خواتین کرکٹ عالمی کپ، 1993ء

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
خواتین کرکٹ عالمی کپ، 1993ء
1993 Women's Cricket World Cup logo.png
تاریخ20 جولائی – 1 اگست 1993
منتظمآئی ڈبلیو سی سی
کرکٹ طرزایک روزہ (محدود اوور کرکٹ)
ٹورنامنٹ طرزراؤنڈ روبن ٹورنامنٹ
پلے آف
میزبانFlag of England.svg انگلستان
فاتح انگلستان (دوسری بار)
رنر اپ نیوزی لینڈ
شریک ٹیمیں8
کل مقابلے29
کثیر رنزFlag of انگلستان Jan Brittin (416)
کثیر وکٹیںFlag of انگلستان Karen Smithies
Flag of نیوزی لینڈ Julie Harris (15)
1988
1997

خواتین کرکٹ عالمی کپ، 1993ء بین الاقوامی کرکٹ ٹونامنٹ تھا جو انگلینڈ میں 20 جولائی تا 1 اگست 1993ء کو منعقد ہوا۔ اس کی میزبانی دوسری بار انگلینڈ کر رہا تھا، یہ پانچـواں خواتین کرکٹ عالمی کپ تھا، اور جو سابقہ خواتین کرکٹ عالمی کپ، 1988ء، آسٹریلیا کے 4 سال بعد منعقد ہوا۔

اس ٹورنامنٹ کا انعقاد بین الاقوامی خواتین کرکٹ کونسل (آئی ڈبلی وسی سی) نے کیا، اور 60 میچ کھیلے گئے۔ یہ اس وقت تک منسوخ تھا جب تک کہ اسے £ 90,000 کی رقم فاؤنڈیشن آف اسپورٹس اینڈ آرٹ نے نہ دے دی۔[1] انگلستان قومی خواتین کرکٹ ٹیم نے دوسری بار عالمی کپ نیوزی لینڈ قومی خواتین کرکٹ ٹیم کو 67 رن سے فائنل میں شکست دے کر جیت لیا۔ اس بار ریکارڈ 8 ٹیموں نے شرکت کی، جس میں ڈنمارک، بھارت، اور ویسٹ انڈیز شامل تھیں وج 1988ء کے عالمی کپ میں شامل نہ ہوئیں۔ ڈنمارک اور ویسٹ انڈیز کی ٹیمیں پہلی بار عالمی کپ میں شریک ہوئیں۔[ا] انگلینڈ کی کپتان جان بریٹن نے سب سے زیادہ رن، جب کہ کارن سمتھیز اور نیوزی لینڈ کی کپتان جولی ہیرس نے سب سے زیادہ وکٹین لیں۔[4][5]

میدان[ترمیم]

خواتین کرکٹ عالمی کپ، 1993ء is located in انگلستان
1
1
2
2
3
3
4
4
5
5
6
6
7
7
8
8
9
9
10
10
11
11
12
12
13
13
14
14
15
15
16
16

خواتین عالمی کپ 1993ء کے میچ 25 مختلف میدانوں پر کھیلے گئے (ہر میدان میں ایک ایک میچ ہوا، سوائے ان کے جن کے ساتھ وضاحت کی گئی ہے):

  1. Walton Lea Road، وارنگٹن، چیشائر
  2. Recreation Ground، Banstead، سرئے
  3. John Player Ground، ناٹنگہم، ناٹنگھمشائر
  4. Denis Compton Oval، شنلی، ہارٹفورڈشائر
  5. Harewood Road، کولنگھم، مغربی یارک شائر، یارکشائر
  6. Christ Church Ground، اوکسفرڈ، اوکسفرڈشائر
  7. Woodbridge Road، گیلڈفورڈ، سرئے
  8. Willow Lane، Meir Heath، سٹیفورڈشائر
  9. Pixham Lane، Dorking، سرئے
  10. Arundel Castle Cricket Ground، Arundel، Sussex
  11. بکنگھمشائرکے میدان –
  12. Nevill Ground، رائل ٹینبریج ویلز، کینٹ
  13. Lindfield Common، Lindfield، Sussex
  14. برکشائرکے میدان –
  15. Sonning Lane، ریڈنگ، بارکشائر، برکشائر
  16. لندن عظمیٰکے میدان –

وارم اپ میچ[ترمیم]

ٹورنامنٹ شروع ہونے سے قبل 11 وار ماپ میچ کھیلے گئے جو زیادہ تر انگلینڈ کی مختلف ٹیموں کے خلفا تھے۔[6]

گروپ مرحلہ[ترمیم]

پوائنٹ[ترمیم]

ٹیم Pld ج ہ ب ب ن پوائنٹس ر ر
 نیوزی لینڈ 7 7 0 0 0 28 3.202
 انگلستان 7 6 1 0 0 24 3.382
 آسٹریلیا 7 5 2 0 0 20 3.147
 بھارت 7 4 3 0 0 16 2.544
 آئرلینڈ 7 2 5 0 0 8 2.607
 ویسٹ انڈیز 7 2 5 0 0 8 2.270
 ڈنمارک 7 1 6 0 0 4 1.926
 نیدرلینڈز 7 1 6 0 0 4 1.791
Source: CricketArchive
  • یادہانی: رن ریٹ اگر پوائنٹ برابر ہوں تو تب استعمال کیا گیا، ورنہ وہی نیٹ رن ریٹ (جو عام طور پر رائج ہے)۔[7]

میچ[ترمیم]

افتتاحی تقریب کا آغاز اوول میں 13 جولائی کو سر کولن کوڈری، صدر نشین بین الاقوامی کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے کیا.[8]

20 جولائی
اسکور کارڈ
نیدرلینڈز 
53 (49.3 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
56/0 (16.5 اوور)
آسٹریلیا 10 وکٹوں سے جیت گئی
Walton Lea Road، وارنگٹن، چیشائر
  • نیدرلینڈز نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

20 جولائی
اسکور کارڈ
انگلستان 
286/3 (60 اوور)
بمقابلہ
 ڈنمارک
47 (33.5 اوور)
انگلینڈ 239 رن سے جیت گئی
Recreation Ground، Banstead، سرئے
  • ڈنمارک نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔

20 جولائی
اسکور کارڈ
بھارت 
155/5 (52.3 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
92 (48.4 اوور)
بھارت 63 رن سے جیت گئی
John Player Ground، ناٹنگہم، ناٹنگھمشائر
  • بھارت نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔
  • The match was reduced to 52.3 overs per side before the start of play.

20 جولائی
اسکور کارڈ
آئرلینڈ 
82/6 (39 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
83/3 (19.3 اوور)
نیوزی لینڈ 7 وکٹوں سے جیت گئی
Denis Compton Oval، شنلی، ہارٹفورڈشائر
  • آئر لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔
  • The match was reduced to 39 overs per side before the start of play.

21 جولائی
اسکور کارڈ
بھارت 
108 (58.4 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
114/3 (38.3 اوور)
آسٹریلیا 7 وکٹوں سے جیت گئی
Harewood Road، کولنگھم، مغربی یارک شائر، یارکشائر
  • بھارت نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

21 جولائی
اسکور کارڈ
آئرلینڈ 
234/6 (60 اوور)
بمقابلہ
 ڈنمارک
164/9 (60 اوور)
آئر لینڈ 70 رن سے جیت گئی
Christ Church Ground، اوکسفرڈ، اوکسفرڈشائر
مرد میدان: Miriam Grealey (Ire)
  • ڈنمارک نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔

21 جولائی
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
127 (54.5 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
102 (57.2 اوور)
نیوزی لینڈ 25 رن سے جیت گئی
Lloyds Bank Sports Ground، بیکنہیم، لندن، لندن عظمیٰ
  • انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔

21 جولائی
اسکور کارڈ
نیدرلینڈز 
158 (59.5 اوور)
بمقابلہ
 ویسٹ انڈیز
88 (45.4 اوور)
نیدرلینڈز 70 رن سے جیت گئی
Willow Lane، Meir Heath، سٹیفورڈشائر
  • نیدرلینڈز نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

24 جولائی
اسکور کارڈ
ویسٹ انڈیز 
131/8 (60 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
133/2 (29.5 اوور)
آسٹریلیا 8 وکٹوں سے جیت گئی
Nevill Ground، رائل ٹینبریج ویلز، کینٹ
  • ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

24 جولائی
اسکور کارڈ
ڈنمارک 
93 (58.1 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
94/1 (17.5 اوور)
نیوزی لینڈ 9 وکٹوں سے جیت گئی
Wellington College، Crowthorne، برکشائر
  • ڈنمارک نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

24 جولائی
اسکور کارڈ
انگلستان 
259/4 (60 اوور)
بمقابلہ
 آئرلینڈ
80/9 (56 اوور)
انگلینڈ won on faster scoring rate
Sonning Lane، ریڈنگ، بارکشائر، برکشائر
  • آئر لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔
  • آئر لینڈ's target was 242 رن سے جیت گئی in 56 overs.

24 جولائی
اسکور کارڈ
بھارت 
93/4 (35 اوور)
بمقابلہ
 نیدرلینڈز
76 (34.1 اوور)
بھارت 17 رن سے جیت گئی
Wilton Park، Beaconsfield، بکنگھمشائر
  • نیدرلینڈز نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔
  • The match was restricted to 35 overs per side before the start of play.

25 جولائی
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
194/8 (60 اوور)
بمقابلہ
 آئرلینڈ
145/5 (60 اوور)
آسٹریلیا 49 رن سے جیت گئی
بینک آف انگلینڈ گراؤنڈ، روہیمپٹن، لندن عظمیٰ
  • آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

25 جولائی
اسکور کارڈ
ویسٹ انڈیز 
120 (45.3 اوور)
بمقابلہ
 ڈنمارک
76 (51.2 اوور)
ویسٹ انڈیز 44 رن سے جیت گئی
Lloyds Bank Sports Ground، بیکنہیم، لندن، لندن عظمیٰ
  • ڈنمارک نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔

25 جولائی
اسکور کارڈ
انگلستان 
179 (50.5 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
176 (59.5 اوور)
انگلینڈ 3 رن سے جیت گئی
Memorial Ground، Finchampstead، برکشائر
  • بھارت نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔

25 جولائی
اسکور کارڈ
نیدرلینڈز 
40 (54.2 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
41/0 (13.2 اوور)
نیوزی لینڈ 10 وکٹوں سے جیت گئی
Lindfield Common، Lindfield، Sussex
  • نیدرلینڈز نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

26 جولائی
اسکور کارڈ
ڈنمارک 
152/7 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیدرلینڈز
122 (55.1 اوور)
ڈنمارک 30 رن سے جیت گئی
Wellington College، Crowthorne، برکشائر
  • ڈنمارک نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

26 جولائی
اسکور کارڈ
انگلستان 
208/5 (60 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
165 (53.5 اوور)
انگلینڈ 43 رن سے جیت گئی
Woodbridge Road، گیلڈفورڈ، سرئے
  • انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

26 جولائی
اسکور کارڈ
آئرلینڈ 
151 (58.4 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
152/6 (57.3 اوور)
بھارت 4 وکٹوں سے جیت گئی
Wellington College، Crowthorne، برکشائر
  • بھارت نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔

26 جولائی
اسکور کارڈ
ویسٹ انڈیز 
96 (57.1 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
97/3 (26.4 اوور)
نیوزی لینڈ 7 وکٹوں سے جیت گئی
کنگز ہاؤس اسپورٹس گراؤنڈ، چسوک، لندن عظمیٰ
  • ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

28 جولائی
اسکور کارڈ
ڈنمارک 
76 (54 اوور)
بمقابلہ
 آسٹریلیا
77/3 (8.5 اوور)
آسٹریلیا 7 وکٹوں سے جیت گئی
آنر اوک کرکٹ کلب گراؤنڈ، ڈل وچ، لندن عظمیٰ
  • ڈنمارک نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

28 جولائی
اسکور کارڈ
ویسٹ انڈیز 
120 (59.4 اوور)
بمقابلہ
 انگلستان
123/6 (46.1 اوور)
انگلینڈ 4 وکٹوں سے جیت گئی
Arundel Castle Cricket Ground، Arundel، Sussex
  • انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔

28 جولائی
اسکور کارڈ
نیوزی لینڈ 
154/8 (60 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
112 (54.3 اوور)
نیوزی لینڈ 42 رن سے جیت گئی
ایلنگ کرکٹ کلب گراؤنڈ، ایلنگ، لندن، لندن عظمیٰ
  • نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

28 جولائی
اسکور کارڈ
نیدرلینڈز 
134/8 (60 اوور)
بمقابلہ
 آئرلینڈ
136/8 (56.3 اوور)
آئر لینڈ 2 وکٹوں سے جیت گئی
Pound Lane، مارلو، بکنگھمشائر، بکنگھمشائر
  • نیدرلینڈز نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

29 جولائی
اسکور کارڈ
آسٹریلیا 
77 (51.3 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
78/0 (18.2 اوور)
  • آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

29 جولائی
اسکور کارڈ
ڈنمارک 
116 (57.5 اوور)
بمقابلہ
 بھارت
117/1 (40.5 اوور)
بھارت 9 وکٹوں سے جیت گئی
Chalvey Road، سلاؤ، بکنگھمشائر
  • ڈنمارک نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کا فیصلہ کیا۔

29 جولائی
اسکور کارڈ
انگلستان 
207/5 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیدرلینڈز
74 (53.5 اوور)
  • نیدرلینڈز نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔

29 جولائی
اسکور کارڈ
ویسٹ انڈیز 
208/6 (60 اوور)
بمقابلہ
 آئرلینڈ
189/8 (60 اوور)
ویسٹ انڈیز 19 رن سے جیت گئی
Pixham Lane، Dorking، سرئے
  • آئر لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے گیند بازی کا فیصلہ کیا۔

فائنل[ترمیم]

1 اگست
اسکور کارڈ
انگلستان 
195/5 (60 اوور)
بمقابلہ
 نیوزی لینڈ
128 (55.1 اوور)
Jan Brittin 48 (117)
Sarah McLauchlan 2/25 (10 اوور)
Maia Lewis 28 (87)
Gillian Smith 3/29 (12 اوور)
انگلینڈ won by 67 runs
لارڈز کرکٹ گراؤنڈ، لندن
مرد میدان: Jo Chamberlain (Eng)
  • انگلینڈ won the toss and elected to bat.

شماریات[ترمیم]

زیادہ رن[ترمیم]

سب سے زیادہ رن بنانے والی کھلاڑی اس جدول میں درج ہیں، درجہ بندی بلحاظ بلے بازی اوسط کے ہے۔

کھلاڑی ٹیم رن اننگ اوسط ہائی ایس 100 50
Jan Brittin  انگلستان 410 8 51.25 104 2 1
Carole Hodges  انگلستان 334 8 47.71 113 2 0
Helen Plimmer  انگلستان 242 7 34.57 118 1 1
ساندھیا اگروال  بھارت 229 7 45.80 58* 0 2
Debbie Hockley  نیوزی لینڈ 229 8 45.80 53* 0 1

Source: کرکٹ آرکیو

زیادہ وکٹیں[ترمیم]

سب سے زیادہ وکٹ لینے والی کھلاڑی اس جدول میں درج ہیں، درجہ بندی بلحاظ گیند بازی اوسط کے ہے۔

کھلیے ٹیم اوور وکٹ اوطس ایس آر اکانومی بی بی ائی
Karen Smithies  انگلستان 77.0 15 7.93 30.80 1.54 3/6
Julie Harris  نیوزی لینڈ 77.3 15 9.33 31.00 1.80 3/5
Gillian Smith  انگلستان 58.2 14 9.50 25.00 2.28 5/30
ڈیانا ایڈلجی  بھارت 75.3 14 10.35 32.35 1.92 4/12
Clare Taylor  انگلستان 87.5 14 11.42 37.64 1.82 4/13

ماخذ: کرکٹ آرکیو

ملاحظات[ترمیم]

  1. جمیکا اور Trinidad and Tobago had fielded separate teams at the inaugural خواتین کرکٹ عالمی کپ، 1973ء، but a combined West Indian team had not previously participated۔[2] India had been invited to the 1988 World Cup, but had to withdraw after failing to secure sponsorship money.[3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Raf Nicholson (4 نومبر 2014)۔ "Flashback: انگلینڈ's women upset the odds" – All Out Cricket. Retrieved 30 اگست 2015.
  2. Women's World Cup 1973 table – CricketArchive. Retrieved 30 اگست 2015.
  3. Mary Boson. "A worldly ambition for the world's best" – The Sydney Morning Herald، 26 اکتوبر 1988.
  4. Batting at Women's World Cup 1993 (ordered by runs) – CricketArchive. Retrieved 29 اگست 2015.
  5. Bowling at Women's World Cup 1993 (ordered by wickets) – CricketArchive. Retrieved 29 اگست 2015.
  6. World Cup 1993 – CricketArchive. Retrieved 29 اگست 2015.
  7. Women's World Cup 1993 table – CricketArchive. اخذ شدہ بتاریخ 29 اگست 2015.
  8. "Famous setting for opening of women's cricket World Cup" – دی ثائمز، 14 جولائی 1993.