خواجہ سید شاہ حسین

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

خواجہ سید شاہ حسین مجدد پاک سے فیض یافتہ متوسلین میں میں نہایت اہم وجود کا نام سید شاہ حسین کا ہے جو سادات کرام سے ہیں غوث اعظم کے اخلاف میں سے تھے دس واسطوں سے آپ سے منسلک تھے والد گرامی کا نام سید احمد بن شریف دین قاسم ہے جن سے نسبت ارادت بھی رکھتے تھے اس لئے سلسلہ قادریہ سے بھی فیض حاصل کیا مگر پھر جب مجدد الف ثانی کے چشمہ فیض پر حاضر ہو گئے اور نقشبندی نسبت سے نوازے گئےمانک پورکے رہنے والے تھے اس کی وجہ سے حاضری کم رہی مگر تعلق اسقدر مستحکم تھا کہ حضرت مجدد اپنے پیر و مرشد خواجہ باقی باللہ کے نام جو مکتوب لکھتے وقت سید حسین کا بار بار تذکرہ کرتے ہیں۔ باوجود طریقہ قادریہ کی اجازت پائی تھی اپنا سلسلہ نقشبندی حوالے سے ہی جاری کیا اور عمر بھر اسی سلسلے کی تعلیم دیتے ہیں اور یہ فیض اس قدر جاری ہوا کہ ان کا یہ سلسلہ صدیوں تک جاری رہا ہےمگر مجدد پاک کے مطابق خاموشی کو وطیرہ بنائے رکھا اس لئے تذکرہ نگاروں نے اس مہرکامل کا ذکر خال خال ہی کیا مگر شہرت نہ پانے کے باوجود آپ کا سلسلہ ملک ملک تک پھیلا مانک پور میں ہی انتقال فرمایا اور وہیں دفن ہوئے۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. جمال نقشندڈاکٹر محمد اسحاق قریشی صفحہ 336،جامعہ قادریہ رضویہ فیصل آباد