ہاکلی  نیوزی لینڈ 446 9 63.71 90 * 0 5
نکی ٹرنر  نیوزی لینڈ 342 8 42.75 114 1 1
کیرول ہوجز  انگلستان 336 9 42.00 91 0 2
روتھ بکسٹین  آسٹریلیا 289 7 57.80 105 * 2 0

سب سے زیادہ وکٹیں[ترمیم]

اس میں 5 ووکٹیں لینے والے، کھلاڑی شامل ہیں۔

پلیئر ٹیم اوورز ووکٹیں اوسط ایس آر ایکون بی بی آئی
لن فلسٹن  آسٹریلیا 86.1 16 11.87 32.31 2.20 5/28
کیرن براؤن  آسٹریلیا 87.0 12 10.83 43.50 1.49 4/4
کیرول ہوجز  انگلستان 83.0 12 16.08 41.50 2.32 4/14
شیرون ٹریڈریا  آسٹریلیا 90.0 11 13.27 49.09 1.62 3/9
بریگزٹ لیگ  نیوزی لینڈ 100.2 11 14.36 54.72 1.57 3/4

ماخذ: کرکٹ آرکیو

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Mary Boson۔ "A worldly ambition for the عالمی بہترین" – دی سڈنی مارننگ ہیرالڈ، 26 اکتوبر 1988.
  2. Batting at Shell Bicentennial Women's World Cup 1988/89 (ordered by runs) – CricketArchive. Retrieved 29 اگست 2015.
  3. Bowling at Shell Bicentennial Women's World Cup 1988/89 (ordered by wickets) – CricketArchive. Retrieved 29 اگست 2015.
  4. "Kiwis confident of shock result"The Canberra Times، 7 دسمبر 1988.
  5. Shell Bicentennial Women's World Cup 1988/89 – CricketArchive. Retrieved 29 اگست 2015.
  6. "Australia's top bat sends them reeling"The Canberra Times، 15 دسمبر 1988.